تازہ ترینکالم

عزت کی ردا

ali razaدنیا کے تمام ادیا ن کا اگر بغور دقیق نظری سے مطالعہ کیا جائے تو یہ با ت روزِ روشن کی طرح عیاں ہو جاتی ہے کہ اسلام ہی وہ واحد مذہب ہے جس میں زندگی گزرنے کے تمام اسلو ب مو جو د ہیں اور آ ج کی اس مادی زندگی میں پیش آ نے والے مسا ئل کا حل اسلا م نے بڑے احسن اور فصیح انداز میں بیا ن کیا ہے
معلمِ کا ئنات رسولِ کریم ،عظیم مصلح ،بیمارانِ دنیا کے نبض شناس و شافع روزِ جزاﷺ نے اپنی زندگی میں اپنے رفقا ء کو تمام مسا ئل اور ان کا حل بیا ن فر ما دیا ،انسا ن کو زندگی گزارنے کے لئے کسی بھی رہنما ئی کی ضرورت ہے تو میرے آ قا ﷺ کی حیا تِ طیبہ کا مطا لعہ اس رہنما ئی کے لئے شرط ہے اور آپ ﷺ نے اپنی ظا ہری زندگی کے بعد قرآ ن اور حدیثِ مبا رکہ ہماری رہنما ئی کے لئے چھو ڑ ی ہے۔
اسلام ہی وہ دین ہے جو غلاموں کو آ قا کے منصب پر فا ئز کرتا ہے ،بے ردا عو رتوں کو عزت کی ردا دے کر ماں، بہن ،بیٹی اور بیوی جیسے مقدس رشتوں کا تقدس عطا کرتا ہے ،اگر یہی عو رت ماں کے روپ میں ہو تو اس کے چہرے کو محبت کی نگاہ سے دیکھنے پر حج کا ثواب ملتا ہے اسلام ہی وہ دینِ حق ہے کہ جس میں معلمَِ کا ئنات کے الفاظ ہیں کہ جس شخص نے بیٹی کو پا لنے کے بعد اچھی تر بیت کر کے اس کی شا دی کی وہ قیامت کے روز میرے سا تھ اسطرح کھڑا ہو گا ،آ پ ﷺ نے اپنی انگلیوں کوجو ڑ کر بتا یا ۔اور سلا م ہی کو یہ امتیا ز حا صل ہے کہ یہ بیٹی کو رحمت قرار دے کر اس کی عزت و تو قیر میں اضا فہ کرتا ہے ،اور یہی عورت اگر بیوی کے رشتہ میں ہو تو اسے شو ہر کا آ دھا ایما ن قرار دیتا ہے ،جا ئیداد کا حقوق عطا کرتاہے ،اسے پردے اور حیا ء کی چادر اوڑھا کر اس کے تقدس میں مزید اضا فہ کرتا ہے ،حقیقت میں اسے غیر محرم سے نہ ملنے،اور پردے کی تلقین کر کے اس کے وقار کو چا ر چا ند لگا نے والا مذہب اسلام کے سِوا دنیا میں اور کو ئی مذہب نہیں ہے ۔
یہ اسلام اور دیگر ادیان کے مقابلہ میں صرف ایک امتیاز کی کچھ جزیں ہیں ،دوسری طرف توجہ کریں تو بڑی معذرت اور انتہائی دکھ کے ساتھ کہنا پڑتا ہے کہ!!!!!!!!
اسلام نے دی تھی عزت کی ردا میری بہنوں کو ،مگر افسوس ہائے صد افسوس! مغرب کی تہذیب نے حقوق کے نا م پربے رِدا کر دیا ۔دوسری طرف کا یہ عا لم ہے کہ عورت کو حقوق کے نا م پر رسوا کیا جا ریا ہے ، جس کا مطلب ہی چھپانے والی چیز ہے اسے بازار کی رونق بنا نے کو حقوق کا نا م دے کرذلت کی وادی میں دکھیل دیا گیااولڈ ہا ؤس (old House) تعمیر کیے گئے کہ جب اپنی زندگی
کٹھن لمحوں سے گزار کر اولاد کے کو آ سا ئشیں مہیا کر نے والے بو ڑھے والدین پہ جب وقتِ ضعیفی آ یا کہ اولاد کچھ دن ان بو ڑھوں کی خدمت کرے ،اسکی بجا ئے ان بیچا روں کو اولڈ ہا ؤ س بھیج دیا جا تا ہے ۔
مغرب جسے آ ج ترقی یا فتہ اور پر امن معا شرہ ہو نے کا سر ٹیفکیٹ دیا جا تا ہے وہا ں جا نوروں کے تو حقوق مقرر ہیں ،مگر ایک انسا ن جسے
اشراف المخلوقات ہو نے کا درجہ حا صل ہے اسے بڑی بے دردی سے حقوق سے محروم رکھنا صرف مغرب ہی کا شیوہ ہے ۔
دوسری طرف اسی پہلو کو اسلام کی تعلیمات کے نقطہ نظر سے دقیق نظری سے پر کھا جا ئے تویہ با ت روزِ روشن کی طرح عیا ں ہو جا تی ہے کہ اسلام ہی وہ مذ ہب ہے جو انسا نیت کے ہر طرح کے حقوق پو را کرنے کا علمبردار ہے۔note

یہ بھی پڑھیں  پتوکی :ملانوالہ میں ٹھاکر مسیح نامی شخص نے سا تھی کی مدد سے خا تون کی عزت لو ٹ لی

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker