علاقائی

سنجھورو:مختار کار سنجھورو کی من مانیاں، کاشتکاروں کا سخت احتجاج کا علان

سنجھورو ﴿اقراراجپوت ﴾ حکومت سندھ کے واضع اعلان جس میں کہا گیا تھا کہ کاشتکاروںکو حالیہ سیلاب میں مالی نقصان ہونے کی وجہ سے بیج اور کھاد مفت فراہم کیا جائے گا لیکن اس کے باوجود مختار کار ﴿روینیو﴾ سنجھورو نے اپنی مان مانی لگارکھی ہے اور من پسند لوگوں کو بیج اور کھاد دیا جارہا ہے۔غریب کاشتکار آفس کے چکر لگا لگا کر تھک چکے ہیں۔کاشتکاروں نے صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے بتایا کہ مختار کار سنجھورو نے واضع کیا ہے کہ جن لوگوں کو بیج فراہم کیا گیا تھا حکومت سندھ کی پالیسی کے تحت ان کاشتکاروں کو کھاد مہیا نہیں کیا جائے گا ۔کاشتکاروں نے مزید بتایا کہ اسسٹنٹ کمشنر سے بار بار شکایت کے باوجو د اس مسئلے پر کوئی ایکشن نہیں لیا اور مجرمانہ خاموشی اختیار کر رکھی جس سے صاف ظاہر ہوتا ہے کہ اسسٹنٹ کمشنر نے بھی مختار کار کے ساتھ ملی بھگت کر رکھی ہے۔دوسری طرف کاشتکاروں نے مختار کار روینیو سنجھورو کو الٹی میٹم کیا ہے کہ اگر چوبیس گھنٹوں تک کھاد فراہم نہیں کی گئی تو سخت احتجاج کیا جائے گا۔واضع رہے کہ اس سے قبل بھی کاشتکاروں کی جانب سے سیشن کورٹ میں ایک انسانی حقوق پٹیشن دائر کی گئی تھی جس میں کاشتکاروں کی جانب سے بین نہ ملنے کی شکایت کا ازالہ کرنے کی استدعا کی گئی تھی جس پر سیشن جج سانگھڑ نے اسسٹنٹ کمشنر سنجھورو اور مختار کار سنجھورو کو احکامات جاری کئے تھے کہ کاشتکاروں کو حکومتی پالیسی کے مطابق بیج اور کھاد فراہم کیا جائے لیکن سسٹنٹ کمشنر سنجھورو اور مختار کار سنجھورو نے عدالتی احکامات کی حکم عدولی کرتے ہوئے کاشتکاروں کو بیج اور کھاد فراہم نہیں کیا۔

یہ بھی پڑھیں  پتوکی:اسسٹنٹ کمشنر پتوکی کی ہدایت پر محکمہ صحت کی ٹیم کے ہوٹلوں اور مختلف دوکانوں پر چھاپے

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker