علاقائی

کراچی:سول اسپتال کےڈاکٹروں نے مطالبات پورے نہ ہونے پرپانچویں روز بھی بھوک ہڑتال کی

کراچی﴿نمائندہ﴾سول اسپتال کے سینئر ڈاکٹروں نے مطالبات پورے نہ ہونے پرپانچویں روز بھی اسپتال کے مرکزی دروازے پر بھوک ہڑتال کا سلسلہ جاری رکھی جس کی وجہ سے ایمرجنسی اور او پی ڈی میں آنے جانے والے ہزاروں مریضوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرناپڑ ا جبکہ پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن کراچی اور پاکستان پیرامیڈیکل اسٹاف ایسوسی ایشن نے بھی ڈاکٹروں کے تمام جائز مطالبا ت فوری منظوری کرنے کی حمایت کردی ہے۔تفصیلات کے مطابق سندھ ڈاکٹرز ویلفیئر ایسوسی ایشن کے تحت ٹائم اسکیل پروموشن،جنرل کیڈر کے ڈاکٹرز،اسپشلسٹ اور ڈینٹل سرجن کے مستقل سروس اسٹرکچر کا اعلان نہ کئے جانے پرڈاکٹروں نے6فروری سے ھفتہ ۱۱ فروری پانچویں روز بھی سول اسپتال کے مرکزی دروازے پرکیمپ لگاکر بھوک ہڑتال جاری رکھی جس میں پاکستان میڈیکل ایسوسی اورپاکستان پیرامیڈیکل اسٹاف ایسوسی ایشن کے عہدیداروں نے شرکت کی اور ڈاکٹروں کے تمام جائزمطالبات پورے کرنے کی حمایت کرتے ہوئے حکومت سے مطالبہ کیا کہ ڈاکٹروں کے تمام مطالبات فوری طو ر پر منظوری کئے جائیں دیگر صورت میں ڈاکٹروں میں پائی جانے والی بے چینی مزید برے اثرات ڈال سکتی ہے۔کیمپ میں ڈاکٹر مجتبی میمن،ڈاکٹر عثمان ماکو،ڈاکٹر نثار علی شاہ ،ڈاکٹرسریش بھی موجود تھے۔دوسری جانب جمعہ کے روز سول اسپتال میں پاکستان پیرامیڈیکل اسٹاف ویلفیئر ایسوسی یشن کی جانب سے اہم اجلاس منعقد کیا گیا جس کی صدارت صوبائی صدر نیاز حسین بھٹو نے کیا۔اجلاس میں ڈاکٹروں کے کی جانب سے کئے جانے والے تمام جائز مطالبات کو پورا کرنے کی حمایت کرنے کا اعلان کیا گیا۔نیاز بھٹو نے کہا کہ جس طرح ڈاکٹروں کے مطالبات ہیں اسی طرح پیرامیڈیکل اسٹا ف کے بھی مطالبات ہیں جن کو فوری پورا کیا جائے دیگر صورتوں میں صوبے بھر کے اسپتالوں میں پیرامیڈیکل اسٹاف کے نمائندے بھی ہڑتال کرنے پر مجبور ہوں گے انہوںنے کہاکہ ان کے جائز مطالبات ہیں لیکن محکمہ صحت سندھ کی جانب سے کی جانے والی غفلت و لاپرواہی کی وجہ سے انہیں شدید دکھ ہواہے جس پر وہ بہت جلد آئندہ کا لائحہ عمل پیش کریں گے۔ اس موقع ایسوسی ایشن کے عہدیدار میر حسن چوہان،محمد نذیر عباسی،میر حسن،الہی بخش سومرو،عبدالرحمن شیخ،محمد شاہد صابری اور دیگر نے بھی شرکت کی۔ا

یہ بھی پڑھیں  پتوکی:تھانہ صدر کے علاقے بھونیکی اوتاڑ میں بچی سے زیادتی کی کوشش

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker