پاکستانتازہ ترین

اسلام آباد انتظامیہ اور منہاج القرآن کا معاہدہ

long marchاسلام آباد(بیورو رپورٹ)تحریک منہاج القرآن اور ضلعی انتظامیہ اسلام آباد کے درمیان معاہدہ طے پا گیا ہے جس کے تحت ڈاکٹر طاہر القادری اپنے حامیوں کے ساتھ بلیو ایریا اسلام آباد سٹاک ایکسچینج کے سامنے پرامن جلسہ کرنے کے بعد منتشر ہو جائیں گے، 19 نکاتی معاہدے کے تحت شرکاء مخصوص جگہ اور طاہر القادری بلٹ پروف گاری میں ہی رہیں گے ،شرکاء صرف مارچ کیلئے قائم مخصوص جگہوں کے علاوہ کہیں بھی نہیں جاسکیں گے ۔دوسری جانب لانگ مارچ کے شرکاء کو ریڈ زون کی طرف جانے سے روکنے کے لئے جناح ایونیو کو کنٹینرز رکھ کر مکمل طور پر سیل کر دیا گیا ہے جبکہ اطرف کے راستوں اور سروس روڈز کو خاردار تاروں سمیت دوسری رکاٹیں کھڑی کر کے بند کر دیا گیا ہے۔مصدقہ ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ تحریک منہاج القرآن اور ضلعی انتظامیہ اسلام آباد کے درمیان اہم پیش رفت سامنے آئی ہے۔ضلعی انتظامیہ اسلام آباد کے ذرائع کے مطابق تحریک منہاج القرآن کے راہنماؤں اور چیف کمشنر اسلام آباد طارق محمود پیرزادہ کے درمیان پیر کی صبح ہونے والے مذاکرات کامیاب ہو گئے ہیں جس کے بعد ضلعی انتظامیہ نے جناح ایونیوپر اسلام آباد سٹاک ایکسچینج کے سامنے تحریک منہاج القرآن کو جلسے کی اجازت دے دی ہے جہاں لانگ مارچ کے پہنچنے کے بعد ڈاکٹر طاہر القادری اپنے حامیوں سے خطاب کے بعد اس جلسے کے شرکار پر امن طور پر منتشر ہو جائیں گے ۔تاہم دوسری جانب وفاقی پولیس نے کسی بھی قسم کی غیر یقینی صورتحال سے نمٹنے کے لئے وفاقی پولیس اور ضلعی انتظامیہ نے ریڈ زون سے تقریبا اڑھائی کلو میٹر پہلے ہی واقع سعودی پاک ٹاور کے پاس سے جناح ایونیو سمیت دیگر سروس روڈز اور راستوں کو مکمل طور پر سیل کر دیا ہے۔سعودی پاک ٹاور کے پاس مین جناح ایونیو پر بڑے بڑے کنٹینرز لگا کر سڑک کو بلاک کرنے کے ساتھ ساتھ گرین بلٹ کو بھی خار دار تاروں کے ساتھ کور کیا گیا ہے جبکہ جی سیون کی سروس روڈ ،یوٹیلٹی سٹورز کارپوریشن والی سروس روڈ (فضل حق روڈ)اور ناظم الدین روڈ کو بھی کنٹینرز اور خار دار تاروں کے ذریعے سیل کیا گیا اور اس مقام پر وفاقی پولیس،سپیشل برانچ،رینجرز پولیس کمانڈوز اور رضعلی انتظامیہ کے رضا کاروں پر مشتمل بھاری نفری بھی تعینات کر دی ہے جبکہ ایس ایس پی آپریشن یاسین فاروق سمیت تمام پولیس حکام پیر کے صبح سے موقع پر موجود ہے۔ادھر جلسہ گاہ کے لئے مختص کی گئی جگہ پر ڈاکٹر طاہر القادری کے لئے بڑا سٹیج بنایا گیا جس کے ساتھ ساتھ میڈیا کے لئے بھی دو الگ الگ سٹیج بنائے گئے ہیں۔اور اس کے ساتھ جلسہ گاہ کو آنے والے پیدل راستوں پر واک تھرو گیٹس لگائے گئے ہیں جہاں تحریک منہاج القرآن کے سیکیورٹی پر مامور رضا کار جلسے میں آنے والے خواتین و حضرات سمیت ہر شخص کی سخت چیکنگ خو د ہی کر رہے ہیں اور بغیر شناخت کسی کو جانے کی اجازت نہیں دی گئی ۔اسلام آباد ٹریفک پولیس کی بھاری نفری بھی موقع پر موجود رہی جس نے ٹریفک کو کنٹرول کرنے کے ساتھ ساتھ پارکنگ کے لئے مختص جگہوں کے علاوہ گاڑیوں اور موٹرسائیکل کو جلسہ گاہ سے دور رکھنے کے فرائض سرانجام دیئے ۔ اسلام آباد انتظامیہ اور تحریک منہاج القران کے درمیان 19 نکاتی معاہدے کے تحت شرکاء مخصوص جگہ اور طاہر القادری بلٹ پروف گاری میں ہی رہیں گے تحریک منہاج القرآن اور اسلام آباد کی ضلعی انتظامیہ کے درمیان لانگ مارچ کی سکیورٹی کے حوالے سے ایک تحریری معاہدہ کیا گیا ہے جو 19 نکات پر مشتمل ہے معاہدے کے مطابق لانگ مارچ کے شرکاء اپنی گاڑیاں مخصوص جگہوں کے علاوہ کہیں بھی کھڑی نہیں کریں گے اور شرکاء صرف مارچ کیلئے قائم مخصوص جگہوں کے علاوہ کہیں بھی نہیں جاسکیں گے مارچ کے تمام شرکاء واک تھرو گیٹ کے ذریعے ہی جلسہ گاہ میں داخل ہوں گے اور سٹیج اور جلسہ گاہ کے گرد سکیورٹی کیلئے رضا کار پولیس کے ساتھ تعاون کریں گے جبکہ طاہر القادری بلٹ پروف گاڑی میں ہی موجود رہیں گے اور وہ گاڑی سے باہر نہیں نکلیں گے۔

یہ بھی پڑھیں  قادری صاحب کا لانگ مارچ، کیا کیسا ہے؟

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker