شہ سرخیاں
بنیادی صفحہ / تازہ ترین / خاں سب ایزی نہیں لیں

خاں سب ایزی نہیں لیں

تحریک انصا ف پچھلے کچھ سا لوں سے جو عوام کو سیکھا رہی ہے ، عملی مظا ہر ہ کل دیکھنے کو ملا ہے ، اور شا ہد عوام نے سو چا اگلے الیکشن کے آ نے سے پہلے بقو ل شا عر
کب تک سنے گی رات ، کہاں تک سنا ئیں ہم
شکو ے گلے سب آ ج تیر ے رو بر و کر یں
جو ہو تا صا حب بہت کچھ وا ضع کر کے جا تا ہے ، عقل والے پھر اس میں سے سبق لیتے ہیں ، اور با قی بس بہا نے ڈھو نڈ تے ہیں اور وضا حتیں دیتے پھر تے ہیں ، پھر اس بات پر نہ ر ہیں کہ ان کو کا میا بی ملنی ہے ، ضمنی الیکشن میں دو سیا سی پا رٹیا ں ، ن لیگ اور تحر یک انصا ف تھیں ، دونوں کی طر ف عدا لتوں کے فیصلوں کو بو جھ تھا ، مگر ن لیگ نے جب اس حلقے میں ٹکٹ دینے کا فیصلہ کیا تھا ، فل یہ رسک لیا گیا کہ پیسے کی بنا ء پر اس سیٹ پر فو کس کیا گیا تو ہم پر پہلے ہی کر پشن کے امبا ر سا منے آ رہے ہیں تو اگر الیکشن ون کر نا ہے تو عوام میں ایسا نما ئند ہ سا منے لا نا پڑ ئے گا جس سے یہ تا ثر دیا جا ئے کہ ن لیگ اس شخص کو ٹکٹ دے رہی جو عوام کے سا تھ ایما ندا ری کے سا تھ رہا ہے اور عوام کا اصل نما ئند ہ ہے ، دوسری جا نب ، تحر یک انصا ف میں جہانگیر تر ین سب کو عدا لت نے نا اہل کیا تھا ، خاں صاحب نے جہا نگیر تر ین کا حو صلہ بر قرار رہے اس کے لیے ان کی مر ضی کے مطا بق ٹکٹ دیا اور جب پتہ چلا کہ وہ اپنے بیٹے کو سا منے لا نا چا ہتے ہیں تو سوال سا منے آ ئے کہ مو روثی سیا ست کے خا تمے کی با ت کی جا تی رہی ہے مگر اب تحر یک انصا ف ہی اس روش پر چلے گی ، پھر فیصلہ کیا گیا کہ وضا حت دیں کہ جہا نگیر تر ین کا بیٹا پڑ ھا لکھا ہے تو عوام کو نو جوان پڑ ھے لکھے نما ئند ے چا ہیں ، اور ذہن میں یہ فکس کیا گیا، اگر ہم علی تر ین کے نا م الیکشن جیت گے تو ، دو با تیں ہو ں گئیں ، ایک جہا نگیر صا حب خو ش ہو جا ئیں گے اور سا تھ جو مو روثی سیا ست کا دبہ لگا نے کی کو شش کی گئی اس پر مو قع بنے گا کہ اب دیکھیں پڑ ھے لکھے نو جو ان سا منے لا نا کو ئی غلط سیا ست نہیں ، دو نوں سیا سی جما عتوں کی پلا ننگی وا ضع تھی ، مگر جب نتا ئج سا منے آ ئے تو ن لیگ نے جو رسک لیا تھا ، اس میں وہ کا میا ب ہو گے ، اور اس الیکشن میں ان کی کا میا بی ، پو ری سیا سی جما عت میں جو ش دے گئی ہے ، اور تحر یک انصا ف کے لیے پیغام ہے کہ ٹکٹ دیتے کے معا ملے میں خاں صا حب یا سنجیدہ نہیں ہو تے یا ابھی تک اس معا ملے میں مکمل استا د نہیں ہو ئے ہیں، اس الیکشن کے ہا ر نے کے بعد اور دوسری جا نب ن لیگ کا ہر جلسہ کا میا ب جا رہا ہے تو تحر یک انصا ف کے لیے بہت سے سوالا ت سا منے آ رہے ہیں ، شا ہد عوام اس آ نے والے الیکشن سے پہلے خاں صا حب سے اس طرح کے سوالا ت نہ کر تی مگر اب صو رت حال ایسی بن رہی ہے کہ ایسے سوالات آ ئیں گے ،کہ ، خاں صا حب آ پ کے ہر جلسے میں ، فر نٹ لا ئن پر ، آ پ کا کو ئی پرا ناسا تھی نظر نہیں آ تا ، جو تحر یک انصا ف کا پرا نا ورکر رہا ہے ، اور تمام کے تما م وہ لو گ نظر آ تے ہیں جو دو سری جما عتو ں میں تحر یک انصا ف میں شا مل ہو ئے ہیں ، اور شا ہد تحر یک انصا ف میاں نو از شر یف کو نا اہل کر وا نے کے بعد بھی عوام کے دل اس طر ح نہیں یت رہی ، جیسے نو از شیر یف نا اہلی ے بعد کا میا ب جلسے کر رہی ہے اور ضمنی الیکشن میں کا میا ب بھی ہو رہی ہے ، اس لیے یہ نہیں کہا جا سکتا ہ صر ف جلسوں کی حد تک ن لیگ سیا ست میں ان ہے ، یہ با ت پیپلز پا ر ٹی کے لیے کہنی بنتی ہے ، جو کہتے ہیں ہ پنچا ب کے مخا فظ آ گے ہیں اور ووٹ تین ہزار بھی نہیں لے سکے ، اس کو کہہ سکتے ہیں کہ یہ پا رٹی صر ف جلسوں تک ابھی قا ئم ہے ، اور آ نے والے الیکشن میں اس سے بھی زیا دہ اس کے سا تھ برا ہو، ایک خیال تھا ، کہ ، آ نے والے الیکشن سے پہلے بہت سے سیاست دان ن لیگ چھو ڑ کر تحر یک انصاف کی جما عت میں جا ئیں گے ، تو نا قص را ئے یہ ہے کہ کل کے ضمنی الیکشن کے فیصلے کے بعد اور اس میں جس سو چ کے تحت خاں صا حب نے ٹکٹ دیا تھا، اس کی وجہ سے بہت سے ما ہر سیا ست دان سو چ سمجھ کر فیصلہ کریں گے ، اور میرا خیال ہے رات سے ہی عمران خاں صا حب کو کا لز آنا شر وع ہو ئی ہو ں گئیں کہ ابھی ہم و سو چنے کا وقت دیا جا ئے ۔
ہو نا یہ چا ہیے تھا کہ تحر یک انصا ف میاں نو ازشر یف کی نا اہلی کے بعد عوام میں زیا دہ پذ یر ائی حا صل کر تی مگر اس کے الٹ ہو رہا ہے ، ضمنی الیکشن سیا سی پا رٹی کی پو زیشن وا ضع کر جا تا ہے ، لہذ ا ، خان صا حب کے لیے یہ پیغا م ہے ، کہ خاں صا حب سیاسی فیصلے بہت سو چ سمجھ کر کر یں ، کیو نکہ آ پ خو د ہی کہتے ہیں کہ عوام اب با شعو ر ہو چکی ہے ، مگر سا تھ ہر ارب پتی کے بیٹے کو ٹکٹ دیتے ہیں اور رزلٹ بھی آ پ کے سا منے ، اس رزلٹ کے بعد تحر یک انصا ف زیا دہ احتیا ط سے کا م لے گی ، یہ اس کو فا ئد ہ ملے گا ، کیو نکہ جو یہ منطق پیش کر رہے تھے کہ سیا ست دان کا بیٹا ہے تو کیا ہو ا ہم پڑ ھا لکھاسا منے لا رہے ہیں تو یہ منطق غلط ثا بت ہو چکی ہے ۔ خاں صا حب جو تحر یک انصا ف کے پر انے ورکر وں کو بیک پر لے گے ہیں ان کو چا ہیے کے ان ی خد ما ت لیں ، کیو نکہ قد ر ت بھی انصا ف کر تی ہے ، اور جن پر انے ورکر وں کے سا تھ بے انصا فی ہو ئی ان کی آ ہ بھی کہیں پا رٹی کی نا کا می کا سبب نہ بن جا ئے
تحریک انصا ف پچھلے کچھ سا لوں سے جو عوام کو سیکھا رہی ہے ، عملی مظا ہر ہ کل دیکھنے کو ملا ہے ، اور شا ہد عوام نے سو چا اگلے الیکشن کے آ نے سے پہلے بقو ل شا عر
کب تک سنے گی رات ، کہاں تک سنا ئیں ہم
شکو ے گلے سب آ ج تیر ے رو بر و کر یں

یہ بھی پڑھیں  وزیراعظم کالوڈشیڈنگ سےچھٹکارےاورکراچی لاہورموٹروےکااعلان