پاکستان

اسلام آباد:وفاقی کابینہ نے 20 آئینی ترمیم کی منظوری دیدی

اسلام آباد(ڈیسک رپورٹر) وفاق کابينہ نے بيسويں ترميم کا مسودہ منظور کرليا ہے۔ حکومت اور اپوزيشن اتفاق رائے ہونے کے بعد بيسويں آئيني ترميم کا نيا متفقہ مسودہ گزشتہ ہفتے تيار کيا گيا ، اس پر غور کے بعد وفاقی کابينہ نے آج اُس کی منظوری دے دی ہے۔ مسودے کو آج شام قومی اسمبلی ميں منظوری کيلئے پيش کيا جائے گا۔ قومی اسمبلی ميں آج پرائيويٹ ممبر ڈے ہے تاہم ايجنڈا ميں بيسيويں ترميم کی منظوری کو بھی شامل کردياگيا ہے۔ نامکمل اليکشن کميشن کے تحت ہونے والے ضمنی انتخابات کو قانونی تحفظ دينے کے ليے آئين ميں بيسويں ترميم متعارف کرائی گئی۔ منظوری کے ليے حکومت نے اپوزيشن سے مذاکرات کيے تو اس ميں مزيد تراميم کے مطالبات حکومت کے سامنے رکھ ديے گئےی مجوزہ آئينی ترميم ميں طے پايا ہے کہ نگران حکومت کے قيام کے ليے وزير اعظم اور قومی اسمبلی ميں اپوزيشن ليڈر نام تجويز کريں گے۔ حکمران اور اپوزيشن جماعت کے تين تين رہنما ان ناموں کا جائزہ لے کر اتفاق رائے پيدا کريں گے۔ اگر اتفاق رائے نہ ہوا تو نام ايک اور چھ رکنی کميٹی کو بھجوائے جائيں گے۔ اس کے علاوہ اليکشن کميشن کے ارکان کی مدت 5 سال کرنے اور ان سے حلف لينے کے معاملے پر بھی اتفاق ہوا

یہ بھی پڑھیں  برما میں مسلمانوں کے قتل عام پر کے خلاف احتجاجی مظاہرہ

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker