پاکستان

بجلی کا شارٹ فال 6 ہزار میگاواٹ تک پہنچ گیا،عوام بلبلا اٹھے

اسلام آباد، لاہور، فیصل آباد ﴿مانیٹرنگ ڈیسک﴾ ملک بھر میں بجلی کا شارٹ فال 6 ہزار میگاواٹ تک پہنچ گیا، شہروں میں 10 اور دیہی علاقوں میں 20 گھنٹے لوڈشیڈنگ کی جا رہی ہے، بجلی کی غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ کے خلاف ملک بھر میں احتجاجی مظاہرے، توڑ پھوڑ، فیصل آباد میں لوڈشیڈنگ کے خلاف انوکھا احتجاج، گلے میں کپڑا باندھ کر ڈھول کی تھاپ پر رقص اور سڑک کراس کرنے والے راہ گیر کی پٹائی کر دی۔ وزارت پانی و بجلی کے مطابق ملک بھر میں بجلی کا شارٹ فال 6 ہزار میگاواٹ تک پہنچ گیا۔ بجلی کی کل پیداوار 7 ہزار 10 میگاواٹ اور طلب 13 ہزار 240 میگاواٹ ہے جبکہ تھرمل ذرائع سے پیدا ہونے والی 3 ہزار 300 میگاواٹ ہائیڈل سے 3 ہزار 8 سو اور کرایہ کے بجلی گھروں سے 98 میگاواٹ بجلی حاصل کی جا رہی ہے۔ ملک بھر میں بجلی کی غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ کا دورانیہ شہروں میں 10 اور دیہاتوں میں 20سے 22 گھنٹے ہو گیا جس کی وجہ سے کاروبار بری طرح متاثر ہو گیا اور روزانہ کی بنیاد پر کام کرنے والے لاکھوں مزدور بے روزگار ہو گئے۔ فیصل آباد میں لاکھوں مزدوروں نے سمندری روڈ، جھنگ بازار، بھوہڑ بازار میں بجلی کی طویل غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ کے خلاف حکومت کے خلاف شدید احتجاج اور نعرے بازی کی اور سڑکوں پر ٹائر جلائے۔ احتجاج کے دوران ایک شخص نے گلے میں کپڑا باندھ کر اپنے آپ کو آگ لگا لی جبکہ مشتعل مظاہرین نے ڈھول کی تھاپ پر احتجاجی مظاہرہ کیا۔ مشتعل مظاہرین نے بینک پر اور دیگر سرکاری عمارات پر پتھراؤ کیا۔ پاور لومز کے سٹاف کا کہنا ہے کہ ایک طرف تو بلوں میں اضافہ کر دیا گیا ہے اور دوسری طرف لوڈشیڈنگ میں اضافہ شروع ہو گیا۔ مظاہرین کا مطالبہ ہے کہ حکومت فیول ایڈجسٹمنٹ سرچارج پر لوڈشیڈنگ ختم کرے ادھر لاہور میں بھی بجلی کی طویل لوڈشیڈنگ کے خلاف رات بھر احتجاج کا سلسلہ جاری رہا۔ شہریوں نے ٹائر جلائے اور سڑکیں بلاک کر دیں۔ اس سے پہلے دن بھر کے ستائے ہوئے شہریوں نے جگہ جگہ احتجاجی مظاہرے کئے۔ مشتعل مظاہرین نے دفعہ 144 کی خلاف ورزی کرتے ہوئے مال روڈ بند کر دی اور حکومت کے خلاف نعرے بازی کی۔ شیخوپورہ روڈ، اردو بازار میں بھی بجلی کی لوڈشیڈنگ کے خلاف مظاہرے ہوئے۔ پولیس نے مظاہرین کو منتشر کرنے کے لئے آنسو گیس کی شیلنگ اور ہوائی فائرنگ کی،مظاہرین نے بھی ڈٹ کر پولیس پر پتھراؤ کیا،علاقہ کئی گھنٹوں تک میدان جنگ بنارہا. جبکہ قصور اور حافظ آباد میں بھی طویل لوڈشیڈنگ کے خلاف اہل علاقہ سڑکوں پر نکل آئے،مظاہرین میں خواتین اور بچے بھی شامل تھے۔دوسری جانب جھنگ روڈ پر احتجاج کے دوران مظاہرین نے نجی بینک پر حملہ کیا ،شیشے توڑ دیئے.مظاہرین نے مشروب سے بھرے ٹرک کو بھی لوٹ لیا.غلام محمد آباد میں پاورلومز مزدوروں نے احتجاج کیا اوررضا آباد میں ریلی نکالی.شیخوپورہ روڈ پر بھی لوگوں نے احتجاج کیا۔ادھر لوڈشیڈنگ کے حوالے سے وزارت پانی و بجلی کا کہنا ہے کہ تکنیکی خرابی کے باعث 2 تھرمل پلانٹ ٹرپ کر گئے جبکہ 2 مرمت کے باعث بند پڑے ہیں اس حوالے سے وہ متعلقہ حکام سے رابطے میں ہیں اور جلد صورتحال پر قابو پا لیا جائے گا اور آئندہ 24 گھنٹوں میں 900 میگاواٹ بجلی سسٹم میں شامل ہو جائے گی۔

یہ بھی پڑھیں  محنت کشوں کو ’’کمی کمین ‘‘کہہ کر شیخ رشید نے ملک بھر کے کروڑوں دستکاروں کی توہین کی ہے

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker