شہ سرخیاں
بنیادی صفحہ / پاکستان / پنجاب کے مختلف محکموں میں 34 ارب کی بے ضابطگیوں کا انکشاف

پنجاب کے مختلف محکموں میں 34 ارب کی بے ضابطگیوں کا انکشاف

لاہور(مانیٹرنگ سیل) حکومت پنجاب کی گڈ گورننس کا پول کھل گیا، گزشتہ مالی سال 34 ارب 20 کروڑ روپے کی بے ضابطگیوں کا انکشاف سامنے آگیا، پنجاب حکومت نے بے حساب اربوں روپے خرچ کئے، آڈیٹر جنرل کی رپورٹ میں بھانڈہ پھوٹ گیا۔ گڈ گورننس ہے یا شاہی اخراجات، پنجاب حکومت نے اربوں روپے بغیر حساب کتاب کے خرچ کر ڈالے، مالی سال 15-2014ء میں 34 ارب کی بے ضابطگیاں ہوئیں۔ ان بے ضابطگیوں کا انکشاف آڈیٹر جنرل کی پنجاب اسمبلی میں جمع کروائی گئی رپورٹ میں کیا گیا ہے، سب سے زیادہ چونا محکمہ صحت میں لگا، دوسرے نمبر پر پولیس رہی جہاں 50 اہلکار کئی سال تک بغیر بھرتی تنخواہیں لیتے رہے۔ رپورٹ کے مطابق 58 ارب روپے مشکوک، 52 ارب روپے بیرونی قرضوں کی غیرمنصفانہ ادائیگی اور مقامی قرضوں کی مد میں 9 ارب 73 کروڑ روپے اضافی ادا کئے گئے۔ رپورٹ میں مزید بتایا گیا ہے کہ تنخواہوں کی مد میں 5 ارب اور پنشن کی مد میں 35 کروڑ روپے کی اضافی ادائیگی بھی کی گئی۔ رپورٹ میں محکمہ صحت کی ادویات اور مشینوں کی خریداری سمیت دیگر محکموں میں خورد برد کا بھی لکھا گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں  جو ہمیں چبانے کی کوشش کرے گا دانت ٹو ٹ جائیں گے , سعد رفیق