تازہ ترینعلاقائی

ہارون آباد کے عوام غیر معیاری مضر صحت گوشت کھانے پر مجبور

ہارون آباد﴿  تحصیل رپورٹر﴾ہارون آباد کے عوام غیر معیاری مضر صحت گوشت کھانے پر مجبور ۔قصابوں کوکھلی چھٹی، کوئی پوچھنے والا نہیں ہے ۔قانون کے مطابق قصاب حضرات پابند ہیں کہ وہ دوسرے دن ذبح کیے جانے والے جانور کو ویٹرنری ڈاکٹر کے پاس معائنہ کے لیے پیش کریں اور ویٹرنری ڈاکٹر کا فرض منصبی ہے کہ وہ دوسرے دن ذبحہ کیے جانے والے جانور کے تندرستی صحت مند ہونے کا معائنہ مذکورہ جانور پر لوہے کی گرم سلاخ سے مہر لگائے اور مذبحہ خانہ میں جا کرویٹرنری عملہ ذبحہ کیے گئے جانور کی تصدیق کرنے کے بعد صحت مند گوشت پر مہر لگائے بعد ازاں قصاب حضرات گوشت پر مہر لگائے بعد ازاں قصاب حضرات گوشت کو فروخت کرنے کے مجاز ہوتے ہیں جبکہ ہارون آبادمیں الٹی گنگابہہ رہی ہے ۔ قصاب حضرات بیمار اور لاغر جانور گلی محلوں میں ذبحہ کر کے سر عام مہنگے داموں فروخت کرتے ہوئے عوام کو لوٹنے میں مصروف ہیں جبکہ بڑے جانور کے گوشت کا سرکاری ریٹ 180روپے فی کلو اور بکرے کے گوشت کا سرکاری ریٹ 320روپے فی کلو مقرر ہے ۔قصاب حضرات اپنی مرضی سے بڑے کا گوشت 180روپے فی کلو کی بجائے 290روپے اور بکرے کا گوشت 320روپے فی کلو کی بجائے 400سے 450روپے فی کلو سر عام فروخت کر رہے ہیں ۔سیاسی و سماجی مذہبی حلقوں نے ڈی سی او بہاولنگر سے مطالبہ کیا ہے کہ خصوصی ٹاسک کے ذریعے کاروائی کرائی جائے۔دوسری جانب ویٹرنری ڈاکٹر شاہد حسین بھٹی کا کہنا ہے کہ مذبحہ خانہ نہ ہونے کی وجہ سے یہ ساری مشکلات پیش آرہی ہیں جب تک مذبحہ خانہ نہیں بنتا اس وقت تک معاملات ٹھیک نہیں ہوسکتے ۔میں صبح سویرے ہر ممکن کوشش کرتا ہوں کہ ہر جانو کو چیک کر سکوں پھر بھی جتنا ممکن ہو سکے میں چیک کرتا ہوں۔

یہ بھی پڑھیں  بجلی چوروں کو بجلی نہیں دیں گے: عابد شیرعلی

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker