تازہ ترینعلاقائی

ضلع سانگھڑمیں خسرے کے باعث تین لاکھ بچوں کی زندگیوں کوخطرہ

Khsra Pictureسنجھورو(نامہ نگار) ضلع سانگھڑ میں خسرے کے باعث تین لاکھ بچوں کی زندگیوں کو خطرہ۔ ویکسینیٹرز کو تین مہینوں سے تنخواہیں نہیں ملیں۔ 30 ہزار بچوں کی ویکسینیشن کے بعد ویکسین ختم ،ویکسینیشن کے لئے فنڈز موجود نہ ہونے کی وجہ سے ہفتہ کے روز سے مہم بند ہے۔ضلع میں مزید دو بچے خسرے سے جانبحق اب تک کل بارہ بچے خسرہ سے جانبحق ہوچکے ہیں مزید ایک ہزار سے زائد خسرہ میں مبتلاء ہیں۔ سندھ کے دیگر اضلاع کی طرح ضلع سانگھڑ میں بھی خسرہ وبائی شکل اختیار کرگیا ہے عید گاہ محلہ سنجھورو میں ڈیوجی بھیل کی بچی کرینا جو خسرے میں مبتلاء تھی جانبحق ہوگئی جس کے بعد سنجھورو میں خسرے سے جانبحق ہونے والے بچوں کی تعداد تین ہوگئی ہے۔ ان تینوں بچوں کا تعلق ایک ہی خاندان اور محلہ سے ہے جبکہ کھپروکے گاؤں مجید نکرج میں چار سالہ بچہ نند لال بھیل خسرے کے باعث ہلاک ہوگیا ہے۔ مذکورہ دو بچوں کی ہلاکت کے بعد ضلع سانگھڑ میں اب تک مختلف علاقوں میں خسرہ سے ہلاک ہونے والے بچوں کی تعداد 12 ہوگئی ہے ۔ ہلاک ہونے والے زیادہ تر بچوں کا تعلق تحصیل سانگھڑ، سنجھورو اور کھپرو سے ہے جبکہ چند روز سے ٹنڈو آدم اور جام نواز علی تحصیلوں سے بھی بڑی تعداد میں بچوں کے خسرہ میں مبتلاء ہونے کی اطلاعات ہیں۔ ضلع سانگھڑ میں مختلف نجی اور سرکاری اسپتالوں کے ذرائع سے موصول ہونے والی اطلاعات کے مطابق ضلع سانگھڑ میں اب تک تقریبا ایک ہزار سے زائد بچے خسرہ میں مبتلاء ہوچکے ہیں۔سنجھورو میں ایک ہفتہ قبل دو بچوں کی خسرہ میں مبتلاء ہونے کے جانبحق ہونے کے بعد ضلع سانگھڑ میں خسرہ سے بچاؤ کے ٹیکے لگانے کی مہم ہنگامی طور پر شروع کی گئی تھی جس کو تقریبا ایک ہفتہ جاری رکھا جاسکا ۔ضلع سانگھڑ میں مجموعی طور پر تین لاکھ تیس ہزار بچوں کے ویکسین کی جانی ہے جس میں سے صرف تیس ہزار بچوں کو حفاظتی ٹیکے لگائے جاسکے جبکہ تین لاکھ بچے تاحال ویکسین کے منتظر ہیں۔ ویکسینیٹر ز نے صحافیوں کو بتایا کہ مہم جاری رکھنے کے لئے ابھی تک نہ تو مطلوبہ تعداد میں گاڑیاں دی گئیں ہیں اور نہ ہی میسر گاڑیوں میں ڈالنے کے لئے پیٹرول یا ڈیزل ہے یہاں تک کہ ویکسینیٹرز کو تین ماہ سے تنخواہیں ادا نہیں کی گئیں ہیں جس کے باعث ویکسینیٹرز فاقہ کشی پر مجبور ہیں۔سول اسپتال سانگھڑ میں چند دن سے جاری ہڑتال کے باعث بھی خسرہ کے خلاف حفاظتی ٹیکے لگوانے کے لئے آنے والے والدین کو بھی بغیر ٹیکے لگوائے واپس جاناپڑا۔

یہ بھی پڑھیں  پاکستان نیوی میں پی تھری سی ائیر کرافٹ شامل

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker