تازہ ترینعلاقائی

نادرا دفتر ہارون آباد کا سائیلین سے بد تمیزی ،غلیظ زبان اور خواتین کو دھکے

فقیروالی ﴿نامہ نگار﴾ نادرا دفتر ہارون آباد کا سائیلین سے بد تمیزی ،غلیظ زبان اور خواتین کو دھکے ،دوردراز سے آئے سینکڑوں خواتین ،بوڑھے ﴿ب﴾ فارم بنوانے آئے سائلین پھٹ پڑے ،نوجوان لڑکیوں کو دفتر میں جلدی بلالیتے ہیں جبکہ باقی کو دفتر کے باہر دھوپ میں کھڑا رکھا جاتا ہے ،غیر قانونی ڈیٹا،شناختی کارڈ کی غیر قانونی کاپی پر موبائل سم فروخت کرنے اورغیر قانونی نکلوانے والے ٹائوٹ مافیا سارا دن دفتر میں براجمان رہتے ہیں ،عوام الناس کے لئے بیٹھنے ،پینے کے پانی کاکوئی انتظام نہیں ، پانچ پانچ روز مسلسل چکر لگانے والی بوڑھی خواتین کا گورنر پنجاب ،وزیر اعلی پنجاب سے فوری طور تمام عملہ کی انکوائری اور انہیں علاقہ بدر کرنے کا مطالبہ کر دیا ۔موقف جانے پر انچارج نادرا کا صاف انکار جو ہوتا ہے کرلو ،صحافیوں سے بد تمیزی کیمرے توڑنے کی دھمکی دیتے ہوئے دروازے بند کر دئیے اور پولیس بلوا کر عوام کو ڈرانے دھمکانے کی ناکام کوشش ۔تفصیلات کے مطابق ہارون آباد تحصیل میں واحد نادرا دفتر کی آئے روز کی شکایات پرصحافیوں کی ٹیم کا نادرا دفتر کا دورہ ،عوام پھٹ پڑے ،فقیر والی سے آئی خواتین نے واویلہ کرتے ہوئے کہاکہ وہ مسلسل پانچ دنوں سے آ رہی ہوں مگر شناختی کارڈ کا ٹوکن نہیں لے سکی کیونکہ عملہ 8بجے شروع کرکے 9بجے بند کردیتا ہے سفارشی اور دیگر مشکوک لوگ بغیر اجازت دھڑلے سے آجا رہے ہیں مگر ہمارے لئے دروازے بند ہیں ،﴿ب﴾ فارم بنوانے آئی خاتون نے روتے ہوئے کہاکہ میری بچی عملہ کی دھکم پیل سے گر گئی ہے اور میں تین روز سے آرہی ہوں کوئی شنوائی نہیں نہ ہی دفتر میں داخل ہونے دیا جارہا ہے ۔ماسٹر فضل نامی شخص نے کہاکہ خواتین کو ہماری آنکھوں کے سامنے دھکے دیئے گئے جو انتہائی شرمناک فعل ہے ایسے بدتمیز سٹاف کو معطل کرکے علاقہ بدر کیا جانا چاہئیے انہیں مائوں بہنوں کی عزت کی پرواہ نہیں ۔نادرا دفتر کے باہر موجود سینکڑوں سائلین نے نادرا عملہ کے خلاف شدید نعرے بازی کی اور مطالبہ کیا کہ قابل ،ایماندار اور اخلاق والے افسر تعینات کئے جائیں۔مبینہ باوثوق ذرائع نے انکشاف کیا ہے کہ خوبرو لڑکیوں کو فوری اندر بلالیا جاتا ہے اور دوسروں کے حصہ میں دھکے آتے ہیں ،جنریٹر نہیں چلایا جاتا اسکا تیل خرد برد کرکے عوام کو ذلیل کیا جا رہا ہے جبکہ مختلف اعتراضات لگا کر بار بار چکر لگوانا تو عملہ کا معمول بن چکا ہے ۔

یہ بھی پڑھیں  سوات،پولیس سوتی رہی اور عوام کو لوٹتے رہے

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker