پاکستانتازہ ترین

پنجاب ایڈزکنٹرول پروگرام اوریونیسف کےزیراہتمام کی3روزہ ورکشاپ کی اختتامی تقریب

سرگودہا ﴿تحصیل رپورٹر﴾پنجاب ایڈز کنٹرول پروگرام اور یونیسف کے زیر اہتمام ایچ آئی وی / ایڈز کی تین روزہ ورکشاپ کی اختتامی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر سلیمان شاہد‘ ڈاکٹر محمد اقبال سمیع‘ ڈاکٹر احمد نعیم شیخ‘ میڈم سعدیہ اور ڈاکٹر سکندر حیات وڑائچ نے کہا کہ سرگودھا میں ایچ آئی وی ایڈز کے مریضوں کی تعداد 400 سے تجاوز کر چکی ہے جس کیلئے ضلع بھر کے تمام سرکاری ہسپتالوں کے ڈاکٹرز و نرسز کو تین روزہ ٹریننگ دی گئی ہے تاکہ ان کے پاس اس بیماری کا کوئی بھی مریض آئے تو وہ اسے ڈی ایچ کیو ٹیچنگ ہسپتال سرگودھا میں قائم سپیشل میڈیسن کلینک پر ریفر کریں تاکہ ان کے ٹیسٹ اور ادویات کا بندوبست کیا جا سکے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ایچ آئی وی ایڈز ایک ایسی بیماری ہے جس کی 100 فیصد پرہیز ممکن ہے۔ اگر انتقال خون کے وقت مکمل ٹیسٹ کروائے جائیں‘ ڈسپوزیبل سرنج کا استعمال کیا جائے‘ شیو کرواتے ہوئے نئے بلیڈ پر اصرار کیا جائے۔ دانت کی تکلیف ہو تو کسی کوالیفائیڈ ڈاکٹر سے علاج کروایا جائے اور اپنی شریک حیات تک محدود رہا جائے تو کوئی وجہ نہیں کہ کسی کو یہ موذی مرض لاحق ہو سکے اور اگر خدا نخواستہ کسی کو لاحق ہو بھی گیا ہے تو اسے اپنی بیماری چھپانے کی بجائے ڈی ایچ کیو ٹیچنگ ہسپتال میں آکر اپنا علاج کروانا چاہیے تاکہ وہ خوش و خرم زندگی گزار سکے۔ انہوں نے مزید کہا اس بیماری کے تمام مریضوں کے کوائف صیغہ راز میں رکھے جاتے ہیں۔ تاکہ یہ مریض معاشرتی طور پر نارمل زندگی گزار سکیں۔ ورکشاپ میں یہ بھی بتایا گیا کہ یہ بیماری مندرجہ بالا طریقوں سے ہی پھیلتی ہے اس کے علاوہ میل جول رکھنے سے تیمارداری کرنے سے گلے ملنے سے‘ اکٹھے کھانے پینے سے یہ بیماری بالکل نہیں پھیلتی۔ اس کے علاوہ انہوں نے مزید کہا کہا ایچ آئی وی ایڈز کے تمام مریضوں کے ٹیسٹ فری کئے جاتے ہیں اور ان کو ادویات کی فری مہیا کی جاتی ہیں۔ مریضوں کی ایک بڑی تعداد جو لگاتار ادویات استعمال کر رہی ہے وہ بالکل نارمل زندگی گزار رہے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں  سبی: امن وامان برقراررکھنے کیلئے ہر ممکن اقدامات کیے جائیں گے، ڈپٹی کمشنر

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker