شہ سرخیاں
بنیادی صفحہ / پاکستان / بھائی پھیرو:آئی ایم ایف کی غلامی اور مہنگائی و بے روزگاری سے نجات دلانے کیلیے میدان میں نکلے ہیں،سراج الحق

بھائی پھیرو:آئی ایم ایف کی غلامی اور مہنگائی و بے روزگاری سے نجات دلانے کیلیے میدان میں نکلے ہیں،سراج الحق

بھائی پھیرو(نامہ نگار)آئی ایم ایف کی غلامی اور مہنگائی و بے روزگاری سے نجات دلانے کیلیے میدان میں نکلے ہیں۔کسان،صنعتکار،تاجر اور عوام بجٹ سے مطمئن نہیں۔آخر دم تک عوام دشمن پالیسیوں کے خلاف جدو جہد کریں گے۔سینیٹرسراج الحقان خیالات کا اطہار:امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے نجی دورے کے دوران یہاں ڈاکٹر شفقت علی کے نرسری فارم میں سرپرست اعلی حاجی محمد رمضان کی قیادت میں ملنے والے پریس کلب بھائی پھیرو اور سرائے مغل کے صحافیوں کے پانچ رکنی وفدسے گفتگو کرتے کیا۔ اس موقع پر سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی امیر العظیم، نائب امیر ڈاکٹر فرید احمد پراچہ، جے آئی یوتھ کے مرکزی صدر زبیر گوندل،سیکرٹری اطلاعات قیصر شریف،ضلع قصور کے جنرل سیکرٹری سرادار نور احمد ڈوگر،نائب امیر عثمان غنی بھی موجود تھے۔ انہوں نے کہاہے کہ ہم مہنگائی، بے روزگاری اور آئی ایم ایف کی غلامی کے خلاف ملک گیر مہم چالائیں گے۔ ہم آئی ایم ایف کی غلامی اور مہنگائی و بے روزگاری سے نجات دلانے کیلیے میدان میں نکلے ہیں۔آخر دم تک جدو جہد کریں گے۔وزیراعظم سابقہ حکومتوں کے لیے گئے قرضوں کا ضرورحساب کتاب کریں مگر انہوں نے دس ماہ میں جو قرضے لیے ہیں، اس کا بھی حساب ہوناچاہیے۔انہوں نے کہا خزانے کی چابیاں بھی آئی ایم ایف اور سودی نظام کے حوالے کر دیں گئیں ہیں۔سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ وزیراعظم نے منتخب ہونے کے بعد قوم سے وعدہ کیا تھاکہ وہ کبھی جھوٹ نہیں بولیں گے لیکن اب وہ ہر بات پرجھوٹ بول کر اسے یوٹرن کا نام دے دیتے ہیں۔ وزیراعظم نے آئی ایم ایف کے سامنے ہاتھ پھیلانے سے خود کشی کو بہتر قرار دیا تھا مگر اب انہوں نے ملک کا معاشی نظام اور قومی خزانہ آئی ایم ایف کے حوالے کر دیاہے۔ حکومت نے بجٹ میں اتنی مہنگائی کی ہے کہ عام آدمی کی زندگی اجیرن ہوگئی ہے۔ چینی کی قیمت چار روپے کلو تک بڑھا دی گئی ہے حالانکہ گنا اور چینی تو باہر سے نہیں آتی۔ اسی طرح سیمنٹ مہنگا کیا گیا ہے اور دوائیوں کی قیمتوں میں دو سو فیصد تک اضافہ کر دیاگیاہے۔ اب غریب روٹی کھائے یا علاج کرائے۔ انہوں نے کہاکہ آٹا، گھی اور دالیں اتنی مہنگی ہوگئی ہیں کہ عام آدمی کے لیے سانس لینا مشکل ہوگیاہے۔ ایک طرف عوام غربت اور مہنگائی کے ہاتھوں فاقوں پر مجبور ہیں اور دوسری طرف صدر صاحب کے گھر میں طوطوں کے پنجر ے کے لیے لاکھوں روپے کے ٹینڈر دیے جارہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ کسانوں کیلیے کسی حکومت نے کچھ نہیں کیا موجودہ حکومت نے بھی کانوں کو نظر انداز کیا۔پاکستان کی انتالیس فی صد زمینیں بنجر پڑی ہیں اگر کسانوں کو مراعات دی جائیں اور بے آباد زمینوں کو آباد کر دیا جائے ملک سے غربت ختم ہو سکتی ہے۔آخر میں میزبان ڈاکٹر شفقت علی نے مہمانوں کو ایک پر تکلف ظہرانہ بھی دیا۔

یہ بھی پڑھیں  بہاولنگر:تمام سیاستدان ایک ہی تھیلی کے چٹے بٹے ہیں، ڈاکٹر احسان باری

 

error: Content is Protected!!