تازہ ترینعلاقائی

تعلیم کی ترقی اوربہتری کیلئے ہرممکن وسائل مہیا کررہے ہیں۔منشا اللہ

سیالکوٹ ﴿بیورو چیف ﴾ معاون خصوصی وزیر اعلیٰ پنجاب /صوبائی وزیر خوراک  و ماحولیات  محمد منشا اللہ بٹ نے کہا ہے کہ وزیر اعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف صوبے میں ناخونداگی اور جہالت کے خاتمہ کیلئے جامع تعلیمی اصلاحات کررہے ہیں اور شعبہ تعلیم کی ترقی اور بہتری کیلئے ہر ممکن وسائل مہیا کررہے ہیں۔ انہوں نے یہ بات آج پنجاب گرلز کالج کی پارٹ2کی طالبات کی الوداعی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ اس موقع پر پرنسپل پنجاب گروپ آف کالجز سیالکوٹ محمد اکمل، اسسٹنٹ ڈائریکٹر کالجز سیالکوٹ ارشد بٹ ، سابق ناظم پاک پورہ محمود الحسن بابر خان، رانا عبدالوحید، ملک عظمت اللہ ، پروفیسر نصیر قادری اور چودھری بشیر کے علاوہ اساتذہ اور طالبات بھی بڑی تعداد میں موجود تھیں۔ محمد منشائ اللہ بٹ نے کہاکہ صوبے کے ہونہار طالب علموں کی حوصلہ افزائی کیلئے مختلف پروگرام تشکیل دیئے گئے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ طالبعلموں کو بیرون ملک کی مطالعاتی دورے کروائے جارہے ہیں اور میرٹ کی بنیاد پر لیپ ٹاپ دیئے جارہے ہیں۔انہوں نے کہاکہ ہونہارطالب علم ہماراکل ہیں اور سرمایہ ملت ہیں اور اس ملک کے تمام وسائل طالب علموں کیلئے ہیں اور طالب علموں کی تعلیم وتربیت پرہی خرچ ہونگے۔ انہوں نے کہا کہ طالب و علموں کی چمکتے اور پُر امید چہرے اس بات کی غمازی کرتے ہیں کہ ملک خدا داد اسلامیہ جمہوریہ پاکستان کا مستقبل روشن اور تابناک ہے ۔ محمد منشا اللہ بٹ نے طالبات کو مخاطب کرتے ہوئے کہاکہ وہ اپنے آپ کو اس قابل بنائیں کہ وہ کل کو ملک کی بھاگ ڈور سنبھالنے کے قابل ہوں اور ملک کو ترقی کی راہ پر گامزن کرسکیں۔ انہوں نے کہا کہ فروغ تعلیم کیلئے نجی تعلیمی اداروں کا کردار بھی قابل رشک ہے جس کو حکومت قدر کی نگاہ سے دیکھتی ہے۔ پرنسپل محمد اکمل نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ وزیر اعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے بورڈ کے امتحانوں میں بوٹی مافیا کو ختم کیا اور کالجز میں انٹری ٹیسٹ کے نظام کو متعارف کروایاجس سے حقداروں کو ان کا حق ملا،اساتذہ کو کارکردگی کی بنیاد پر کیش انعامات دیئے ،دانش سکول کی بنیاد رکھی اور طلبا میں لیپ ٹاپ تقسیم کئے جارہے ہیں ۔ یہ سب اقدامات اس بات کا عملی ثبوت ہے کی تعلیم کے فروغ کیلئے حکومت پنجاب کس قدر سنجیدہ ہے ۔ بعد ازاں محمد منشا اللہ بٹ نے طالبات اور اساتذہ میں کیش پرائز اور اسناد تقسیم کی۔

یہ بھی پڑھیں  حکومتی اراکین کی اے آر وائی کے خلاف ہرزہ سرائی۔۔۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker