تازہ ترینعلاقائی

گذشتہ روز ڈسکہ میں جماعت الدعوۃ امیر پروفیسرحافظ محمد سعید کی الحمرا میرج ہال میں آمد

hafiz saeedڈسکہ ( سعید پاشا ) ڈسکہ میں جماعت الدعوۃ امیر پروفیسرحافظ محمد سعید کی الحمرا میرج ہال میں آمد ، تفصیلات کے مطابق گذشتہ روز جماعت الدعوۃ امیر حافظ سعید بوقت شام 6بجے قریب ڈسکہ میں واقع الحمرا میرج ہال کالج روڈ ڈسکہ پرجماعت الدعوۃ کی اپنی سخت ترین سیکورٹی میں استقبال کیا گیا اور پولیس سیکورٹی کا بھی کوئی انتظام نہ تھا حافظ سعید نے اپنے خطاب میں پاکستان کے سابقہ و موجودہ حالات کو واضح کیا اور پاکستانی حکمرانوں کی غلطیاں بھی واضح کی جس میں انھوں نے یہ بھی بتایا کہپاکستان کی عوام اس وقت جنرل پرویز مشرف کی غلطیوں کا خمیازہ بھگت رہے ہیں جبکہ وہ خود بھی اپنے کیے کی سز ا بھگت رہا ہے کیوں کہ ہمارے حکمران انڈیا اور امریکہ کو خوش کرنے میں لگے رہے ہیں کہ کسی بھی طریقہ سے ہم ان کو خوش کر لیں پرویز مشرف دور میں انڈیا نے پاکستانی دریاؤں پر 62ڈیمز بنائے جس سے و ہ بجلی پیدا کر کے اپنی فیکٹریاں اور کارخانے چلا رہا ہے اور اب منموہن سنگھ نے نواز شریف سے کہا کہ ہم آپ کو بجلی مہیا کرتے ہیں حافظ محمد سعید نے یہ بھی کہا کہ پچھلے 4سالوں میں اگر دیکھا جائے تو جولائی اگست کے مہینوں میں پاکستان میں سیالکوٹ اور سندھ کی جانب سیلاب آتا کیونکہ پاکستان کے پانی پر انڈیا براجمان ہے اور وہ سیلابی پانی پاکستان میں چھوڑ دیتا ہے اور یہ صرف پاکستان کے حکمرانوں کی غلطیوں کی وجہ سے ہے اگر پاکستان نے ڈیمز بنائے ہوتے تو پاکستان سیلاب کی زد میں آتا پاکستان کے پاس وہ ایٹمی ٹیکنالوجی ہے جو دنیا میں کسی ممالک کے پاس نہیں لیکن ہم پھر بھی کافروں کے سامنے سر جھکائے ہوئے غلاموں والی زندگی گزار ہے ہیں اب ہم نے پاکستان کو اس غلامی سے بھی آزاد کروانا ہے اور کشمیر پاکستان کی شہ رگ ہے جس دن ہم نے کشمیر کو انڈیا سے آزاد کروا لیا اُ س دن انڈیا بھی ٹکڑے ٹکڑے ہو جائے گاگجرات ،احمدآباد وغیرہ انڈیا سے الگ ہو جائیں گے سپر طاقت امریکہ اور افغانستان کی جنگ میں پاکستان نے نیٹو فورس کاساتھ دیاپاکستان کے اڈے استعمال کیے گئے جس میں پاکستا ن کو بہت زیادہ نقصان کا سامنا کرنا پڑا اس دوران انڈیا نے افغانستان بارڈر پر اپنی ایجنسیوں لگا دیں جو بلوچستان کو پاکستان سے الگ کرنے میں مصروف رہیں اور ان کے پلان کے مطابق 2015ء ؁ میں بلوچستان نے پاکستان سے الگ ہو جانا تھا لیکن وہ اللہ کے حکم سے ناکام رہے پچھلے تین چار سالوں سے امریکہ افغانستان سے بھاگنے کی تیاریوں میں ہے لیکن اسے کو صاف راستہ نظر نہیں آ رہا ہم انشاء اللہ افغانستان کی یہ جنگ بھی جیت چکے ہیں30سال قبل مجاہدین وجود میں آئے جب سپر طاقت روس اور افغانستان کی جنگ ہوئی اور روس کی شکست ٹکڑوں کی صورت میں سامنے آئی اور روس کواپنی شکست قبول کرنا پڑی اب انڈیاکی باری ہے اور یہ جنگ بھی انشاء اللہ ہم ہی جیتیں گے حافظ محمد سعید نے یہ بھی کہا کہ گذشتہ ہفتے انڈیا کی فورس نے مسجد میں داخل ہو کر نماز پڑھتے ہوئے مسلمانوں پر گولیاں برسائیں جس میں امام مسجد سمیت کئی مسلمان شہید ہوئے بعد ازاں قرآن پاک کو بھی شہید کیا گیا یہ ہی نہیں بعد میں احتجاج کرتے ہوئے مسلمانوں پر گولیاں برسائیں جس کے نتیجہ میں مسلمان شہید بھی ہوئے اور کافی تعداد میں مسلمان شدید زخمی بھی ہوئے لیکن ہمارے حکمران اب بھی خاموش بیٹھے ہیں حافظ محمد سعید نے یہ بھی کہا کہ میں نے پاکستان کے موجودہ وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف اور پارلیمنٹ وزرا ء کو ملاقات کی دعوت بھی دی ہے انشاء اللہ جلد ہی ملاقات طے پائی جائے گی حافظ محمد سعید نے یہ بھی کہا کہ پاکستان کے ایسے حالات بننے میں پاکستانی میڈیا کا بھی ہاتھ ہے خطاب کے بعد روزہ داروں کے لیے افطاری کا بھی پروگرام تھا حافظ محمد سعید خطاب کے بعد سیالکوٹ کے لیے روانہ ہوگئے آخر میں یہ بھی بتاتا جاؤں کہ حافظ سعید کے اس خطاب کے لیے ڈسکہ کے صحافیوں کو کوئی دعوت نہیں دی گئی

یہ بھی پڑھیں  جماعت الدعوة کے اثاثے منجمد، حافظ سعید پر بین الاقوامی سفر پر پابندی عائد کر دی گئی

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker