تازہ ترینکالم

ہائے بیچارہ پاکستان

waqar butکہنے کو تو خود مختار بھی جرأت مندبھی ہے یہ معصوم وطن مگر یہ محض ایک دکھاوا ہے پاکستان اندرسے پوری طرح کھوکلا ہو چکا ہے۔ ہردورمیں عالمی قوتیں کوشاں رہی ہیں کے وہ کسی طرح ہمارے ملک کو ہر لحاظ سے تحس نہس کردیں،امداد دے کر اپنے احسانوں کے بوجھ تلے دھکیل دینا چاہتے ہیں۔ معیشت کو تباہ و برباد کرنے میں تو سابقہ حکمرانوں نے ریکارڈ توڑ دیئے جب خزانے میں کچھ نہ رہا توعالمی فلاحی ادارے آئی ایم ایف سے قرض اٹھا کراپنی عیاشیاں پوری کیں بحران بڑھتے رہے مگر ان بے حس حکمرانوں کے کان پر جوں بھی نہ رینگی۔تحریئ طالبان پاکستان اور القاعدہ جیسے کالعدم لوگ جو کسی کی جان لینے کو جہاد کہتے ہیں ہم نے شروع سے ہی ان سے لاتعلقی کااظہارکیا ہے مگرناجانے کیوں ہمیشہ پاکستان کی تضحیک کی جاتی ہے اسے ہمیشہ ان معاملات میں گھسیٹا جاتا ہے۔حال ہی میں گلگت بلدستان نانگا پربت کے کیمپ میںآئے سیاحوں کو ناپاک درندوں نے موت کی بھینٹ چڑھایادس غیرملکی باشندے اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھے جس کا قصوروار بھی پاکستان کو ٹھرایا گیا جس کے نتیجے میں ہمیں دنیا بھر کے سامنے ندامت کا سامناکرناپڑا۔سیاحوں نے کبھی پاکستان نہ آنے کی ٹھان لی ہے ان میں کافی خوف وحراس پایاجاتاہے ۔مگر پاک چین دوستی بھی ایک گہرے سمندر کی طرح ہے جو کہ اتنا گہرا ہے کے اس میں کوئی کشکول نہیں ڈال سکتا اور یہ ہمیشہ بڑھتی رہی ہے۔ہمارے دیس کو ہمیشہ نقصان اٹھانا پڑا بھارت جیسا ملک جس نے ہمیں دھوکے کے علاوہ کچھ نہیں دیا ماضی میں اس وقت کی حکومت نے پاک چین دوستی میں سستی برتی مگر اب یہ وقت کے ساتھ ساتھ گہری و مظبوط ہو رہی ہے۔حال ہی میں وزیراعظم پاکستان میاں نواز شریف نے دورہ چین کر کے آپسی مراسم کو بڑھایا اور آٹھ میگا پراجیکٹس پر دستخط کیئے ۔ڈکٹیٹرز نے ملک کی خو د مختاری کی دھجیاں اڑاتے ہوئے اپنے ذاتی مفاد کو مدنظر رکھا حکمرانوں نے بھی اپنے ذاتی اثاثوں کو فروغ دیا۔موجودہ حکومت نے آئی ایم ایف سے پانچ اشاریہ تین بلین ڈالرز کا قرضہ لے لیاجبکہ کچھ عرصہ پہلے تک ہم قرضہ لینے کے لیئے ہرگز راضی نہیں تھے مگر حالات و واقعات نے ہمیں مجبور کردیااورنہ چاہتے ہوئے بھی ہمیں درکار رقم آئی ایم ایف کی شرائط کو قبول کرتے ہوئے لینی پڑی جس سے کوئی حاص تبدیلی تو رونما نہیں ہوئی مگر کافی حد تک بوجھ ہلکا ہوا جبکہ پہلے بھی ہم اس ادارے کے مقروض ہیں ماہر معاشیات تو بہت کچھ کہتے ہیں مگر ضروری نہیں کہ ان کی پر بات پتھر پر لکیر ہو۔فل وقت ہمیں سڑکیں بنانے پر نہیں بلکہ بحرانوں کا حل نکالنے پر توجہ دینی ہوگی اور طالبنائزیشن کا خاتمہ وقت کی اہم ترین ضرورت ہے تمام لوگ ان سے مذاکرات کا عزم رکھتے تھے پر ناجانے کیوں یہ وقت کے کزرنے کے ساتھ کھٹائی میں پڑتا جا رہا ہے امریکن فوجی بھی پاکستان کی جانب رخ کرنے کے لئیے تیار بیٹھے ہیں مولانا فضل رحمان جیسے مستی خیل بھی بار بارمذاکرات کرنے سے پھر جاتے ہیں ان کا ہر کام ذاتی مفاد پر محیط ہوتا ہے۔ اس بات کا رتعین کرنے کی ضرورت ہے کہ ملک بہت پڑی کش مکش میں مبتلا ہے اور ہم کوتاہی برت رہیں ہیں،ایک افسانوی کردار ملالہ یوسف زئی جسے اس کے والد محترم جو کہ ایک امریکن ایجنٹ ہیں انہوں نے ابھارا وہ بھی پاکستان کے خلاف ایک مہرہ تھا جو کہ کارگر ثابت نہیں ہوا تو اسے عالمی شہرت سے نواز دیا گیا۔تحریک طالبان پاکستان کے رہنماوٌں کو ہلاک کرنے کے بہانے امریکہ نے شمالی وزیرستان میں ڈرون حملے کر کے ہزاروں معصوم خاندانوں کو موت کے گھاٹ اتار دیا ہم نے اقوا م متحدہ میں اپیل تو کردی مگر یہ سلسلہ تاحال جاری ہے کیوں بین الاقوامی قوتوں کو دہشتگرد ہمارے عزیز نظر آتے ہیں؟ہم اس مقدس ماہ صیام میں کیوں نہیں طالبان سے پرامن مذاکرات کرلیتے ؟اس سستی کی کیا وجہ ہے؟پرامن پاکستان سب کا خواب مگر اس کی تکمیل میں تاخیر کیوں؟افغانستان کی سرزمین سے امریکی فوج پاکستان آنے کے لیئے تیار کھڑی ہے اگر و ہ اس جانب پڑاو ڈال بھی دیں تو ہمیں اس کی بلکل خبر نہیں ہوگی جیسا کہ سانحہ ایبٹ آباد کی تشکیل کردہ کمیٹی نے بتایا کہ ہماری فوج اس وقت بھی بے خبر تھی جب ا سامہ بن لادن کو سی آئی اے نے پاکستان کی حدود میں داخل ہوکر ہلاک کیا دفاع پر بجٹ کا پینسٹھ فیصد خرچ ہوتا ہے مگرپھر بھی ہم محفوظ نہیں بجٹ میں تمام تر فضول خرچیاں کم کی گیءں مگر دفاع کے بجٹ کو چھیڑا تک نہیں گیا۔طالبان نے کوئی بھی پاکستان کا تاثر تباہ و برباد کرنے میں کوئی کسر نہیں اٹھا رکھی چند حکمرانوں نے ماضی میں خود طالبان کو پیدا کیا اور ان سے جنگ کا ڈھونگ کرنے لگے جبکہ اصل تحریک طالبان تک ان کی رسائی ہی نہیں تھی۔میں دعا گو ہوں کے یہ پاک وطن جو لولی لنگڑی معیشت کے سہارے چل رہا ہے جلد اپنے پاوُن پر کھڑا ہوجائے اور امن کا گہوارہ ہوجائے۔ (آمین)note

یہ بھی پڑھیں  سابق بھارتی وزیر لالو پرشاد یادیو کو 5 سال قید کی سزا سنا دی گئی

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker