تازہ ترینعلاقائی

سرائےمغل کا تیس ہزارنفوس پرمشتمل گاؤں بلوکی صاف پانی کی بوند بوند کو ترسنےلگا

head balokiپتوکی(ندیم رضا خاں سے) سرائے مغل کا تیس ہزار نفوس پر مشتمل گاؤں بلوکی صاف پانی کی بوند بوند کو ترسنے لگا۔ کروڑوں سے بننے والی پینے کے پانی کے واٹر سپلائی کے پائپ جگہ جگہ سے کریک،مکینوں کو ایک دن بھی صاف پانی نہ ملا۔عوامی سماجی کا شدید احتجاج کر تے ہوئے پانی فراہم کرنے اور واٹر سپلائی میں گھپلوں کی تحقیقات کا مطالبہ ۔تفصیلات کے مطابق سرائے مغل کا تیس ہزار نفوس پر مشتمل گاؤں بلو کی پانی کی بوند بوند کو ترسنے لگا۔دوسری طرف نہری پانی سے محرومی کے ساتھ ساتھ اس گاؤں کے عوام کروڑوں روپے سے بننے والی واٹر سپلائی کے باوجود پینے کے صاف پانی سے بھی محروم ہیں۔کیونکہ پانی کے ناقص پائپ جگہ جگہ سے لیک ہو کر پھٹ چکے ہیں اور رسنے والے پانی نے کروڑوں روپے کی عمارات کو دراڑیں ڈال دی ہیں اور مرمت کر نے کے بہانے یہ ٹینکی سالہا سال سے بند پڑی ہے۔حقیقت یہ ہے کہ دریا اور پنجاب کی دو بڑی نہروں کے سنگم پر واقع گاؤں کے ہزاروں افراد نہری پانی اور پینے کے پانی کے قطرے قطرے کو ترس رہے ہیں۔احمد جمال اورعوامی ،سماجی رہنماؤں نے اس صورت حال کا فوری نوٹس لیکر واٹر سپلائی سکیم کی تعمیرمیں گھپلوں کی تحقیقات کرنے اورپینے کا پانی مہیا کر نے کیلیے واٹر سپلائی کے ناقص پائپوں کی مرمت کرکے عمارات کو گرنے سے بچایا جائے۔

یہ بھی پڑھیں  داؤدخیل:میانوالی سے منتخب ہونے والے نمائندوں نے ہمیشہ محرمیوں کے سوا کچھ نہیں دیا،عبدالوہاب

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker