پاکستانتازہ ترین

ڈرون حملوں سے قبل پاکستان کو فیکس بھیجنے کا انکشاف

واشنگٹن : امریکی خفیہ ادارہ سی آئی اےفیکس کے ذریعے  مہینے میں ایک بار پاکستانی انٹیلی جنس حکام کو ڈرون حملوں کیلئے منتخب مقامات سے آگاہ کرتا ہے۔ یہ دعویٰ امریکی جریدے وال اسٹریٹ جرنل نے اپنی ایک رپورٹ میں کیا ہے۔ رپورٹ میں امریکی حکام کے حوالے سے کہا گیا ہے کہ ماہانہ وار بنیادوں پر اطلاعات فراہم کرنے کے ساتھ ساتھ پاکستان منتخب علاقوں میں فضائی علاقے کو کلئیر کرنے کا کام بھی کرتا ہے۔ امریکی حکام کے مطابق یہ طریقہ کار ایک خودمختار ملک کی سرحدوں کے اندر کارروائی کیلئے اپنایا گیا ہے۔ اخبار کے مطابق وائٹ ہاؤس اور سی آئی اے نے اس حوالے سے تصدیق یا تردید کرنے سے انکار کرتے ہوئے کہا کہ یہ معلومات خفیہ ہیں۔
رپورٹ میں 2 سینئر امریکی حکام کے حوالے سے کہا گیا ہے کہ ان اطلاعات پر پاکستانی خاموشی کو ہاں سمجھ جاتا ہے جس کے بعد حملے کئے جاتے ہیں۔ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ اس طریقہ کار پر عملدرآمد امریکی عدالتوں میں قانونی مسائل سے بچنے کیلئے کیا گیا ہے، جبکہ وائٹ ہاؤس کو یہ بھی فکر ہے کہ اگر غیر متوقع حملے جاری رکھے گئے تو یہ دیگر ممالک جیسے روس یا چین کیلئے مستقبل میں ٹارگٹ کلنگ کے لئے مثال نہ بن جائیں۔ اخبار کا کہنا ہے کہ عوامی سطح پر پاکستان ڈرون حملوں کی مذمت کرتا ہے اور 10 ماہ قبل اس نے اپنی سرزمین پر سی آئی اے کی واحد ڈرون بیس بھی بند کردی تھی۔ اخبار کے مطابق ایک سابق پاکستانی عہدیدار کا کہنا ہے کہ پاکستان کو یقین ہے کہ سی آئی اے کی جانب سے بھیجا جانے والے فیکس کا واحد مقصد قانونی جواز حاصل کرنا ہے۔

یہ بھی پڑھیں  سیالکوٹ:ملاوٹ کاکام عروج پرمکئی سے بیسن تیار کرنے والوں کو گرفتار کیا جائے

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker