تازہ ترینعلاقائی

کراچی چڑیا گھر میں جانوروں کی خریداری کے لئے ایک کروڑ روپے کی منظوری

کر اچی(نامہ نگار)ایڈمنسٹریٹر کراچی ثاقب احمد سومرو نے کہا ہے کہ کراچی چڑیا گھر میں جانوروں کی خریداری کے لئے ایک کروڑ روپے کی منظوری دی گئی ہے جبکہ ساڑھے تین کروڑ روپے کے منصوبوں کا آج افتتاح کیا گیا ہے بین الاقوامی معیار کا چڑیا گھر بنانے کے لئے ہرممکن اقدامات کئے جا رہے ہیں جن جن منصوبوں کے لئے فنڈ مہیا ہوں گے ان منصوبوں کو وقت سے قبل مکمل کیا جائے گا ان خیالات کا اظہار انہوں نے منگل کو چڑیا گھر میں ہاتھی انکلوژر اور کشتی رانی جھیل کے افتتاح کے بعد میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا اس موقع پر میٹروپولیٹن کمشنر مسعود عالم، ڈائریکٹر جنرل ٹیکنیکل سروسز نیاز احمد سومرو ، سینئر ڈائریکٹر سی ایس اینڈ آر رضا عباس رضوی، ڈائریکٹر زو فہیم خان، ڈائریکٹر میڈیا مینجمنٹ بشیر سدوزئی اور دیگر افسران بھی موجود تھے۔ ایڈمنسٹریٹر کراچی نے کہا کہ چڑیا گھر اور سفاری پارک میں جانوروں کی دیکھ بھال اور ان کی خوراک کے معائنہ کے لئے ڈاکٹرز اور زولوجسٹ موجود ہیں اور ہر لحاظ سے جانوروں کا خیال رکھا جاتا ہے اس مقصد کے لئے بلدیہ عظمیٰ کراچی نے اضافی اسٹاف بھرتی کیا ہے تاکہ تعلیم یافتہ نوجوانوں اور ماہرین کی خدمات حاصل کی جاسکیں جبکہ نئے جانوروں کی خریداری کے لئے فہرست طلب کی گئی ہے تاکہ ترجیحات کا تعین کیاجاسکے کہ پہلے کون سا جانور خریدنا ہے ۔ حکومت سندھ نے ایک کروڑ روپے کی منظوری دی ہے تاہم ضرورت ہو تو مزید فنڈ مہیا کئے جائیں گے انہوں نے کہا کہ کراچی چڑیا گھر میں تعمیر کیا جانے والا ہاتھی انکلوژر بین الاقوامی معیار کے مطابق ہے جہاں ہاتھیوں کو کھیلنے کی سہولت حاصل ہوگی اور وہ آزادی سے گھوم پھر سکیں گے جبکہ کشتی رانی کا شمار کراچی زو کی بہت قدیم اور مقبول تفریح گاہ میں کیا جاتا ہے جہاں بچے خوب محظوظ ہوتے ہیں چونکہ جھیل بہت پرانی ہوگئی تھی جس میں مٹی بھر جانے کے باعث پانی بھی اکثر گندا رہتا تھا تاہم اب جدید تقاضوں کے مطابق اس کی تعمیر نو کی گئی ہے جس سے بچوں کو بہترین تفریح کے مواقع میسر آئیں گے انہوں نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ شہر میں ترقیاتی کام تیزی سے جاری ہیں جن منصوبوں کے فنڈز دستیاب ہوں گے ان کو وقت سے قبل مکمل کرلیا جائے گا۔ ایڈمنسٹریٹر کراچی نے کہا کہ صوبہ کی تمام بلدیات کو سندھ بینک میں اکاؤنٹ کھولنے ہوں گے تا کہ گھوسٹ ملازمین کو پکڑا جاسکے اندازہ ہے کہ اس سے بلدیہ کے کروڑوں روپے کی بچت ہوگی یہ حکومت کا فیصلہ ہے اور اس کو ہر ملازم کو تسلیم کرنا ہوگا انہوں نے کہا کہ وزیر بلدیات و اطلاعات شرجیل انعام میمن کی ہدایت پر جاری صفائی و شجر کاری مہم ایک سال تک جاری رہے گی اور اس کو مزید آگے بڑھایا جاسکتا ہے کیونکہ صفائی اور شجر کاری سے شہر میں ماحول بہتر ہوگا۔ مہم کا مقصد اداروں اور اہلکاروں کو متحرک رکھنا ہے۔ وزیر بلدیات خود بھی سڑکوں پر ہیں روز کسی نہ کسی جگہ پر پہنچتے ہیں ۔ ایڈمنسٹریٹر کراچی نے کہا کہ واٹر بورڈ سمیت تمام بلدیاتی ادارے مشترکہ طور پر اس مہم کو کامیاب بنانے کی بھرپور کوشش کر رہے ہیں اور اس میں کامیابیاں ہو رہی ہیں

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button