تازہ ترینعلاقائی

بھارت پاکستان کی زراعت کو تباہ کرنے کے منصوبوں پر عمل پیرا ہے، کسان بورڈ

لاہور (پریس ریلیز) مرکزی صدر کسان بورڈ پاکستان سردار ظفر حسین خان نے وفاقی اور صوبائی حکومتوں کو متنبہ کیا ہے کہ وہ ہندو بنےئے کی طرف سے پاکستانی زراعت کی تباہی کے منصوبوں پر بروقت گرفت کریں بصورت دیگر وہ اپنے مضموم مقاصد میں کامیاب ہو جائے گا اور پاکستان جیسے زرعی ملک کو خوراک کے معاملے میں بھارت کا دست نگر بن کر رہنا پڑے گا۔ کاشت کاروں کے وفد سے ملاقات کے دوران انھوں نے بھارتی آبی جارحیت پر اپنے تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ قبل ازیں بھارت دریائے جہلم، چناب اور سندھ پر کئی ناجائز ڈیم تعمیر کر چکا ہے نتیجتاً پاکستانی دریاؤں کے بہاؤ میں کمی آئی ہے اور حکومت پاکستان نے بھی کسی بین الاقوامی پلیٹ فارم پر بھارت کی آبی جارحیت کے خلاف موثر اقدام نہیں اٹھائے جس سے پاکستانی زراعت کو ناقابل تلافی نقصان اٹھانا پڑ رہا ہے۔ حکومت پاکستان کی طرف سے مکمل لاعلمی اور خاموشی کی وجہ سے وہ اب دریائے چناب پر مزید ناجائز تعمیرات ’’ریٹل‘‘ نامی پن بجلی منصوبہ شروع کر رہا ہے۔ اطلاعات کے مطابق اس منصوبے کا حجم نیلم، جہلم ہائیڈرل منصوبے جتنا ہے۔ جب کہ پاکستان انڈس واٹر کمیشن بھارت کے اس منصوبے سے بے خبر ہے۔ صدر کسان بورڈ پاکستان نے چیف جسٹس آف پاکستان سے اپیل کی ہے کہ وہ بھارتی آبی جارحیت اور اس کے نتیجے میں پاکستانی زراعت کو پہنچنے والے ممکنہ نقصانات پر ازخود نوٹس کے تحت کارروائی عمل میں لائیں اور اس حوالے سے ایک عدالتی کمیشن تشکیل دیا جائے جو اس نئے منصوبے اور اس سے قبل ناجائز تعمیر کیے گئے تمام پن بجلی کے منصوبوں پر مکمل رپورٹ سپریم کورٹ آف پاکستان میں پیش کرے تاکہ اس اہم مسئلے کو بین الاقوامی عدالت انصاف میں لے جایا جاسکے اور بھارت کو آبی جارحیت سے روکا جاسکے۔

یہ بھی پڑھیں  مسیحی برادری آج ایسٹر مذہبی عقیدت و احترام سے منارہی ہے

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker