پاکستانتازہ ترین

منشیات پرقابو پانےکےلئےاساتذہ طلبہ میں شعورپیدا کریں،صاحبزادہ ساجد الرحمن

اسلام آباد ﴿بیورو رپورٹ﴾ بین الاقوامی اسلامی یونیورسٹی اسلام آباد کے صدر پروفیسر ڈاکٹر صاحب زادہ ساجد الرحمان نے کہا ہے کہ اساتذہ کرام طلبہ کے اندر منشیات کے خلاف شعور پیدا کرکے پاکستانی معاشرے میں منشیات کی بڑھتی ہوئی صورتحال پر قابو پانے میں مدد گار ثابت ہو سکتے ہیں ۔ ان خیالات کا ظہار انہوں نے یونیورسٹی کے شعبہ نفسیات زیر اہتمام عوامی آگاہی سیمینار برائے منشیات بعنوان ‘‘منشیات کے استعمال کی صورتحال ‘‘ کے موضوع پر مہمان خصوصی کے طور پر خطاب کرتے ہوئے کہی۔ انہوں نے کہا کہ ہم اپنی زندگی میں اسلامی اقدار اور اعمال کو پروان چڑھا کر معاشرے میں بڑھتی ہوئی منشیات کی روک تھام کر سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس سلسلے میں تعلیمی اداروں پر بڑی ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ معاشرے میں منشیات کی بڑھتی ہوئی صورتحال کی تشویش طلبہ میں پیدا کریں تاکہ تنقید کو فروغ دے کر معاشرے میںاس کے اثرات پھلائیں ۔ انہوں نے کہا کہ اساتذہ کرام طلبہ کیلئے رہنما ہوتے ہیں اور وہ ان کو دیکھ کر اپنے قول و فعل کو تبدیل کر کے ایک کامیاب انسان بن سکتے ہیں ۔ انہوں نے مزید کہا کہ برائی کوطاقت سے نہیں بلکہ ان کی رہنمائی اور تربیت کے ذریعے ختم کیا جا سکتا ہے۔ صاحب زادہ ساجد الرحمن نیا کہا کہ آپ ö کے دور سے پہلے شراب دسترخوان کی زینت سمجھا جاتا تھا لیکن جب شراب کو حرام قرار دیا گیا تو لوگوں نے بغیر وجہ پوچھے اس کو ضائع کر دیا اور یہ آپ ö کی سیرت کا عملی نتیجہ تھا ۔ ڈاکٹر طاہر خلیلی اسسٹنٹ پروفیسر شعبہ نفسیات نے اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے کہا کہ معاشرے میں منشیات کا استعمال ہمارے ملک میں کوئی نئی روایت نہیں ہے بلکہ لوگ مختلف وجوہات کی بنا پر منشیات کا استعمال کرتے ہیں جیسے خوشی ، غم ،طبی ضروریات ، اور نفسیاتی مسائل شامل ہیں ۔ انہوں نے اس بات پر تشویش کا اظہار کیا کہ پچھلے کچھ عرصہ سے پاکستان میں بڑھتی ہوئی منشیات کے استعمال کے پیش نظر غیر قانونی ادویات میں اضافہ ہو گیا ہے جس کی مانگ کو کم کرنا چاہئے تاکہ معاشرے میں اس کے استعمال کرنے والوں کی حوصلہ شکنی ہو سکے۔سیمینار میں ڈاکٹر نبی بخش جمانی ، ڈین شعبہ عمرانی علوم ، ڈاکٹر سیما گل چیئر پرسن شعبہ نفسیات ﴿خواتین ﴾ ، کے علاوہ طلبہ و طالبات کی ایک بڑی تعداد نے شر کت کی ۔

یہ بھی پڑھیں  جو اکثر یاد آتے ہیں!

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker