پاکستان

جمہوریت کی حمایت میں قرارداد منظور

اسلام آباد(نیٹ نیوز)پاکستان کے قانون ساز ادارے ایوان زیریں میں اپوزیشن جماعتوں کے واک آؤٹ کے باوجود جمہوریت کے حق میں قرار داد کثرت رائے سے منظور کرلی گئی، اس موقع پروزیراعظم نے واضح طور پر کہا کہ فوج اور عدلیہ کو پارلیمانی نظام ختم کرنے کی اجازت نہیں دیں گے۔قرار داد حکومتی اتحادی جماعت عوامی نشینل پارٹی کے سربراہ اسفند یار ولی نے پیش کی تھی،حزب اختلاف کی  جماعتوں مسلم لیگ نون، ہم خیال اور پیپلزپارٹی شیر پاؤ گروپ نے قرارداد میں ترامیم شامل نہ کیے جانے پر ایوان سے واک آؤٹ کیا جب کہ گزشتہ دنوں حکومت کا ساتھ چھوڑکر اپوزیشن کی نشتوں پر بیٹھنے والی جمعیت علمائے اسلام ف نے قرار داد کی حمایت کی۔وزیراعظم گیلانی نے قرار داد کی منظوری پر اراکین اسمبلی کو قرار داد کی منظور پر مبارک باد دیتے ہوئے کہا ہے کہ موجودہ پارلیمنٹ نے آج تاریخ رقم کردی، یہ قرارداد کسی ادارے کےخلاف نہیں،موجودہ ایوان نے ریکارڈ ساز قانون سازی کی، تمام سیاسی جماعتوں کو ساتھ لے کر چل رہے ہیں، پاکستان نے پارلیمانی نظام مستحکم ہورہا ہے۔

یہ بھی پڑھیں  متفقہ وزیراعظم، ن لیگ کے پیپلز پارٹی اورایم کیوایم سے رابطے

انہوں نے کہا کہ مجھے کسی سے اعتماد کا ووٹ لینے کی ضرورت نہیں، کسی کو میری شکل پسند نہیں تو عدم اعتماد کی تحریک لے آئے، اداروں کے احترام اور عدلیہ کی آزادی پر یقین رکھتے ہیں، جمہوریت کے استحکام کے لیے آج کا دن خوش آئند ہے، جمہوریت ختم کرنے کی کوشش کی گئی تو سب اکٹھے ہوجائیں گے۔

یہ بھی پڑھیں  میاں افتخار کی گرفتاری،خیبر پختونخوا حکومت نے گھٹنے ٹیک دیے

یوسف گیلانی نے کہا کہ قومی مفاہمتی آرڈیننس ہم نے نہیں بنایا، جو لوگ اس کے بانی تھے وہ ملک سے باہر ہے، اسے ہی پکڑا جانا چاہیے۔

یہ بھی پڑھیں  ڈی 8 کانفرنس آج سے شروع،صدر افتتاح کرینگے

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker