تازہ ترینعلاقائی

فیروزہ میں نکاسی آب کا نظام بدستورمفلوج ہے

فیروزہ(بیو رو چیف )فیروزہ میں نکاسی آب کا نظام بدستورمفلوج ہے،مین ہولوں سے پانی ابل کرنشیبی علاقوں میں بڑئے جوہڑوں کی شکل اختیار کر گیا ہے،جس سے پیچیدہ بیماریاں جنم لے رہی ہیں،گنجان آبادی میں واقع ضلع کونسل کی رورل ڈسپنسری قصبہ فیروزہ کا سب سے بڑا گندے پانی کا جوہڑ بنا ہوا ہے جس سے خود یہ سرکاری عمارت کسی بھی وقت مہندم ہو سکتی ہے،جبکہ دیگ گنجان آبادی کے علاقوں میں بھی پانی کے جوہڑانتظامیہ کی غفلت اور عدم توجہی کا منہ بولتا ثبوت ہیں،تفصیل کے مطابق پچاس ہزارنفوس سے تجاوزوالا قصبہ فیروزہ اس وقت چاروں طرف سے گندے پانی کے جوہڑوں کی شکل اختیار کر گیا ہے،نکاسی آب کا نظام مکمل طور پرناکارہ ہو گیا ہے،اور اس کی زیر زمین لائنیں مکمل طور پرٹوٹ پھوٹ کا شکار ہیں،اور پانی کی نکاسی کا کوئی بھی معقول انتظام نہیں ہے،قریبا قصبہ کے مین ہول بند اور ان سے پانی مسلسل ابلنے سے قرب وجوارکے گنجان آبادی کے علاقے بڑئے جوہڑوں کی شکل اختیار کر گئے ہیں،جو کہ پیچیدہ بیمارویوں کا موجب بنے ہوئے ہیں،جبکہ زیر زمین پائپ لانیں بنداورٹوٹنے کے باوعث گندہ پانی زیرزمین پھیل جانے سے آبادی کے نیچے انتہائی خراب ہو چکا ہے،جس سے پینے کا پانی زہرالوداور کڑوا ہو چکا ہے،جس کے استعمال سے لوگ پیچیدہ بیماریوں کا شکار ہو رہے ہیں،ارباب واختیارکو تمام تر صورت حال بارے آگاہی ہونے کے باوجوداس جانب کوئی توجہ نہیں دی گئی،قصبہ فیروزہ کے مختلف علاقے گندے پانی کے جوہڑ بنے ہوئے ہیں اور ان گنجان آبادی کے علاقوں سے گزرنا انتہائی مشکل اور تکلیف دہ امر بن کر رہ گیا ہے،بازاراور گلی محلوں میں گندہ پانی پھیل جانے سے آمدورفت کا نظام مفلوج ہے،سیاسی وسماجی حلقوں اور نمائندہ تنظیموں نے ارباب واختیارسے اپیل کی ہے کہ فیروزہ میں نکاسی آب کے مفلوج نظام کی بحالی کے لئے فوری اقدامات اٹھائے جائیں۔

یہ بھی پڑھیں  فرنچ اوپن مکسڈ ڈبل ،دیور نے بھابھی کو ہرا دیا

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker