پاکستانتازہ ترین

عمران فاروق قتل کیس: مرکزی ملزمان نے اعتراف کر لیا

اسلام آباد (بیورو رپورٹ) متحدہ قومی موومنٹ کے رہنماءڈاکٹر عمران فاروق قتل کیس کے 2 مرکزی ملزمان نے اپنے کردار سے متعلق بیان کے دوران واردات میں براہ راست ملوث ہونے کا اعتراف کر لیا ہے۔تفصیلات کے مطابق ڈاکٹر عمران فاروق قتل کیس کی مشترکہ تحقیقاتی ٹیم کی تحقیقات کے مطابق عمران فاروق قتل کیس میں معظم علی اور محسن علی نے براہ راست ملوث ہونے کا اعتراف کیا ہے۔ ذرائع کے مطابق مرکزی ملزم محسن علی نے اعتراف کیا ہے کہ وہ قتل کے وقت موقع پر موجود تھا جبکہ عمران فاروق پر چھری سے وار کاشف نے کئے تھے۔ محسن علی نے مزید اعتراف کیا کہ عمران فاروق کا قتل الطاف حسین کی سالگرہ پر کیا گیا۔ محسن علی نے بتایا کہ وہ اے پی ایم ایس او میں کارکن رہا ہے اور معظم علی کی کمپنی کام نیٹ میں بھی ملازمت کرتا رہا ہے۔ محسن علی نے کہا کہ اسے اور کاشف کو برطانیہ بھجوانے کا بندوبست معظم علی نے ہی کیا تھا۔ ذرائع کے مطابق کراچی سے گرفتار ہونے والے مرکزی ملزم معظم علی نے دوران تفتیش ایم کیو ایم کے پانچ مرکزی رہنماﺅں کے نام بھی لے لئے ہیں اور اس بات کی تصدیق کی بھی ہے کہ محسن علی اور کاشف کی برطانیہ روانگی کے انتظامات بھی اسی نے کئے تھے۔ عمران فاروق قتل کیس میں ملوث ایک اور ملزم خالد شمیم نے بھی دوران تفتیش اعتراف کیا کہ قتل میں ملوث محسن علی اور کاشف کو کراچی ائیرپورٹ سے محفوظ مقام منتقل کرنے کی ذمہ داری اس کی تھی

یہ بھی پڑھیں  بھائی پھیرو مین بازاراورگردونواح میں تین روز سے بلاجواز طویل لوڈشیڈنگ جاری

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker