تازہ ترینسائنس و آئی ٹی

فیس بک سے توہین آمیز مواد تین دن میں ہٹایا جائے : پشاور ہائی کورٹ

facebookپشاور ہائی کورٹ نے حکام کو ہدایت کی ہے کہ تین دنوں میں سماجی رابطے کی ویب سائٹس، خصوصاً فیس بک پر سے توہین آمیز اور قابل اعتراض مواد کو ہٹایا جائے۔ عدالت نے وزارت داخلہ، پاکستان ٹیلی کمیونی کیشن اتھارٹی اور دیگر محکموں کو ان ویب سائٹس کے خلاف سخت کاروائی کرنے اور 20 دنوں کے اندر اس حوالے سے ایک تعمیلی رپورٹ جمع کرنے کی ہدایت کی۔ چیف جسٹس دوست محمد کی سربراہی میں پشاور ہائی کورٹ کے ایک بینچ نے عارف خان نامی ایک وکیل کی جانب سے جمع کروائی گئی درخواست کے جواب میں یہ حکم جاری کیا۔ پٹیشن میں یہ درخواست کی گئی تھی کہ حکام سوشل ویب سائٹس پر سےتوہین آمیز مواد ہٹوانے میں ناکام ہیں۔ چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ ایسے توہین آمیز مواد کا سوشل میڈیا پر کھلے عام موجود ہونا مسلمانوں کے جذبات کو بھڑکا کر معاشرے میں انتشار کا سبب بنتا ہے۔ جہاں ایک طرف یہ واضح نہیں کہ کس طرح یہ حکام قابل اعتراض مواد کو بلاک کر واسکتے ہیں وہیں اس بات کا بھی امکان موجود ہے کہ اگر پشاور ہائی کورٹ کے حکم پر عمل در آمد نہیں کیا گیا تو وہ پاکستان میں سماجی رابطوں وہب سائٹس کی پر پابندی لگا سکتا ہے۔ واضح رہے کہ انہی وجوہات کی بنا پر پاکستان میں یوٹیوب پر گزشتہ آٹھ ماہ سے پابندی عائد ہے۔

یہ بھی پڑھیں  ’’ ٹوپی‘‘

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker