پاکستانتازہ ترین

لانگ مارچ:مکنہ خطرات کے پیش نظر وفاقی دارالحکومت کےہسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ

long marchاسلام آباد(بیورو رپورٹ)لانگ مارچ کے دوران کسی بھی قسم کے ممکنہ خطرات کے پیش نظر وفاقی دارالحکومت کے سرکاری و نجی ہسپتالوں میں 48گھنٹوں کے لئے ایمرجنسی نافذ ،طبی ایمرجنسی کا نفاذ آج ( اتوار) سے کیا جائے گا ۔کسی بھی قسم کی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کے لئے 200اضافی بیڈز،اضافی ادویات اور ڈاکٹر وں کی مختلف ٹیمیں تشکیل دے دی گئی ہیں اور ڈاکٹروں و دیگر طبی عملے کی چھٹیاں بھی منسوخ کر دی گئی ہیں۔تفصیلات کے مطابق لانگ مارچ کے موقع پر وفاقی دارالحکومت کے سب سے بڑے ہسپتال پاکستان انسٹیٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز(پمز)،فیڈرل گورنمنٹ پولی کلینک ہسپتال،سی ڈی اے ہسپتال کے علاوہ نجی ہسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کر دی جائے گی۔ذرائع کے مطابق کسی بھی قسم کی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کے لئے بھی 100سے 200تک اضافی بیڈ بنانے کا انتظام کیا گیا ہے جبکہ اضافی دوائیوں کے بندوبست کے ساتھ ساتھ تمام ڈاکٹرز اور دیگر پیرامیڈیکل سٹاف کی چھٹیاں بھی منسوخ کی گئی ہیں ۔اس حوالے سے ’’اآن لائن‘‘کے رابطہ کرنے پر پمز ہسپتال کے شعبہ تعلقات عامہ کے ڈاکٹر وسیم خواجہ سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے بتایا کہ 100اضا فی بیڈ ، 200بیڈکی ادویات ،بلڈ بینک میں ہنگامی صورتحال کیلئے خون،ہسپتال کے ایمبولینس کے علاوہ پرائیویٹ ایمبولینس کا بھی بندوبست کیاگیاہے،اسکے علاوہ ایمر جنسی میں اضافی ا ڈاکٹروں اور نرسز کی ڈیوٹی لگا دی گئی ہیں۔ دریں اثناء پولی کلینک ہسپتال کے ترجمان ڈاکٹر شریف استوری نے آن لائن کے رابطہ کرنے پر بتایا کہ ہسپتال کی انتظامیہ اور ڈاکٹز آج سے اڑتالیس گھنٹے کیلئے ہسپتال میں موجو ہونگے کسی بھی ایمرجنسی کی صورت میں دو سے بیڈ کی اضافی گنجائش رکھی گئی ہے جس کیلئے آپریشن تھیٹر میں اضافی سرجن ڈاکٹر اور سٹاف بھی موجود رہے گا سٹاف اور ڈاکٹروں کیلئے ہسپتال میں کھانے پینے اور رہائش کا انتظام رکھا گیا ہے اور کسی بھی ہنگامی صورتحال کیلئے ایمبولینس بھی تیار کھڑی ہونگی

یہ بھی پڑھیں  لاکھوں افراد کے جذبوں، ولولوں اوراُمنگوں کا متلاطم سمندراسلام آباد کی طرف رواں دواں

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker