تازہ ترینعلاقائی

خادم اعلیٰ پنجاب صوبے میں گندم کے کسانوں کو لوٹنے والوں کا محاسبہ کریں

لاہور ﴿ پریس ریلیز ﴾ کسان بورڈ پاکستان کے جنرل سیکرٹری ملک محمد رمضان روہاڑی نے ضلع قصور کے گندم کے کاشتکاروں کے وفد جس کی قیادت جنرل سیکرٹری کسان بورڈ صوبہ وسطی پنجاب سردار محمد اشفاق ڈوگر کر رہے تھے سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ مرکزی حکومت اور صوبائی حکومت گندم کی خرید میں ہونے والے گھپلوں ،بار دانہ کی تقسیم میں نا انصافیوں اور اپنے چہیتے مڈل مینوں کے ذریعے کسانوں کو لوٹنے کے الزامات ایک دوسرے پر لگا کر کسانوں کو بے وقوف بنا رہی ہیں ۔ حالانکہ مرکز کا محکمہ پاسکو اور صوبہ پنجاب کا محکمہ فوڈ دونوں کسانوں کے ساتھ زیادتیاں کر رہے ہیں ۔ عام کسان بار دانہ کے حصول کے لئے کئی ہفتوں سے دھکے کھا رہا ہے۔ دھوپ میں کھڑے کسانوں کی لمبی قطاروں کے ساتھ محکمہ کے افسران جانوروں جیسا سلوک کرتے ہیں ۔ جبکہ بار دانہ ممبران اسمبلی کے چہیتے مڈل مینوں ، آڑھتیوں اور فلور مل مالکان کو راتوں رات دے دیا جاتا ہے ۔ جو کسانوں سے آٹھ سو روپے فی من سے لے کر ساڑھے آٹھ سو روپے فی من گندم خرید کر اسے سرکاری ڈپووں پر سپلائی کر کے کروڑوں روپیہ کما رہے ہیں ۔ ایسے لگتا ہے کہ جیسے مرکزی اور صوبائی حکومتیں گندم کے کاشتکاروں کو لوٹ کر اپنے اگلے انتخابات کے لئے ’’خرچہ پانی ‘‘اکھٹا کر رہے ہیں ۔ انہوں نے مرکزی اور صوبائی حکومتوں سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ ایک دوسرے پر گندم کی خریداری میں ہونے والی کرپشن کے الزامات لگانے کی بجائے گندم کے کاشتکاروں کو انصاف فراہم کریں ۔ انہوں نے خادم اعلیٰ پنجاب سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ وفاقی حکومت کو انصاف کا درس دینے کی بجائے اپنے صوبے کے کروڑوں کسانوں کو انصاف فراہم کریں ۔ انہوں نے صوبہ پنجاب خصوصاضلع قصور میں پر چیز نگ سینٹر تبدیل کرنے کی مذمت کرتے ہوئے انہیں انکی سابقہ جگہوں پر بحال کرنے کا مطالبہ بھی کیا ہے

یہ بھی پڑھیں  کیا پاکستان اس لیے بنا تھا؟

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker