پاکستان

آرمی چیف جنرل اشفاق پرویز کیانی نے کہا پارلیمنٹ کی سفارشات پر وزیراعظم کا بیان واضح ہے اور نیٹو سپلائی کی بحالی کا فیصلہ پارلیمنٹ نے کرنا ہے۔شہباز ائربیس جیک آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے آرمی چیف جنرل اشفاق پرویز کیانی نے کہا کہ اٹھارہ فیصد دفاعی بجٹ میں سے نو فیصد بری اور نو فیصد نیوی اور ائرفورس کا ہے۔ انھوں نے ٹی وی پر مختلف ٹاک شوز میں دئے جانے والے اس تاثر کو غلط قرار دیا کہ پاکستان کا دفاعی بجٹ ستر فیصد ہے۔ انھوں نے کہا کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں نئے ایف سولہ طیاروں کا کم سے کم استعمال کیا جائے گا۔ پاک فضائیہ کے سربراہ ائرچیف مارشل راؤ قمر سلیمان نے کہا کہ ملک کی مشرقی اور مغربی سرحدیں محفوظ ہیں، بھارت کی نئی جنگی حکمت عملی کا منہ توڑ جواب دیا جائے گا۔ انھوں نے کہا کہ یہ تاثر غلط ہے کہ پاکستانی جہاز امریکی جہازوں پر فائر نہیں کر سکتے۔ ائرچیف راؤ قمر سلیمان نے بتایا کہ ڈرون طیارے پاکستان میں تیار کئے جا رہے ہیں، لیکن ان میں میزائل سسٹم نہیں لگایا جا رہا۔ اس موقع پر پاک فضائیہ کے سربراہ نے اپنی مدت ملازمت میں توسیع سے متعلق سوال کا جواب دینے سے گریز کیا۔ ڈپٹی چیف آف ائیر سٹاف آپریشن ائیر مارشل وسیم الدین نے کہا کہ امریکہ سے اٹھارہ نئے ایف سکسٹین بلاک ففٹی ٹو کے علاوہ چودہ سیکنڈ ہینڈ ایف سکسٹین بھی مل گئے ہیں جبکہ چین سے پہلا اواکس طیارہ بھی مل گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں  وفاق میں 31اور صوبائی دارلحکومتوں میں 21,21توپوں کی سلامی

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker