تازہ ترینعلاقائی

سانحہ کوہاٹ میں شہید پولیس کانسٹیبل کو مکمل سرکاری اعزاز کےساتھ سپرد خاک کردیاگیا

kohatکوہاٹ(ڈسٹرک رپوٹر) کوہاٹ میں دیر پا امن وامان کے قیام کے سلسلے میں وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا کے معاون خصوصی برائے ہاؤسنگ امجد خان آفریدی اور ڈپٹی کمشنر کوہاٹ امجد علی خان کی صدارت میں اہل تشیع اور اہل سنت والجماعت کا مشترکہ گرینڈ جرگہ منعقد ہوا ۔کمشنر کوہاٹ ڈویژن سید جمال الدین نے اس موقع پر کل بروز بدھ صبح 7 بجے سے کرفیو اٹھانے کا اعلان کیا ۔اس موقع پر ایم این اے شہر یار آفریدی ،چیرمین ڈیڈک ضیاء اﷲ بنگش ،ڈی آئی جی اشتیاق مروت ،ایس پی سلیم مروت اور اسسٹنٹ کمشنر ساجد احمد بھی موجود تھے ۔جرگہ سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ خیبر پختونخواکے معاون خصوصی برائے ہاؤسنگ ملک امجد آفریدی نے کہا کہ کوہاٹ شہر ہم سب کا ہے لہذا یہاں پر امن کا قیام اور عوام کی ترقی و خوشحالی بھی ہماری مشترکہ ذمہ داری ہے۔ انہوں نے امن کے قیام میں انتظامیہ اور دونوں مسالک کے مشران کے مثالی کردار کو سراہا ۔جرگہ سے خطاب کرتے ہوئے کمشنر کوہاٹ سید جمال الدین شاہ نے مثالحتی کوششوں کے سلسلے میں دونوں فریقین کے کردار کو زبردست الفاظ میں خراج تحسین پیش کیا ۔انہوں نے کہا کہ ہمارے ہاں یہ روایت عام ہے کہ ایمرجنسی کی نفاذکے وجہ سے تاجر برادری شہریوں کو دونوں ہاتھوں سے لوٹنے سے دریغ نہیں کرتے، تاہم انہوں نے مقامی انتظامیہ کو سختی سے ہدایت کی کہ وہ فوری طور پر مختلف بازاروں کا گشت کرے اور تاجروں کو منافع خوری سے روکیں ۔انہوں نے کہا کہ امن کے قیام کے لئے کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کیا جائے گا اور اس ضمن میں تما م دستیاب وسائل بروئے کا ر لائے جائیں گے ۔کمشنر نے کہا کہ وا قعہ میں ملوث کئی افراد کی گرفتاریاں عمل میں لائی گئیں ہیں اور باقی افراد بھی جلد گرفتار کئے جائیں گے ۔انہوں نے کہا کہ جرائم کے خاتمے تک کریک ڈاؤن کا سلسلہ جاری رہے گا ۔جرگہ سے خطاب کرتے ہوئے ڈپٹی کمشنر امجد علی کان نے کہا کہ شہر میں کرفیو کا نفاذ کا مقصد صرف اور صرف امن کا قیام تھا انہوں نے کہا کہ انتظامیہ کو کرفیو کے نفاذ سے شہریوں اور تاجر برادری کو درپیش مشکلات کا مکمل ادراک ہے ۔امجد علی خان نے کہا کہ زندہ قوموں پر مختلف قسم کے امتحانات اتے رہتے ہیں اور دانشمندی اور نہایت برد باری سے حالات پر قابو پانے کے سلسلے میں انتظامیہ اور عوام کے کندھوں پر بھاری ذمہ داریاں عائد ہوتی ہیں قبل ازیں جرگہ اراکین نے 18نومبر کو پیش انے والے واقعے کو انتہائی افسوس ناک قرار دیت ہوئے مٹھی بھر شر پسند عناصرکے تمام تر مذموم عزائم کو خاک میں ملانے پر مکمل اتفاق کیا گیا ۔جرگہ ممبران میں جاید ابرہیم پراچہ ،مولانا رحم دین ،مولانا مجاہدین ، فیاض حیدری ، محمد سعید بجی،امیر خان آفریدی ، عابد خان ،منصور احمد پراچہ ،حاجی مہایون پہلوان، سیٹھ گوہر ،عبدالجلیل پراچہ،حاجی منظور پراچہ ،اسرار شنواری، عابد پراچہ سیف اﷲ آفریدی ،ہدایت ،جسٹس ابن علی ،مہتاب الحسن ، شاہ رضا ء،مظہر علی شاہ،مولانا حمید اغا ،سعید بادشاہ گل ،نور اکبر ،امجد علی شاہ، شیر محمد طوری ، صوبیدار علی داد خان ،غلام حسین ، منظر علی اور رضوان شامل تھے ۔

یہ بھی پڑھیں  اوکاڑہ : گھتی سلجھ گئی ، ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن کی ہڑتال ختم

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker