تازہ ترینعلاقائی

پھولنگر:ہیڈ بلوکی کے قریب ترین واقع درجنوں دیہات پانی کی بوند بوند کوترسنےلگے

بھائی پھیرو﴿نامہ نگار﴾   ایک تہائی پنجاب کو پانی فراہم کر نے والے ہیڈ بلوکی کے قریب ترین واقع درجنوں دیہات پانی کی بوند بوند کو ترسنے لگے۔کئی ماہ سے ہزاروں ایکڑ زرعی رقبہ پانی سے محروم ہوکر بنجر،۔عوامی سماجی اور کسان رہنمائوں کا شدید احتجاج کر تے ہوئے پانی فراہم کرنے کا مطالبہ ۔تفصیلات کے مطابق ایک تہائی پنجاب کو پانی فراہم کر نے والے ہیڈ بلوکی کے قریب ترین واقع دیہات ، بلوکی ،سندھو کلاں ، خانکے مور ، اُولکھ بونگاں ، روڈے، سرائے مغل ، راکے گھمن کے ، کٹار مل ، بھونکی موڑ ، بہڑوال ،وغیرہ پانی کی بوند بوند کو ترسنے لگے۔راجباہ نیاز بیگ کی ٹیل پر واقع یہ گائوں اور اس کے ارد گرد کے درجنوں دیہات کی ہزاروں ایکڑ اراضی کو اکئی ماہ سے نہری پانی نہیں ملا جس سے ان درجنوں دیہات کی ہزاروں ایکڑ اراضی پر کھڑی فصلیں چارا،چاول،گنے ،اور سبزیاں پانی نہ ملنے سے تباہ ہو چکی ہیں اور لوڈ شیڈنگ اور ڈیزل تیل کی ہوشربا قیمتوں کی وجہ سے کسان پانی کے متبادل ذرائع بھی استعمال کرنے سے قاصر ہیں۔چند سال قبل گائوں کے قریب سے گزرنے والی پنجاب کی سب سے بڑی نہر پر لفٹ پمپ لگاکرٹیل پر پانی پہچانے کا اہتمام کیا گیا مگر سابقہ حکومت کے دور میں اسی لاکھ کی خطیر رقم خرچ کرکے لفٹ پمپوںکا پانی ایک علیحدہ پختہ نہر کھود کر با اثر افراد کی زمینوں کو دے دیا گیا اور درجنوں دیہات نہری پانی سے محروم ہوگئے جس سے ہزاروں ایکڑ اراضی بنجر ہورہی ہے مگر حکمران طبقہ بے حس ہو کر عوام کی بے بسی کا تما شہ دیکھ رہے ہیں۔ کروڑوں روپے کی بین الا قوامی امداد سے بننے والی پختہ راجباہ نیازبیگ کے کنارے جگہ جگہ سے ٹوٹ پھوٹ کا شکارہیں،با اثر افراد نے اپنے موگے توڑ کر پانی کا ٹیل پر پہنچنا ناممکن بنا دیا ہے۔۔حقیقت یہ ہے کہ دریا اور پنجاب کی دو بڑی نہروں کے سنگم پر واقع گائوں کے ہزاروں افراد نہری پانی کو ترس رہے ہیں۔کسان بورڈ پاکستان کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات صدر حاجی محمد رمضان ،انجن کاشتکاراں ضلع قصور کے صدر رائے محمد افضل کھرل،علاقے کے سماجی ،سیاسی رہنمائوں چوہدری محمد شفیق،چوہدری دلشاد صادق ایڈووکیٹ،صدیق نمبر دار،ھاجی محمد حنیف، نیک محمد کھوکھر،سابق ناظم چوہدری حمید، کسان بورڈ تحصیل پتوکی کے جنرل سیکرٹری محمد بوٹا صابر ،سیکرٹری نشر و اشاعت رانا انتظار اسلام ،رانا اکبر ساجد ، رفاقت علی چوہدری اور دیگر کئی کاشتکاروں نے اس صورت حال کا فوری نوٹس لیکر چیف جسٹس عدالت عالیہ اور متعلقہ حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ لاکھوں فراد کی لاکھوں ایکڑ اراضی کو بنجر ہونے سے بچا یاجائے۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker