تازہ ترینعلاقائی

کسانوں کے مطالبات منوانے کیلیے کسانوں کا تین روزہ احتجاجی کیمپ آج سے شروع ہوگا

لاہور﴿ پریس ریلیز﴾ کسان بورڈ پاکستان کے صدر سردار ظفر حسین خاں نے تیرہ نومبر 2012 سے شروع ہونے والے تین روزہ احتجاجی کیمپ کے انتظامات کا جائزہ لینے کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے بتایا کہ گزشتہ روز ملک کے دور دراز علاقوں سے کسانوں اور کسان بورڈ کے مقامی رہنما اسلام آباد پہنچ گئے تھے اور آج یعنی تیرہ نومبر بروز منگل سے سہ روزہ احتجاجی کیمپ کا آغاز ہو جائیگا۔انہوں نے کہا کہ سندھ میں شوگر ملوں نے کسانوں کو لوٹنے کیلیے ایکا کر لیا ہے اور پنجاب میں بھی حکومت کی اشیر باد سے مل مالکان کسانوں کو لوٹنے کیلیے ایک ہوچکے ہیں۔اسی طرح کاٹن ملوں نے بھی اس سال کپاس کے کاشتکاروں کو خوب لوٹا ۔اور اب رائس مل مالکان بھی کم قیمت پر چاول خرید کو چاول کے کاشتکاروں کو لوٹ رہے ہیں۔گنے کی مقررکردہ قیمت170فی من انتہائی کم ہے کیونکہ لاگت کاشت میںپچاس فی صد اضافے کے بعد گنے کی قیمت 250 فی من مقرر کی جانی چاہیے۔حکمران طبقہ کی ملوں نے کسانوں کو لوٹنے کے تمام ریکارڈ توڑ ڈالے ہیں اور انشا ئ اللہ ہم بھی کسانوں کی احتجاجی تحریک کو مرحلہ وار بڑھا کر نئے ریکارڈ قائم کریں گے۔اگر حکمرانوں نے پر امن طریقے سے ہمارے مطالبات نہ مانے تو پھر ہم لٹیرے حکمرانوں اور لٹیرے مل مالکان کا گھیرائو کریں گے۔انہوں نے ایک صحافی کے سوال کے جواب میں کہا کہ تحریک کے اگلے مرحلے کا اعلان پندرہ نومبر کو احتجاجی کیمپ میں کیا جائے گا۔مرکزی صدر نے میڈیا،تمام سیاسی ،مذہبی،صحافتی،این جی اوز،وکلا اور تمام طبقہ ہائے زندگی کے رہنمائوں کو مظلوم کسانوں کی مدد کرنے کی اپیل کرتے کہا کہ ملکی معیشت کی بہتری زرعی معیشت کی بہتری میں مضمر ہے اور اگر خدا نخواستہ زراعت تباہ ہوگئی تو پورا ملک ایتھوپیا اور صومالیہ کا نقشہ پیش کرے گا۔اانہوں نے پوری قوم کو ،،کسان بچائو۔۔۔ملک بچائو،،کے نعرے تلے متحد ہونے کی اپیل کی۔

یہ بھی پڑھیں  وہاڑی ضمنی الیکشن ،پنجاب حکومت بمقابلہ جٹ گروپ

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker