علاقائی

سینٹ میں آئی آر او کی منظوری چوہدری شجاعت حسین اور مشاہد حسین سید کی کاوشوں کا نتیجہ ہے ۔ محمد امتیاز راجہ

اسلام آباد﴿پریس ریلیز﴾پاکستان مسلم لیگ ﴿ق﴾ لیبر ونگ کے وفد نے محمد امتیاز راجہ مرکزی صدر پاکستان مسلم لیگ لیبر ونگ اور سیکرٹری اطلاعات محمد فیاض تبسّم سے مسلم لیگ ہائوس میں ملاقات کی ۔ ملاقات کے دوران محمد امتیاز راجہ نے آئی آر او کی بحالی کے حوالے سے وفد کو آگاہ کیا اور اس سلسلے میں پاکستان مسلم لیگ کے صدرچوہدری شجاعت حسین ،سیکرٹری جنرل سینیٹر مشاہد حسین سید وفاقی وزیرانسانی ترقی وسائل چوہدری وجاہت حسین اور وزیر مملکت شیخ وقاص اکرم کی کاوشوں کو سراہا گیا۔ اس موقع پر محمد امتیاز راجہ نے وفد کو بتایا کہ پاکستان بھر سے تمام لیبر فیڈریشن کے مرکزی قائدین پر مشتمل آل پاکستان لیبر ایکشن کمیٹی تشکیل دی گئی جس نے آئی آر او کی بحالی کے لئے مختلف پارٹیوں کے رہنمائوں سے ملاقاتیں کیں ،جن میں ایم کیو ایم کے رہنما فاروق ستار،لیڈر آف دی اپوزیشن سینٹ عبدالغفور حیدری ،قائد ایوان نیئر حسین بخاری اور مسلم لیگی قائدین سمیت اہم راہنما شامل ہیں۔ محمد امتیاز راجہ نے وفد کومزید بتایا کہ لیبر ایکشن کمیٹی کے ممبران کی چوہدری شجاعت حسین اور مشاہد حسین سید سے ملاقات کے نتیجے میں سینیٹ میں آئی آر او کی منظوری کو عملی شکل دی گئی۔ یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ ممبران ایکشن کمیٹی بابو ادریس،چوہدری فاروق، اکرم بُندہ،چوہدری طارق،چوہدری یاسین،راجہ وقار، فیاض تبسّم،راجہ مختار ، پرویز بھٹی ودیگر ممبران ایکشن کمیٹی وچیئرمین ایکشن کمیٹی پرویز شوکت نے بھی آئی آ ر او کی بحالی کے حوالے سے اپنا بھر پور کردار ادا کیا ،انہوںنے امید ظاہر کی کہ قومی اسمبلی میں بھی آئی آراو کی منظوری جلد عمل میں لائی جائے گی۔

یہ بھی پڑھیں  گوجرانوالہ:پاکستان سے کشمیری قوم کا جسم اور رو ح کا رشتہ ہے،مرزا خلیل چئیرمین کشمیر کونسل

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker