پاکستانتازہ ترین

حقیقی بھانجی سے غیرشرعی نکاح کرنے والا اشتہاری گرفتار جس سے دو بچے بھی پیدا ہوئے

کوٹ ادو (نامہ نگار) سلطان کالونی پروین بی بی اغواہ کیس میں گرفتار مرکزی ملزم کا دوروزہ جسمانی ریمانڈ پولیس تھانہ سناواں نے حاصل کرلیا ملزم سرور جوکہ اپنی حقیقی بھانجی پروین بی بی کو اغواہ کرنے کے بعد چار سال تک مختلف مقامات کی سیر کرتا رہا اور اپنی حقیقی بھانجی سے غیر شرعی نکاح کرلیا تھا جس سے دو بچے بھی پیدا ہوچکے ملزم کو ڈی پی او مظفرگڑھ کے وائرلیس آپریٹر کی سرپرستی کرنے کا الزام وائرلیس آپریٹر نے اپنا داؤ بچاؤ کے لیے ہاتھ پاؤں مارنے شروع کردیے ،،تفصیل کے مطابق تھانہ سناواں میں درج بھانجی کو اغواہ کرنے والا اشتہاری چار سال بعد گرفتار ملزم غلام سرور نے چار سال قبل اپنی حقیقی بھانجی پروین بی بی کو ودیگر ملزمان سے ملکر اغواہ کیا ملزمان کے خلاف تھانہ سناواں میں مقدمہ نمبر295.10بجرم 365/Bدرج رجسٹرڈ ہوا ملزم غلام سرور نے پروین بی بی کی شادی اپنے بھتیجے سجاد حسین سے کرنے کی بجائے خود منہ کالا کرنا شروع کردیا اور بعد میں غیرشرعی نکاح کرلیا اور جس سے دوبچے بھی پیدا ہوگئے گرفتار ملزم کو پولیس تھانہ سناواں وی آئی پی پروٹوکول دیا ہوا ہے ،تفصیل کے مطابق تھانہ سناواں کے علاقے پتی نائچ کے رہائیشی سوہانرا نے اپنے بیٹے محمداعجاز کے ہمراہ سلطان کالونی پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے مبینہ طور پر کہا تھاکہ غلام سرور ولد اللہ ڈیوایا ،سجاد حسین ولدقادر بخش ،محمد ہاشم ولد اللہ ڈیوایا ،جو کہ میرے رشتہ دار ہیں رشتہ داری کی وجہ سے ان ملزمان کا میرے گھر میں آنا جاناتھامیری بیٹی پروین بی بی کی شادی نکاح عرصہ تقریبا 3سال قبل مسمی طالب حسین عرف وزیرا ولد امام بخش قوم نائچ سکنہ1Rموضع پتی نائچ سے ہوئی تھی 2سال گزارنے کے بعد طالب حسین نے میری بیٹی پروین بی بی کو طلاق دے دی میری بیٹی طلاق ملنے کے بعد میرے گھر میں رہائش پذیر تھی مورخہ 17//8//2010 کو ملزم غلام سرور ،سجاد حسین ،محمد ہاشم ،قادر بخش ،میرے گھر بطور مہمان آئے کیونکہ وہ میری بیوی مسمات زہرہ کے بھائی اور بھتیجے تھے رات کو میرے گھر میں رہے اور کہا کہ صبح چلے جائیں گے صبح چھے بجے ہم نے جب دیکھا تو گھر سنبھالا تو میری بیٹی گھر میں موجود نہ تھی مجھے یقین ہوا کہ میری بیٹی کو ملزم سرور ودیگر ملزم اغواہ کرکے لے گئے میں اور میری بیوی اپنی بیٹی کی تلاش میں نکل پڑے راستہ میں غلام حسین ولدپیربخش ،محمد سلیم ولد محمد بخش ،قوم نائچ ہمیں ملے جنہوں نے بتایا کہ پروین بی بی کو ملزم سرور ودیگر جانب شمال پختہ سڑک لے کرجارہے تھے جن کا ہم نے پیچھا کیا مگر ملزمان نکل چکے تھے جن کے خلاف ہم نے تھانہ سناواں میں مقدمہ درج کروایا تو پھر بھی پولیس نے کیس میں دلچسپی نہ لی صرف ملزمان سے مبینہ طور پر بھاری رقم لیکر باقی ملزمان کو بے گناہ کردیا مجھے چار سال ہوگئے ہیں میں نے اپنی زمین ٹریکٹر اور بھی سامان بیچ کر کیس میں لگا دیا ہے اب میں نے پولیس تھانہ سناواں کو ملزم سرور کی نشاندہی کی تو پولیس تھانہ سناواں نے مرکزی ملزم کو شکر گڑھ سے گرفتار کرلیا مگر میری بیٹی کو بازیاب نہ کروایا اب ہمیں معلوم ہوگیا ہے کہ میری بیٹی سے دو بچے بھی پیدا ہوگئے ہیں ملزمان کی پشت پناہی میں ڈی پی او مظفرگڑھ کا وائرلیس آپریٹر کررہا ہے مجھے اور میرے گھر والوں کو جان کا خطرہ ہے اگر مجھے انصاف نہ ملا تو میں تھانہ سناواں کے باہر خود سوزی کرلوں گا،،

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button
error: Content is Protected!!