شہ سرخیاں
بنیادی صفحہ / تازہ ترین / کچھ ظرف دکھادوجناب

کچھ ظرف دکھادوجناب

فیصلےجو ہو رہے ہیں کما ل ، بہت کمال کے ، مگر کچھ کو ہضم نہیں ہو رہے ، یہ ایک با ت ، اور با قی کچھ سیا ست دان جو بول رہے ، پہلے چا ر پا نچ سا ل کہا ں تھے ، کیا تب حب الوطنی نہیں جا گی تھی، مو قعے پر ذاتی مفا د ہو تے حب الو طنی نہیں جنا ب ۔ عوام کے لیے ایک پیغا م ہے ۔۔۔
چلتے بھی چلو کہ اب ڈیرے منز ل ہی پر ڈا لے جا ئیں گے
ایک بات ، مر یم اورنگزیب ، �آ پ کا اپنے قا ئد ، اپنی پا رٹی کے لیڈ ر کی طر ف داری کرنا حق بھی بنتا اور سیاسی فر ض بھی ہے ، کہ کچھ بھی ہو ، اپنی پا رٹی کا دفا ع کر نا ہو گا ، جو جتنا بو لے گا ، اس کو اتنا ہی نواز ہ جا ئے گا ، عا مر لیا قت کو بھی نوازہ جا ئے گا ، مگر ان جیسو ں کا ابھی وقت نہیں آ یا ، آج جمعہ کو ، محتر مہ منسٹر ہیں ، فر ما یا کہ ، اب ووٹ کو عز ت دو کے نعر ے پر میاں نواز شر یف عوام میں ان رہیں گے اور کا میا بی حا صل کر یں گے ، ووٹ کو عز ت کیسے دی جا نی چا ہیے، عوام سے پو چھیں یا آ پ سیا ست دانوں سے ، عوام کی آ واز میں ، ووٹ کی عز ت ، وہ عز ت ایسی ہے کہ عوا جس کو ووٹ دے ، وہ ایم این اے یا ایم پی اے بن کر اپنے حلقے میں کبھی کبھا ر ایسے نہ آ ئے جیسے رشتہ دار اپنے رشتہ داروں کے ہاں صر ف نخرہ دکھا نے جا تے ہیں ، اور ان لو گوں کا براحال دیکھ کر اندر ہی اندر خو ش ہو تے ہیں، کا میا بی کے بعد سیا ست دان ، بیر ون ممالک کے دوروں ، اور کیمٹی کے سر برا ہان بن کر رہنا چا ہتے ہیں ، مو لا نا فضل رحمن کو ہی دیکھ لیں ، پا نچ سال کشمیر کے معاملہ پر کیمٹی کے سر براہ بنے اور اب اعلا ن فر ما رہے ہیں ، کہ امر یکہ ، کو اب ہم بتا ئیں گے کہ ہم میں کتنی طا قت ہے ، نعر وں ، دھر نون، جلسے جلسوں میں کچھ لو گ اکٹھے کر لیں، یہ طا قت ، عوام کہتی طا قت ، طا قت یہ ہو تی ہے کہ، جیسے امر یکہ والے سا ئنس ، اور دیگر معاملا ت میں تر قی کر رہے ہیں ، اس طر ف ہما رے مولا نا صا حب بتا ئیں گے کہ وہ اتنے عر صہ سے اقتدار میں رہے تو انہوں نے حکو مت کو کو نسی اس طر ف تجو یز دی ، اور مجبو ر کیا کہ اقدا ت کیے جا ئیں تا کہ دوسر ے ممالک کا مقا بلہ کیا جا ئے ، مو لا نا صا حب اپنے علا قے میں ایک یو نی ورسٹی جو بنا ئی وہ ہی دیکھا دیں ، یو نی ورسٹی بنی نہیں، تعلیم کو فر وغ دیا نہیں ، نو جو ان نسل کو شعو ر نا لج ،علم ، دیا نہیں تو چلے امر یکہ کا مقا بلہ کر نے ، عوام کو کب تک بے وقو ف بنا ئیں گے ، تھو ڑا ظر ف دکھا ئیں ، ظر ف دکھا ئیں گے ، ووٹ کو خو د عز ت ملے گی ، اور آ پ کو بھی عز ت ملنا شر وع ہو جا ئے گی ، فر ما یا گیا ، کتنے سالوں سے کتنے وز یر اعظمو ں کو عدالتوں کے فیصلوں سے نشا نہ بنا یا گیا اور نا انصا فی کی گئی، یہ آ پ کی پا رٹی تھی ، جس نے کہا تھا ، یو سف رضا گیلا نی کے بار ے جو عدالت نے فیصلہ کیا اس کو ماننا چا ہیے اور عدالت کا احترام کرنا چا ہیے، اب آپ عدالت میں بیٹھے جج کو با بے رحمت کہہ رہے ، کچھ شر م کر و ،یہ تا ریخ معا ف نہیں کرئے گی، اور کبھی تا ریخ سے یہ مٹ نہیں سکھے گا ،لہذا ، تھو ڑا ، خیا ل کرو ، اپنا بھی ،اور اس عوام کا بھی ، کہتے ہیں ، وز یرا عظم نواز شر یف نہیں ٹکے کی کر پشن نہیں کی، اوکے ، کسی منسٹر نے بھی کر پشن نہیں کی، تو عوا م کو بتا دیں ، جس کی ووٹ کو آ پ نے عز ت دلو انی ہے کہ ، ملک کا ہر بڑا ادارہ ڈو ب رہا ، پی آ ئی اے ، ریلو ے ، اب با قی ہی، بہت کچھ آ پ کے سا منے ، ملک میں مہنگا ئی بڑ ھ رہی ہے ، بجلی کو پر ابلم ابھی تک ختم نہیں ہو ا ،پنجا ب آ پ کے پا س ، پہلے کو چھو ڑ کر اب مسلسل دس سال آ پ کے پا س رہا ، ایک ہسپتال بھی بنا ، جس میں اپ خو د علا ج کر و سکیں ، آ پ اس لیے عوام کی خد مت کر تے کہ آ پ سے اوپر والا خو ش ہو جا ئے ، تو اوپر والے کا قانو ن ، اسلام کی تعلیم کے انکا ری ہیں ، جس میں سبق دیاجا تا ہے کہ ، خو د کے لیے وہی پسند کر و جو دوسرے بھا ئی کے لیے پسند کرو ، خو د بر طا نیہ علا ج کر و، آ پ کے بھا ئی ، بز رگ ، بہن، ما ں ، با پ ، جن کو اسلا م میں آ پ کا کہا گیا ، وہ یہاں ہسپتا لوں میں رلتے ہیں ، علا ج، دوائی ، اس حصول کیلے در در پھر تے ہیں ، ریا ست بس نام کی سہو لت فرا ہم کر تی ہے ، پھر آ پ کے خو نب کے رشتے کیوں بر طا نیہ جا تے ، آ پ کا بی پی تھو ڑا کم زیا دہ ہو تا تو آ پ ایک دم بر طا نیہ کی ٹکٹ لیتے ہو ، یہ اسلا م کی تعلیم پر پورا اتر رہے ، یہ عوام کی خد مت ، اور رو نا روتے کے ، عدالتیں ٹھیک فیصلہ نہیں کر رہی ہیں تو عوام با ہر نکل کر ہما را سا تھ دیں، آپ ما ہر سیا ست دان ہیں تو اس حقیقت کو سا منے دیکھیں کہ ، جن آ پ اقتدار میں نہیں ہو تے تو کچھ لو گ بھی آ پ لیے نہیں سڑ ک پر آ سکتے ، تر کی ، کی مثال بنا نا چا ہتے تو اس لیڈ ر کی طر صرف ووٹ ی عزت تک نہیں عوام کی عز ت بنیں ، تب بہت عز ت ملے گی آ پ کو ، عدالتیں جس طر ح فیصلے کر رہی ہے ، جیسے فیصلہ ہوا، کہ پی آ ئی اے کو تبا ہ کیا گیا تو اس ادارے کے کسی بڑے کو بیرون ملک نہ جا ئے دیا جا ئے ، ان سے پو را پو را حسا ب کتا ب لیا جائے گا ،عدالتیں ،ایسے فیصلے کر نے پر آ ئیں تو سمجھ لیں، عوام کی قسمت بد لینے والی ہے ، عوام کو اب ہو ش لینا چاہیے، وز یرا عظم کچھ قا نون کی خلا ف ورز ی کر ئے گا اس کو قا نون سزا ء دے گا ،اس کا یہ مطلب نہیں کہ آپ کی ووٹ کی تو ہین ہو ئی ہے ، مثبت ، ووٹ کو دوبا رہ چا نس دیا جا ئے گا کہ ووٹ سے ہی نئے لو گوں کو منتخب کیا جا ئے ۔ اس سے زیا دہ ووٹ کو کیا عز ت دے جا ئے ، یا آ پ یہ کہنا چاہتے کہ جو بھی عوام کی ووٹ سے کسی سیٹ تک پہنچے تو وہ کچھ بھی کر ئے ، قا نون اس پر نہیں اپلا ئی ہو تا ، نہیں جنا ب ، نہیں ، اب تا ریخ بد لے گی ، ڈرامہ با زی ختم ہو گی، اب ختم ہو رہی ہے ، ا ب بھی طر یقہ بد ل لیں تو کچھ عز ت بچ جا ئے گی ، کم از کم پنجا ب آ پ کے پا س رہے گا ،یا اس سے بھی ہا تھ دھو نا چا ہتے ، زردار صا حب ریکا رڈ کی فیل حکومت کر کے اب بھی اس پو زیشن میں ہیں کہ اگلی بار بھی ان کو ہا تھوں میں سند ھ دیا جا ئے گا ، اس کو کہتے ہیں سیا ست ، فیصلیجو ہو رہے ہیں کما ل ، بہت کمال کے ، مگر کچھ کو ہضم نہیں ہو رہے ، یہ ایک با ت ، اور با قی کچھ سیا ست دان جو بول رہے ، پہلے چا ر پا نچ سا ل کہا ں تھے ، کیا تب حب الوطنی نہیں جا گی تھی، مو قعے پر ذاتی مفا د ہو تے حب الو طنی نہیں جنا ب ۔ عوام کے لیے ایک پیغا م ہے ۔۔۔
چلتے بھی چلو کہ اب ڈیرے منز ل ہی پر ڈا لے جا ئیں گے

یہ بھی پڑھیں  اسلام آباد پولیس کا سرچ آ پریشن،35 مشتبہ افراد کو حراست میں لے لیا گیا