تازہ ترینکالممقصود انجم کمبوہ

جاپان ایک اقتصادی قوت ہے؟

maqsood anjumجاپان مجموعی قومی پیداوار کے لحاظ سے امریکہ کے بعد دوسرے نمبر پر ہے۔فی کس آمدنی کے لحاظ سے سویٹزر لینڈ کے بعد دوسرے نمبر پر ہے۔جاپان میں معاشی ترقی کی ایک وجہ بچت کی بہت زیادہ شر ح ہے۔جاپان میں 1995ء میں بچت کی شرح مجموعی قومی پیداوار کا 31فیصد تھا۔جبکہ امریکہ میں 15 فیصد اور پاکستان میں 16فیصد تھی۔
جاپان میں سرمایہ کی شرح مجموعی پیداوار کا 29فیصد تھی ۔یعنی بچت کی شرح 2فیصد کم جبکہ امریکہ میں سرمایہ کاری کی شرح بچت 4فیصد اور پاکستان میں 3فیصد زیادہ تھی۔یہی افراط زر کی بنیادی وجہ ہے۔جاپان کی کمپنیاں زیادہ تر خام مال باہر سے درآمد کرتی ہیں۔کیونکہ خام مال جاپان میں پیدا نہیں ہوتا۔اس کے باوجود جاپان کی کمپنیاں جو کہ 50اور 60کی دھائی میں کھلونے ‘سستا کپڑا اور دوسری چیزیں بنانے کے لیے مشہور تھیں۔اب اعلیٰ درجہ کی چیزیں مثلاً اعلیٰ قسم کا الیکٹرونکس کا سامان ‘ٹیلی وژن اور قیمتی گاڑیاں بنانے لگی ہیں اور انہوں نے دنیا بھر کی امریکن اور یورپین کمپنیوں کو بہت پیچھے چھوڑ دیا ہے ۔جاپانی کمپنیوں کی کامیابی کی ایک اہم وجہ ان کی امریکہ ‘یورپ اور جنوب مشرقی ایشیا میں مارکیٹنگ کی بہت اعلیٰ حکمت عملی ہے۔
یورپ اور امریکن کمپنیوں کی حکمت عملی دو نکات پر مشتمل تھی ۔یعنی یورپ اور امریکہ تک محدود تھی ۔جبکہ جاپانی فرم نے اپنی توجہ تین نکات یعنی یورپ امریکہ اور جاپان پر مرکوز رکھی۔
انہوں نے سب سے پہلے اپنی مارکیٹ پر توجہ دی اور ان کو امریکی اور یورپین سامان سے محفوظ رکھا۔اس کے بعد انہوں نے اپنے سامان(پروڈکٹ)کو دنیا بھر میں پھیلا دیا۔اس کے نتیجے میں جاپان کی برآمدا ت د نیا کے زیادہ تر ممالک کے ساتھ درآمد کے مقابلے میں زیادہ ہیں۔جاپانی کمپنیاں تھوڑے عرصے میں نفع کمانے پرزور نہیں دیتیں بلکہ اپنی توجہ صارف پر مرکوز رکھتی ہیں۔اور ان کے ساتھ ایک مستقل رابطہ رکھتی ہیں۔مارکیٹ ریسرچ پر بہت زیادہ سرمایہ خرچ کرتی ہیں۔تاکہ یہ معلوم ہو سکے کہ صارف کیا چاہتا ہے۔اور اس کی ضروریات کیا ہیں۔لیکن جاپانیوں کی ریسرچ کا انداز امریکن اور یورپین فرم سے بہت مختلف ہے۔جاپانی کمپنیاں بنیادی ریسرچ پر سرمایہ نہیں لگاتیں بلکہ اطلاقی ریسرچ پر توجہ دیتی ہیں۔ریسرچ کرنے سے پہلے مصنوعات مارکیٹ میں کم قیمت پر فروخت کرتی ہیں۔یہی ان کی کامیابی کا راز ہے۔جاپان میں تحقیق کا کام زیادہ تر نجی شعبہ میں ہوتا ہے۔اس لیے کمپنیاں انہی مصنوعات پر زیادہ تحقیق کرتی ہیں جن کی مارکیٹ میں زیادہ مانگ ہوتی ہے۔ان کی کامیابی کی وجہ حکومت اور نجی شعبہ میں ایک اچھا رابطہ ہے۔یہی وجہ ہے کہ حکومت نجی شعبہ کو اپنا مخالف نہیں سمجھتی بلکہ اسے حکومت کا ہی ایک حصہ سمجھا جاتا ہے۔
جاپانی کمپنیوں کی بنیادی حکمت عملی یہ ہوتی ہے کہ مارکیٹ کے زیادہ سے زیادہ حصے پر قبضہ کیا جائے یہی وجہ ہے کہ جاپانی کمپنیاں شروع میں کچھ نقصان بھی برداشت کرتی ہیں ۔جب ان کا مارکیٹ پر قبضہ ہو جاتا ہے تو بہت زیادہ پیداوار کی وجہ سے ان کی مصناعات بنانے کی لاگت بھی کم ہو جاتی ہے۔اسی وجہ سے جاپانی کمپنیوں نے امریکن مارکیٹ پر قبضہ کر لیا ہے۔جاپان نے 50 کی دھائی میں کپڑا ‘ریڈیو برآمد کیا 60کی دھائی میں ٹیلی وژن ‘ٹیپ ریکارڈ پانی کے جہاز اور اسٹیل ‘ 70میں اعلیٰ قسم کی گاڑیاں برآمد کر رہا ہے۔
جاپان اب کم درجہ کم قیمت کی مصنوعات کی بجائے اعلیٰ درجہ کی مصنوعات امریکن اور یورپین کمپنیوں کے مقابلے میں کم قیمت پر برآمد کرتا ہے۔اسی لیے جاپانی مصنوعات کی مانگ دنیا بھر میں بڑھ رہی ہے۔اور یہ جاپان کی اقتصادی طاقت کا راز ہے۔کچھ عرصہ سے بین الاقوامی مارکیٹ پر چین قابض ہوتا نظر آرہا ہے۔چین کی ٹیکنالوجی اتنی سستی ہے کہ غریب سے غریب شخص بھی ٹی وی ‘سی ڈی پلئیر ‘ڈی وی ڈی ‘موبائل اور جدید کھلونوں سے دل بہلا رہا ہے۔اور یہ ترقی بعض حاسدوں کو حسد کی آگ میں جلا رہی ہے۔اور یہ کوشش کی جارہی ہے کہ چین کے گرد گھیرا تنگ کیا جاسکے اوراس کی ترقی اور خوشحالی کے راستے بند کیے جاسکیں۔

یہ بھی پڑھیں  پھولنگر:چار شیطان صفت نوجوان اسلحہ دکھا کر نو سالہ بچے کوباری باری زیادتی کا نشانہ بناتے رہے

note

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker