تازہ ترینکالمندیم چوہدری

تجدید عہد کا دن یوم دفاع پاکستان ۔۔۔۔ کرے گا کون دفاع ْْْْْْْْ?

پاکستان کے دفاع کے طور پر منایا جانے والا دن 6 ستمبر 16965 کی جنگ جیتنے کی خوشی میں منایا جاتا ہے جب بھارت نے پاکستان پر حملہ کیا اس وقت صدر ایوب خان نے قوم سے خطاب میں کہا تھا کہ دشمن نے ہم پر لاہور بارڈر سے حملہ کر دیا ہے اور قوم فوج کا ساتھ دے ۔یہ وہ وقت تھا جب نہ کوئی بلوچی تھا نہ کوئی سندھی تھا نہ پٹھان نہ پنجابی سب پاکستانی تھے اور وہ جنگ جت لی گئی ،لیکن آج یہ وہ ہی قو م ہے جو فرقہ ذات پات برادری میں بٹ چکی ہے ،آج ہر طرف سے پاکستان کو گھیر ا جا چکا ہے ،بیرونی طرف سے بھی اور اندرونی طر ف سے بھی فرقوں میں بانٹنے کی کوشش کی جارہی ہے ۔بلوچستان کے اندر بھی نفرت کی آگ ہو ا پکڑ رہی ہے ،جس میں سب سے زیادہ اپنوں کا ہی ہاتھ ہے ،گلگت بلتستان میں بھی فرقہ پرستی کو ہوا دی جارہی ہے آج تک کیوں نہیں پتہ چلایا جا سکا کہ اس فرقہ پرستی کی آگ میں کون سے سازشی عوامل ہیں یہ ہی حال ہماری نظریاتی سرحدوں کا بھی ہوا ہے ،1996 میں سونیا گاندھی نے ایک جلسہ سے خطاب کرتے ہو ئے کہا تھا کہ آنے والا وقت اسلحہ کا نہیں ہے آنے والا وقت ثقافت کا ہے جس کی ثقافت مظبوط ہو گی وہ یہ جنگ جیت جائے گا اور ہم یہ جنگ جیت چکے ہیں آج ہماری ثقافت ہمسایہ ملک کے گھر گھر پہنچ چکی ہے ،ہم اگر اپنے گھروں کا جائزہ لیں تو واقعی سونیا گاندھی نے جو کہا تھا وہ سچ ثابت ہو رہا ہے آ ج ہمارے اپنے ٹی وی چینل انڈین فلمیں اور گانیں سر عام چلا رہے ہیں بلکہ ان کی وہ فلمیں جو کے صر ف اور صرف پاکستان کے خلاف بنائی گئی ہیں جن میں ہماری ایجنسیوں کو بدنام کیا گیا ہے ہمارے اپنے ہی ٹی وی چینل کمال ڈ ھٹائی سے ان کی تشہیر کر رہے ہیں کہ جناب فلاں فلم نے اتنا بزنس کما لیا ،یہ کونسی محب وطنی ہے امن کی آشہئ کے نام پر ملک کی نظریاتی سرحدوں کو مٹانے کی سازشیں ہو رہی ہے اور کوئی ادارہ نہیں پاکستان کے اندر جو ان سے پو چھ سکے کے یہ سب کچھ کیوں دکھایا جارہا ہے اور پاکستانی کی آنے والی نسل کو یہ کیا تحفہ دیا جارہے ہے کتنے میں ان لوگوں نے پاکستان کی نظریاتی سرحدوں کو ختم کرنے کا سودا کیا ہے ،پاکستان کے اوپر ڈرون حملے ہو رہے ہیں کوئی ان کو روکنے کے لیے تیار نہیں ،ایک ڈکٹیٹر کا تحفہ جمہوری حکومت نے بھی قوم کو اس سے بڑھ کر کو دیا ہے ،پہلے ڈرون حملے کم ہوتے تھے جب سے جمہوری حکومت آئی ہے ڈرون حملوں کی تعداد میں بھی اضافہ ہو گیا ہے ،
قائد اعظم محمد علی جناح نے جس کشمیر کو پاکستان کی شہ رگ جانا تھا ،اس کو ہم بلکل ہی بھو ل چکے ہیں آج ہمارے سیاستدان صر ف انڈیا کے ساتھ تجارت کی باتیں کرتے ہیں کشمیر پر کوئی بھی بات کرنے کے لیے تیا ر نہیں ،وہ کشمیری جنہوں نے لاکھوں کی تعداد میں پاکستان کے نام پر قربانی دی اپنی عزتیں گنوائ دیں آج ان کا نام لینے کے لیے کوئی تیار نہیں ،وہ انڈیا جس نے پاکستان کو قحط سالی تک پہنچا دیا ہے ،جس نے تمام دریاوں پر بین القوامی معاہدوں کی خلاف وردی کرتے ہوئے ڈیم بنا لیے ہیں آج ہمارے سیاستدان اس کے گن گا رہے ہیں اپنے ملک کی چینی کو بیرون ملک اچھے داموں فروخت کر دیا جاتا ہے بعد میں اسی بھارت سے کمیشن لے کر چینی منگوا لی جاتی ہے ،اس وقت ہمارے ملک کو بیرونی دنیا سے کم اور اپنوں سے زیادہ خطرہ ہے ،ہمارے وزیر داخلہ ایک طرف تو کہتے ہیں کے بلوچستان کے حالات کو خراب کرنے میں شواہد ملے ہیں کے بھارت کا ہاتھ ہے ،پھر کس منہ سے اسی بھارت کے دورے کئے جاتے ہیں تجارت کے لیے ؟بجائے اس کے سوچا جائے کے ملک کو کس طرح بحرانوں سے نکالا جائے تمام سیاسی جماعتیں اپنی اپنی راگنی الاپ رہی ہیں ،پاکستان کے دفاع کی باتیں ملک سے باہر بیٹھ کر کی جاتی ہیں ،شہریت دوسرے ملک کی اور سیاست پاکستان کے اندر کیا کمال ملک اور اس کے عوام ہیں جو ووٹ بھی ان کو دیتے ہیں جن کا اس ملک سے دور دور کا بھی واسطہ نہیں آج پاکستان کو وجود میں آئے 62 برس گزر چکے ہیں ان کی تیسری نسل اس ملک کے اندر پروان چڑھ رہی ہے اور وہ اپنے آپ کو پاکستانی کہلانے کو تیا ر نہیں آج بھی اپنے آپ کو مہاجر کہلاتے ہیں ،کسی دوسرے ملک میں جاتے ہیں 5 سال گزارنے کے بعد وہا ں کی شہریت لیتے ہیں ،اور کہتے ہیں کے ہم تو برٹش ہیں جی ،لیکن وہ ملک جس نے ان کو شناخت دی ان کو رہنے کو جگہ دی جس نے ان کو عزت دی اس میں 62 سال کے بعد بھی کہتے ہیں ہم پاکستانی نہیں ہم تو مہاجر ہیں ،پاکستانی قوم کو سوچنا ہو گا کہ اب اس ملک کی حفاظت کس نے کرنی ہے ،اس ملک کی ایجنسیوں کو اس کی حفاظت کرنی ہو گی جن پر بجٹ کا سب سے زیادہ حصہ خرچ کیا جاتا ہے ،اب وقت آگیا ہے کہ ان کو پاکستانی قوم کو بتانا ہو گا کہ پاکستان کے ساتھ مخلص کون ہے اور کون پاکستان کی جڑیں کاٹ رہا ہے ۔یہ پاکستان دنیا کے نقشہ پر ہمیشہ قائم رہنے کے لیے وجود میں آیا تھا اور انشااللہ ہمیشہ قائم رہے گا۔

یہ بھی پڑھیں  لاہور:بلدیاتی انتخابات میں جعلی ووٹ ڈالنے کے الزام میں پانچ افراد کو گرفتار کرلیا گیا

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker