تازہ ترینعلاقائی

مانسہرہ:پولیس کی حواکی بیٹی کوگن پوائنٹ پراغواء کرنے کی کوشش پرمقدمہ درج کرنےکی ہدایت

mansehraمانسہرہ(قاضی بلال سے) سونیا ناز گینگ ریپ کیس کے بعد پولیس کے جوانوں کی حوا کی بیٹی کو گن پوائنٹ پر اغواء کرنے اور گھر لوٹنے کی کوشش پر غازیکوٹ کی رہائشی عورت کی درخواست پر عدالت نے پولیس کو اپنے پیٹی بند بھائیوں کے خلاف مقدمہ رجسٹر کرنے کی ہدایات جاری کردیں۔راضی نامہ کے لئے کی جانے والی جملہ کوششیں بھی بے سود ثابت ہو گئیں۔ تفصیلات کے مطابقتھانہ صدر کی حدود کاہیاں دی موہری غازیکوٹ کی رہائشی مسماۃ’’ش‘‘نے پولیس پر الزامات عائد کرتے ہوئے انصاف نہ ملنے پر عدالت میں زیر دفعہ 22-A ضابطہ فوجداری درخواست دائر کر کے مؤقف اختیار کیا تھا کہ پولیس افسران نے 20پولیس جوانوں اوراس کے سابقہ خاوند سراج کے ساتھ آئے ہوئے نامعلوم افراد کے ہمراہ رات 2بجے کے قریب اس کے گھر پر چھاپہ مارا اور اس سے اس کی فروخت شدہ گاڑی کی رقم کا تقاضا کیا اورشور شرابے پر برہنہ کرنے کی دھمکیاں دیں۔ مسماۃ ’’ش‘‘ نے الزام عائد کیا کہ پولیس کے شیر جوانوں نے اس کی نابالغ بیٹی مسماۃ’’ص‘‘ کو گن پوائنٹ پر اغواء کرنے کی کوشش کی تاہم اہل خانہ کی مداخلت پر ناکامی پر پولیس موقع سے فرار ہوئی۔ مسماۃ ’’ش‘‘نے کاروائی نہ ہونے پر 22-A ضابطہ فوجداری کے تحت عدالت میں درخواست دائر کی۔ جس پر عدالت سے پولیس سے اس نسبت اصل حقائق طلب کئے۔ مقامی پولیس تھانہ سٹی نے مؤقف اختیار کیا کہ مسماۃ’’ش‘‘ کی جانب سے دائر درخواست غلط اور بے بنیاد ہے کیونکہ اس روز پولیس نے مسماۃ ’’ش‘‘ کے خاوند کی گرفتاری کے لئے چھاپہ زنی اور مسماۃ’’ش‘‘ اور دیگر افراد نے پولیس پارٹی پر پتھراؤ کیا ۔ پولیس نے مؤقف اختیار کیا کہ مسماۃ’’ش‘‘ کارلفٹر کو بچانے کے لئے غلط الزامات عائد کر رہی ہے۔عدالت ایڈیشنل سیشن جج لیاقت علی نے وکلاء کے دلائل سننے کے بعد پولیس کیخلاف دی گئی درخواست کو منظو رکرتے ہوئے مقدمہ رجسٹر کرنے کے احکامات جاری کردیئے۔

یہ بھی پڑھیں  مانسہرہ:پی ٹی آئی نے بفہ اور اس کے مضافاتی علاقوں کے عوام کے ساتھ ساتھ کوہستان کے عوام سے کیا گیا وعدہ سچ کر دکھایا

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker