تازہ ترینعلاقائی

کسانوں کے مطالبات پورے ہونے تک احتجاج جاری رہیگا۔ کسان بورڈپاکستان

اسلام آباد( پریس ریلیز ) کسان بورڈ پاکستان کے صدر سردار ظفر حسین خاں نے آج یئعنی چودہ ہ نومبر 2012 کواسلام آباد نیشل پریس کلب کے سامنے شروع ہونے والے تین روزہ احتجاجی کیمپ کے دوسرے روز چاروں صوبوں سے آئے کسانوں کے ایک ہجوم کے شرکا ،تاجروں ، مزدوروں اور کسانوں کے اجتماع سے خطاب کر تے ہوئے کہاکہ شوگر ملوں نے گنے کے کاشتکاروں کو لوٹنے کیلیے ملیں چلانے سے انکار کرکے اور کروڑوں روپے کی گنے کی پے منٹ روک کرکین ایکٹ کی دھجیاں بکھیر دی ہیں مگر قانون نافذ کرنے والے ادارے اور آزاد عدلیہ خاموش ہے ۔شوگر ملیں ہر سال گنے کے کاشتکاروں کو پریشان کرتی ہیں اور اس ٹینشن سے ہزاروں کسان شوگر میں مبتلا ہو چکے ہیں اور سفید زہر چینی کے استعمال سے لاکھوں شہری بھی شوگر میں مبتلا ہو چکے ہیں ۔شوگر کے عالمی دن کے موقعے پر ہم حکمرانوں اور چیف جسٹس سپریم کورٹ سے مطالبہ کرتے ہیں کسانوں اور قوم کو شوگر میں مبتلا کرنے والی اور کین ایکٹ کی دھجیاں بکھیرنے والی شوگر ملوں کا سخت احتساب کیا جائے ۔ صوبہ خیبر پختونخواہ کے صدر رضوان اللہ خاں مہمند،صوبہ پنجاب کے صدور ڈاکٹر محمد نواز چھینہ،میاں محمد ابراہیم اور ضلع بہاولپور ،لودھراں،ملتان،راجن پور،ساھیوال ،فیصل آباد مظفر گڑھ،ڈیرہ غازی خاں،وہاڑی،ٹوبہ ٹیک سنگھ،جھنگ،چنیوٹ،اور اوکاڑہ کے صدور نے اس موقع پر ہاتھوں میں ہاتھ ڈالکر اعلان کیا کہ اگر حکومت نے ہمارے جائز مطالبات نہ مانے تو پھر ملک بھر کے کروڑوں کسان سڑکوں پر آکر احتجاج کریں گے اور لٹیری ملوں اور انکے ساتھی اسمبلی ممبران کا گھیراؤ کریں گے اور پورے ملک میں دمادم مست قلندر کی صدائیں بلند ہونگی۔ جنرل سیکرٹری ملک محمد رمضان روہاڑی نے آنے والے تاجروں،مزدوروں،صحافیوں کا شکریہ ادا کیا اور اعلان کیا کہ کہ تحریک کے اگلے مرحلے کا اعلان پندرہ نومبرکودو بجے یعنی آج بروز جمعرات کو احتجاجی کیمپ میں ایک پریس کانفرنس میں کیا جائے گا۔شرکا نے وقفہ وقفہ سے ،،کسان بچاؤ۔۔۔ملک بچاؤ،،کے فلک شگاف نعرے بھی لگائے۔

یہ بھی پڑھیں  موبائل فون چارج کریں جوتوں سے

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker