تازہ ترینصابرمغلکالم

ایل او سی پر بھارتی جارحیت اور آرمی چیف کا دو ٹوک پیغام

دنیا اس وقت کرونا وائرس کے بدترین قہر کا شکار اوریہ آفت اب تک ہزاروں افراد کو نگل چکی ہے کرہ ارض پر کاروبار زندگی مفلوج،عالمی معیشت تباہ و برباد،درجنوں ممالک میں روزانہ کی بنیاد پر موت کا رقص جاری ہے ب تک اڑھائی لاکھ کے قریب افراد اس وباء کے ہاتھوں لقمعہ اجل بن چکے ہیں،مگر اس کے باوجود ناپاک پڑوسی دشمن ملک پر جنگی جنون طاری جبکہ مقبوضہ کشمیر میں لاک ڈاؤن 5اگست سے جاری ہے،دنیا کی سب سے بڑی جیل میں نہتے اور معصوم کشمیری تب سے مقید اور اذیت ناک زندگی گذارنے پر مجبور ہیں ایک طرف عالمی منصف بے حمیتی پر اترے ہوئے اور دوسری جانب گھٹیا ترین مسلم دشمن بھارت نے نہ صرف مقبوضہ کشمیر میں ظلم و جبر کا بازار گرم کر رکھا ہے بلکہ LOCکے پار پاکستانی علاقہ میں بھی نہتے شہریوں پر جارحیت سے باز نہیں آ رہا،رواں سال اب تک وہ 919سے زائد مرتبہ کنٹرول لائن پر سیز فائر معاہدے کی خلاف ورزی کر چکا ہے صرف ماہ اپریل میں 30بے گناہ شہری شہید ہوچکے ہیں جن میں 8افراد وہ بھی شامل ہیں جوماہ مقدس میں شہید ہوئے،انسانیت کی دشمن بھارتی فوج نے پاکستان میں کرونا وائرس کے پہلے مریض کی تشخیص کے یہ سلسلہ مزید تیز کر دیا اس دوران ایک شیرخوار بچہ شہید جبکہ35 گذشتہ روز 31لوگ زخمی ہوچکے جن میں 7خواتین اور8بچے بھی شامل ہیں،ان حملوں میں بھارتی فوج نے آرٹلری کا بھی ستعمال کیا،گذشتہ روز آزاد کشمیر کے ضلع کوٹلی میں کوئی سیکٹراور تتہ پانی سیکٹر پرافطاری وقت ہندو فوج نے جارحیت کا آغاز کیا شدید گولہ باری کا یہ سلسلہ بڑی دیر تک جاری رہا تاہم پاک فوج کی جانب سے بھرپور جوابی کاروائی کی گئی جس سے بھارتی توپیں خاموش ہوئیں اس موقع پر بہک درہ شیر خان کے رہاشی نصیر احمد شیلنگ سے شدید زخمی ہوا جسے پاک فوج نے کوٹلی منتقل کیا،27اپریل کوضلع کوٹلی کے سیکٹر جندروٹ میں صبع ساڑھے نو بجے بھارتی فوج کی اشتعال انگیزی پھر شروع ہو گئی چھوٹے ہتھیاروں سے فائرنگ کی گئی اس دوران گاؤں ردکتھر کی 26سالہ یاسمین بی بی سینے پر گولی لگنے سے موقع پر ہی شہید ہو گئی یاسمین کی دو سال قبل ہی شادی ہوئی تھی جسے ٹارگٹ کرتے ہوئے گولی ماری گئی جوبھارتی چوکی سے محض 100تا150میٹر فاصلے پر گھاس کاٹ رہی تھی،اسی روز کھوئی رتہ کا گاؤں جنجوٹ بہادر کی 9سالہ بچی ادیبہ اظہر بھی بھارتی فائرنگ سے زخمی ہوئی،آزاد کشمیر کے خوبصورت ضلع کوٹلی میں LOCسیکٹرزکوٹلی شہر سے اوسطاً 25سے40کلومیٹر دوری پر جہاں کشمیروں کی کثیر تعداد رہائش پذیر ہے،اس بڑھتی جارحیت پر چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ کنٹرول لائن پر تعینات جوانوں اور رہائشی افراد کا مورال بلند کرنے اور انہیں ہر قسم کا تحفظ دینے کا اعادہ کرنے کنٹرول کے اگلے موروچوں تک گئے جہاں کور کمانڈر راولپنڈی لیفٹیننٹ جنرل اظہر عباس نے ان کا استقبال کیاآرمی چیف کو بھارتی فوج کی جانب سے جنگ بندی معاہدے کی مسلسل خلاف ورزیوں شہریوں آبادیوں کو نشانہ بنانے اور پاک فوج کی جوابی کاروائی سے متعلق تفصیلی بریفنگ دی گئی جس کے بعد جنرل قمر جاوید باجوہ نے اپنے خطاب میں بزدل دشمن کو للکارتے ہوئے کہا کہ بھارت قابض فوج کی طرف سے کشمیریوں کی بہیمانہ قتل و غارت گری اور غیراخلاقی طور پرکنٹڑول لائن پر شہری آبادی کو نشانہ بنانا نا قابل قبول ہے،پاک فوج ہر جارحیت کا بھرپور اور منہ توڑ جواب دے گی،پاک فوج کی یہ بنیادی ذمہ داری ہے کہ وہ اپنے شہریوں کے تحفظ کو یقینی بنائے اور ہم یہ صلاحیت رکھتے ہیں کہ مادر وطن کی عزت و وقار اور جغرافیائی سا لمیت کا ہر قیمت پر تحفظ کر سکیں،آرمی چیف کی جانب سے دشمن کو دو ٹوک پیغام محض پیغام ہی نہیں بلکہ واضح ترین مؤقف ہے،حالانکہ بھارتی فوج اور ان کی حکومت ہی نہیں بلکہ دنیا اور حکومت پاک فوج کی مایہ ناز صلاحیتوں اور باجوہ ڈاکٹرائن سے بخوبی واقف ہے جس کا نظارا نہیں فروری میں نظر بھی آیا،اس کے باوجود بھی باز نہیں آ رہااشتعال انگیزی پر واضح کے جواب کے باوجود بھاتی فوج نے دورے روز کیلر اور رکھ چری سیکٹرزپر ایک بار پھر سویلین آبادی پر فائرنگ کھول دیاجس پر پاک فوج نے بر وقت اور مؤثر جوابی کاروائی کرتے ہوئے متعدد بھارتیوں چوکیوں کو تہس نہس کر دیا اس کروائی سے بھارتی فوج کو بھاری جانی و مالی نقصان اتھانا پڑاجبکہ اس جھڑپ میں دھرتی ماں کے سپوت کرک کے رہائشی لانس نائیک علی باز،سمیت 22سالہ خاتون اور 16سالہ بچہ شہادت پا گئے،ماہ رمضان کی آمد کے بعد کنٹرول لائن پر معمول سحری اور افطاری وقت شہری آبادی پر گولہ باری کو معمول بنا لیا ہے، وزیر اعظم پاکستان عمران خان نے اس حوالے سے مذمت کرتے ہوئے کہاانڈین بربریت مذموم اور شرمناک حرکات سے نہ تو کشمیریوں اور نہ ہی ہماری فوج کے مورال کم ہو سکتا ہے، بھارتی وزیر دفاع راجناتھ نے نہ جانے کس زعم میں ایک بار پھر احمقانہ دعوہ کر رہے ہیں کہ ہم نے پاکستان کے اندر کنٹرول ایریا میں پاکستانی لانچنگ پیڈز کو تباہ کر دیا ہے،بھارتی وزیر دفاع کے اس بیان اور کنٹرول پر شہری آبادی کو نشانہ بنانے کی وجہ سے بھارتی سفیر کو دفتر خارجہ طلب کرتے ہوئے شدید احتجاج کیا گیا،ترجمان فارن آفس عائشہ فاروقی کہا نے راجناتھ کے بیان کو من گھڑت اور احمقانہ قرار دیتے ہوئے مسترد کر تے ہوئے کہابھارت ایسے بے بنیاد الزامات کے تحت اپنی کسی فالس فلیگ آپریشن کے طور پر استعمال کرنا چاہتا ہے شہری آبادی کو نشانہ بنانے پر کہا کہ یہ خلاف ورزیاں ہی نہیں بلکہ انسانی حقوق اور عالمی اقدار کی دھجیاں اڑانے کے مترادف ہیں جس سے خطہ میں امن کو انتہائی خطرات لاحق ہو سکتے ہیں بھارت انسانی حقوق کی بد ترین خلاف ورزیوں اور مقبوضہ کشمیر میں مظالم سے دنیا کی توجہ ہٹانا چاہتی ہے،DGسارک نے کہابھارت سیز فائر معاہدے کا احترام کرے اور ان واقعات کی تفتیش ہونی چاہئے تاکہ شہری آبادی کو مزید نشانہ نہ بنایا جا سکے،وزیر اعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر نے کنٹرول لائن پر شہریوں کو نشانہ بنانے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہاعالمی برادری بلاجوازاور ناجائز خاموشی کی وجہ سے بھارتی فوج LOCکے دونوں جانب قتل و غارت پر بھی اسے حوصلہ افزائی ملی راجہ فاروق حیدر کی یہ بات 100درست ہے کیونکہ اس حوالے سے نہ تو اقوام متحدہ نے کوئی کردار ادا کیا اور نہ ہی کسی ملک نے،دنیا کی تاریخ کے بدترین مظالم پر بھی ان سب کی خاموشی مجرمانہ ہے جس سے بھارت کو مزید شہہ ملی،دوسری جانب انڈین فوج نے مقبوضہ کشمیر میں کوٹلی سے ملحقہ پونچھ کے علاقوں شاہ پور، کیرنی قصبہ سیکٹرز کے نزدیک اوراننت ناگ سو پور ہرن شو پور ملہورہ شوپیاں میں چند دن سے مظالم عروج پر ہیں نام نہاد آپریشنز میں انڈین آرمی نے12افراد کو شہید جبکہ 55افراد پیلٹ گن سے زخمی ہوئے وہاں پر مظالم میں خطرناک حد تک شدت آ چکی ہے یہ حقیقت ہے کہ بھارت نے جب بھی مقبوضہ کشمیر میں ظلم کے بازار کو وسعت دی تب اس نے دنیا کی آنکھوں میں دھول جھونکنے اور توجہ ہٹانے کے لئے کنٹرول لائن پر ایسی اشتعال انگیزی میں بڑھوتی کر دیتا ہے،بھارتی میڈیا پر حکومت کا ہم نوا ہے اور بری طرح ڈھنڈورا پیٹ رہا ہے کہ پاکستانی چوکیوں سے بھارتی فوج پر فائرنگ کا سلسلہ جاری ہے،ہمارا تو یقین ہے کہ دنیا جس قہر کی لپیٹ میں آئی وہ مقبوضہ کشمیر میں لاک ڈاؤن ہونے والے مظلوم کشمیریوں کی آہوں کا نتیجہ ہے،ان کے لاک ڈاؤن پر انہتا پسند حکومت کا ساتھ دینے والے با اثر اور ترقی یافتہ ممالک آج سب سے زیادہ عذاب الہٰی کا شکار ہیں،پاک فوج پر ہمیں فخر ہے جس کی وجہ کئی گنا بڑی فوج بھی ہم سے ٹکرانے سے ڈرتی ہے ان کا انحصار صرف اپنی عوام باالخصوص مسلمانوں پر مظالم،نام نہاد آپریشن پر بڑھکوں سے بڑھ کر نہیں ہے،آج کل LOCپر ہی تعینات الراقم کے انتہائی قریبی دوست میجر امین فیصل نے اپنے واٹس ایپ DPپر Fly Till Death (موت تک پرواز) لگا رکھا ہے جہاں ایسا جذبہ ہو انہیں شکست دینا ناممکن ہے اور ہمارا ہر جوان،ہر آفیسر اسی جذبہ سے لبریز ہے۔

یہ بھی پڑھیں  کورونا کیسز میں کمی: اسلام آباد کے 3 علاقوں میں آج لاک ڈاؤن ختم کرنیکا فیصلہ

یہ بھی پڑھیے :

What is your opinion on this news?

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker