پاکستانتازہ ترین

کامران فیصل کی موت کا معمہ تا حال حل نہ ہو سکا

faisal kamranرینٹل پاور کیس (مانیٹرینگ سیل)کے تفتیشی افسر کامران فیصل کی پراسرار ہلاکت کا معمہ تاحال حل نہ ہوسکا۔ ہرگزرتے دن نئی پیشرفت کا سلسلہ جاری ہے۔نیب حکام کامران فیصل کی موت کے اصل حقائق جاننے کے لئے متحرک ہوگئے ہیں۔ چودہ جنوری کو سپریم کورٹ نے رینٹل پاور کیس میں ملوث افراد کے خلاف گرفتاری کاحکم دیا۔ اٹھارہ جنوری کو قومی احتساب بیورو کے تفتیشی افسر کامران فیصل اسلام آباد میں اپنے کمرے میں پر اسرار طور پر مردہ پائے گئے ہیں۔ ابتدائی تحقیقات میں کامران کی موت کو خودکشی قراردینے کی کوشش کی۔جبکہ کامران کے والد عبدالمجید کا بارہا کہنا تھا کہ بیٹا مضبوط اعصاب کا مالک تھا،خودکشی نہیں کرسکتا۔ انیس جنوری کو پولی کلینک میں تشکیل دیئے گئے میڈیکل بورڈ نے کامران فیصل کی موت کو خودکشی قرار دیا۔ ڈاکٹر شریف استوری کے مطابق کامران کےگلے پر رسی کے واضح نشانات تھے۔ لاش ورثاء کے حوالے کی گئی غسل دینے والے اہلخانہ نے بتایا کہ کامران کے جسم پر تشدد کے نشانات تھے ، معاملہ خودکشی نہیں اکیس جنوری تک پولیس مقدمہ درج کرنے کے لئے فرانزک رپورٹ کا انتطار کرتی رہی۔ معاملےکی جوڈیشل انکوئری جاری تھی۔بائیس جنوری کوایک بار پھر کہانی کا رخ موڑنے کی کوشش کی گئی انکشاف کیا گیاکہ کامران فیصل نفسیاتی ڈاکٹرنجمہ عزیز سے علاج کروارہے تھے۔ نیب افسران کی قلم چھوڑ ہڑتال ۔تیئس جسٹس خلجی عارف اور جسٹس ایس خواجہ پر مشتمل دورکنی بینچ تشکیل دے دیا۔ چبھیس جنوری نیب حکام نےکامران فیصل کی موت کی ایف آئی آر دفعہ تین سو دو کے تحت درج کرادی۔

یہ بھی پڑھیں  شہباز شریف اتوار کو پاکستان پہنچیں گے، مریم اورنگ زیب

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker