شہ سرخیاں
بنیادی صفحہ / پاکستان / اسلام آباد: سینیٹ انتخابات کیلئے3بڑی جماعتوں میں سیٹوں کا فارمولا طے پاگیا

اسلام آباد: سینیٹ انتخابات کیلئے3بڑی جماعتوں میں سیٹوں کا فارمولا طے پاگیا

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) پنجاب سینیٹ الیکشن 2012ء میں مسلم لیگ (ن) پی پی پی اور مسلم لیگ (ق) کے درمیان سیٹ ایڈجسٹمنٹ فارمولے پر بات چیت شروع ہو گئی ہے جس کے نتیجے میں پنجاب میں اقلیتی رکن سمیت 12 سینیٹرز کے بلامقابلہ منتخب ہونے کی توقع ہے۔ پاکستانی اخبارروزنامہ جنگ میں شائع رپورٹ کے مطابق مسلم لیگ (ن) اور پی پی پی کے درمیان اسحاق ڈار اور میاں رضا ربانی کے ذریعے سیٹ ایڈجسٹمنٹ فارمولے پر بات چیت ہو رہی ہے۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ پنجاب میں سینیٹ کی 12 نشستوں پر پاکستان مسلم لیگ (ن) کے 7، پی پی پی کے 4 اور (ق) لیگ کے ایک امیدوار کی بلامقابلہ کامیابی کا امکان ہے پنجاب میں ن لیگ کو سینیٹ میں 4 جنرل نشستیں، خاتون ٹیکنوکریٹ اور اقلیت کی ایک ایک نشست ملے گی۔ پی پی پی کو دو جنرل نشستیں خاتون اور ٹیکنوکریٹ کی ایک ایک نشست ملے گی، ق لیگ کی طرف سے کامل علی آغا کو پنجاب کی جنرل نشست پر امیدوار نامزد کیاگیا ہے۔
ذرائع نے بتایا کہ پیپلزپارٹی کے ساتھ سیٹ ایڈجسٹمنٹ فارمولے کے ذریعے ق لیگ کو سینیٹ میں 8 نشستیں ملنے کا امکان ہے۔ بلوچستان سے 4 پنجاب، سندھ، خیبرپختونخوا اور وفاق سے ایک ایک نشست مسلم لیگ (ق) کو دینے کیلئے پی پی پی اور ق لیگ کی قیادت باہمی رابطے میں ہیں۔ق لیگ کی کوشش ہے کہ چاروں صوبوں سے سینیٹ کی نمائندگی مل جائے تاکہ ملک گیر پارٹی کا اثر برقرار رہ سکے۔ اسلام آباد کی دو خالی نشستوں میں سے ق لیگ کی ایک نشست پر مشاہد حسین سید کو امیدوار بنانے پر دونوں حکمران جماعتوں نے اتفاق کر لیا ہے جبکہ ڈاکٹر بابر اعوان اگر پنجاب میں نہ گئے تو پھر وہ اسلام آباد سے پی پی پی کے امیدوار ہونگے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ دونوں جماعتوں میں سیٹ ایڈجسٹمنٹ کوششیں اب آخری مرحلے میں ہیں، چوہدری شجاعت حسین کی اس ضمن میں صدر آصف علی زرداری سے ٹیلیفون پر گفتگو ہوئی ہے۔

یہ بھی پڑھیں  میاں جاوید کی موت ہارٹ اٹیک سے ہوئی، پوسٹمارٹم رپورٹ میں تصدیق