تازہ ترینعلاقائی

پاکستانی سرحد پر قائم صادقیہ کینال پر ڈیفینسیوں کو غیر قانونی طور پر لاکھوں روپے کے عوض کھول دیا گیا ہے

bhawal nagarبہاولنگر( بیو رو چیف) پاکستانی سرحد پر قائم صادقیہ کینال پر ڈیفینسیوں کو غیر قانونی طور پر لاکھوں روپے کے عوض کھول دیا گیا ہے ۔غریب کسانوں کے رقبے زیرِ آب ۔ متاثرین کی چیف آف آرمی سٹاف ، ڈی جی رینجرز اور ڈی سی او بہاولنگر سے نوٹس لینے کا مطالبہ :۔تفصیل کے مطابق بہاولنگر کی تحصیل منچن آباد کے موضع منیاں والا کے بڑے بڑے وڈیروں نے اپنے رقبوں کو غیر قانونی طور پر آباد کرنے کے لیے محکمہ ایری گیشن کے آفیسران سے ملی بھگت کر کے پاکستانی سرحد کے نزدیک صادقیہ کینال پر ملکی مفاد اور حالاتِ جنگ کے دوران دشمنوں کی موومنٹ کو روکنے کے لیے صادقیہ کینال پر بنائی گئی ڈیفینسیوں کو غیر قانونی طور پر لاکھوں روپے کے عوض رات ہوتے ہی کھول دیا جاتا ہے جو صبح ہونے تک مسلسل پانی بارڈر ایریا میں پھیل جاتا ہے اس پانی کو مقامی بڑے زمیندار اور ٹھیکیدار تالابوں کی صورت میں سٹور کر لیتے ہیں جبکہ چھوٹے کسان جن کی زمین سے یہ پانی گزر کر آتا ہے ان کی فصل کو تباہ کردیتا ہے۔ وہاں پاکستان رینجرز کی چوکیاں قائم ہیں اور مسلسل پٹرولنگ بھی ہے ان ڈیفینسیوں کے مسلسل چلنے سے کسی بھی وقت صادقیہ کینال کا پشتہ ٹوٹ سکتا ہے اور علاقہ زیرِ آب آ سکتا ہے جس سے لاکھوں اور کرڑوں کا نقصان اٹھانا پڑ سکتا ہے۔مقامی چھوٹے کسان محمد عالم ، محمد نوید اور محمد وسیم نے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ حکام بالا جناب چیف آف آرمی سٹاف جنرل پرویز کیانی ، ڈی جی رینجرز اور ڈی سی او بہاولنگر سے اپیل کی ہے کہ اس خطرناک کرپشن کو روکا جائے اور اس میں شامل لاکھوں روپے وصول کیاجائے

یہ بھی پڑھیں  منی بجٹ کا خطرہ ٹل گیا،صدر نے سیلزٹیکس بڑھانے کا آرڈیننس واپس کردیا

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker