تازہ ترینسیّد ظفر علی شاہ ساغرؔکالم

ڈرون ،عمران ،حکومت اور اب الطاف بھائی بھی ؟

zafar ali shah logoقوم منتظرہے متحدہ قومی موومنٹ کے قائد بہادری کا مظاہرہ کرتے ہوئے وطن آکرسیاست کریں۔دودہائیوں سے برطانیہ میں پناہ لینے والے رہنماء کی جانب سے عمران خان کے خلاف بیانات تعجب کا باعث ہیں۔ایم کیوایم سمیت تمام سیاسی جماعتیں اے پی سی میں ڈرون حملوں کے خلاف فیصلہ دے چکی ہیں اوراِلطاف حسین کو معلوم ہونا چاہیے کہ فوج صوبے کی نہیں وفاق کی ماتحت ہے۔یہ کہناتھا یکم دسمبر کو تحریک اِنصاف کی رہنماء اور مرکزی ترجمان ڈاکٹرشیریں مزاری کا۔۔اور یہ دراصل ردِعمل تھامتحدہ قومی موومنٹ کے قائد الطاف حسین کی جانب سے عمران خان کے خلاف دینے والے اس بیان کا جس میں انہوں نے کہا تھا کہ نیٹوسپلائی لائن بند کرکے عوام کو بے روزگاراور پریشان کیا جارہاہے اور اگر عمران خان میں ہمت ہے تو وزیراعظم ہاؤس کے سامنے دھرنا دینے اور ڈرون مارگرانے کا حکم دیں۔ہر عمل کا ردعمل ہوتاہے سوبیان دیا تو بیان آیا ۔۔ڈرون حملوں کے خلاف بطوراِحتجاج نیٹوسپلائی لائن روکنے کے لئے پچھلے کئی روز سے تحریک اِنصاف اپنے دیگر اِتحادی جماعتوں کے ساتھ جن میں جماعت اسلامی قابل ذکر ہے دھرنادے رہی ہے اور جہاں بظاہر ڈرون حملوں کی مخالف حکمراں جماعت مسلم لیگ نون تحریک اِنصاف کے اس عمل کی مخالفت کرہی ہے وہاں جمعیت علماء اسلام اور کئی دیگر جماعتیں بھی اس اِقدام کو درست قرار نہیں دے رہے ہیں ۔عمران خان کے اس جارحانہ اِقدام کی مخالفت کرنے والوں کا مؤقف یہ ہے کہ طاقت کے ذریعے ٹرانسپورٹ روکنے کے عمل سے ملک کی عالمی سطح پر بدنامی ہورہی ہے۔ڈرون حملوں کے خلاف اِحتجاج تحریک اِنصاف سمیت کسی بھی جماعت کا حق ہے لیکن سفارتی مُعاملات طاقت سے نہیں بات چیت کے ذریعے حل کئے جاتے ہیں۔عمران خان پر یہ بھی اِلزام عائد کیا جاتاہے کہ ایک جانب اَمریکہ سے کروڑوں کے ڈالرز لے رہے ہیں اور دوسری جانِب ڈرون حملوں کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے نیٹوسپلائی لائن روک رہے ہیں۔ڈرون حملوں کے خلاف اِحتجاج اور نیٹوسپلائی لائن روکنے کے لئے دھرنوں سے خیبرپختونخوا حکومت کو الگ رکھنے اور محض پی ٹی آئی کوبطورجماعت سامنے لانے پر بھی عمران خان کے خلاف اُنگلیاں اُٹھائی جارہی ہیں ۔کہ اُن کی جماعت ایک جانب صوبے کی بڑی حکمراں جماعت ہے اور دوسری جانِب سراپااحتجاج بھی۔۔جوکہ کھلاتضادہے۔قطع نظراس کے کہ تحریک انصاف ٹھیک کررہی ہے یا اُن کی مخالفت کرنے والی جماعتوں کا مؤقف درست ہے یہ بھی کہ ڈرون حملوں کے خلاف سراپااِحتجاج عمران خان اور اُن کی جماعت عالمی سطح پر ملک کی بدنامی کا سبب بن رہے ہیں یاوہ ترجماں بن کرظلم اور جبر کے خلاف پوری قوم کی آواز اقوام عالم تک پہنچانے کا ذریعہ بن رہے ہیں ۔ اس مُعاملے میں نظرآتے سیاسی جماعتوں کے مؤقف اور رائے کے ساتھ ساتھ زمینی حقائق سے واقفیت رکھتے عوام بھی اچھے بُرے کا تمیز کرسکتے ہیں اور عمران خان درست سمت گامزن ہیں یا غلط ٹریک پر چل رہے ہیں اس کا بہتر فیصلہ عوام ہی کرسکتے ہیں سواس کا نتیجہ اگلے الیکشن میں برآمدہوگاتب پتہ چلے گا کہ کون ٹھیک تھا اور کون غلط۔۔اگرنیٹوسپلائی لائن روکنے کے معاملے میں مسلم لیگ نون تحریک اِنصاف پر تنقید کرتی ہے اور قومی ایشوز پر ان کے اِقدامات سے اِظہاراختلاف کرتی ہے،اگر جمعیت علماء اسلام کے سربراہ مولانافضل الرحمان عمران خان کی پالیسیوں سے متفق نظرنہیں آتے اور آئے روز تحریک اِنصاف پر تنقید کرتے اورعمران خان کو آڑے ہاتھوں لئے دکھائی دیتے ہیں تو اس کا جواز موجود ہے کہ نون لیگ اس وقت ملک کی سب سے بڑی سیاسی اور منتخب حکمراں جماعت ہے۔اور اس کے پاس اگرڈرون حملے رکوانے یا ڈرون طیارے گرانے کا اختیار ہے تووہ سفارتی سطح پر پُراَمن مذاکرات کے ذریعے کسی بھی معاملے کے حل کا حق اور اختیار بھی رکھتی ہے اس کے ساتھ ساتھ دہشت گردی کے خلاف جاری عالمی جنگ کے پیش نظرنیٹوسپلائی لائن کی بندش پر نوازحکومت امریکہ اور دیگر عالمی طاقتوں کو جواب دہ بھی ہوسکتی ہے تب ہی تو حکومتی ترجمان اور وفاقی وزیراطلاعات سینیٹرپرویزرشید باربار اس بات کو دہرارہے ہیں کہ نیٹوسپلائی لائن کی بندش سے عالمی سطح پر کوئی اچھاپیغام نہیں جارہااوراس سے پاکستان کی بدنامی ہوگی۔سومسلم لیگ نون اور وفاقی حکومت کی جانب سے تحریک انصاف کے اقدامات کی مخالفت تو سمجھ میں آتی ہے۔دوسری جانب اگر جمعیت علماء اسلام کے سربراہ نیٹوسپلائی کے خلاف دھرنوں پر عمران خان اور اُن کی جماعت کو تنقید کا نشانہ بنارہے ہیں تو اس کی وجہ بھی سمجھ میں آنامشکل نہیں کہ مولانافضل الرحمان صوبہ خیبرپختونخواسے تعلق رکھتے ہیں وہ ایک مذہبی جماعت کے قائد ہیں اور دہشت گردی کے خاتمے کے سدباب میں ان کااہم کردار بھی رہاہے اور اس معاملے میں مستقبل میں بھی ان کا ممکنہ کلیدی کردار رہے گا۔پچھلے دنوں طالبان سے مذاکراتی عمل جوکہ طالبان رہنماء حکیم اللہ محسودپر جان لیواڈرون حملے کے نتیجے میں تعطل کا شکارہوااور بدستورتعطل کاشکارہے میں بھی ان کا ایک اہم کردار تھاجس کا اکثر تذکرہ کیاجاتاہے۔لیکن ڈرون حملوں کے خلاف احتجاج اور نیٹوسپلائی لائن روکنے پرمتحدہ قومی موومنٹ کے قائد الطاف حسین کی جانب سے عمران خان کے خلاف بیان بازی اوراُن کی جماعت کا تحریک انصاف کے خلاف ردِعمل دینا کہ تحریک انصاف نے نیٹوسپلائی روک کر امریکہ کاکیا بگاڑاسمجھ سے بالاترہے کیونکہ ایک تو متحدہ قومی موومنٹ کرا

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button