شہ سرخیاں
بنیادی صفحہ / پاکستان / لاپتہ افراد کی بازیابی کے لیے قائم انکوائری کمیشن کی رپورٹ جاری

لاپتہ افراد کی بازیابی کے لیے قائم انکوائری کمیشن کی رپورٹ جاری

اسلام آباد(مانیٹرنگ سیل) حکومت کی طرف سے لاپتہ افراد کی بازیابی کے لیے جسٹس ر جاوید اقبال کی سربراہی میں قائم انکوائری کمیشن نے دسمبر دو ہزار پندرہ کی رپورٹ جاری کردی۔ کمیشن نے بیس کیس نمٹاتے ہوئے سولہ افراد کو بازیاب کروایا جبکہ گزشتہ ماہ کے دوران کمیشن کے پاس مبینہ طور پر لاپتہ افراد کے ایک سو پانچ نئے کیس درج کروائے گئے۔لاپتہ افراد کمیشن کے سیکریٹری فرید احمد خان کی طرف سے جاری رپورٹ کے مطابق جسٹس ر جاوید اقبال، جسٹس ر ڈاکٹر غوث محمد اور سابق آئی جی پولیس محمد شریف ورک پر مشتمل کمیشن نے دسمبر دو ہزار پندرہ کے دوران مبینہ طور پر زبردستی اٹھائے جانے والے افراد کے کیسوں کی اسلام آباد، کراچی اور لاہور میں سماعت کی۔ کمیشن کے سامنے پولیس اور انٹیلی جنس اداروں کے نمائندے پیش ہوئے۔ دسمبر میں کیسوں کی تفصیلی سماعت کے دوران سولہ لاپتہ افراد کا سراغ لگایا گیا جبکہ تین افراد کے کیس جبری گمشدگی کے زمرے میں نہ آنے پر فہرست سے خارج کر دیے گئے۔ ایک شخص کے مقابلے میں مارے جانے کے باعث اس کی ڈیڈ باڈی ریکور کروائی گئی۔ جن افراد کا پتہ چلایا گیا ہے ان میں رحمت اللہ، عبد الرحمان، حامد اختر، محمد زبیر، محمد حاجی، محمد اسحاق، عبد الجبار، شیر اصغر، محمد شفیق، میاں حضرت نور، محمد حسن بلوچ، محمد رضوان، محمد صدیق، محمد عمران، عالم گل اور محمد عبد الوکیل شامل ہیں۔ اسی ماہ کے دوران کمیشن کے پاس لاپتہ افراد کے ایک سو پانچ نئے کیس درج کروائے گئے۔ اس طرح اب کمیشن کے پاس لاپتہ افراد کی مجموعی تعداد تیرہ سو نوے ہوگئی ہے۔

یہ بھی پڑھیں  آئرن لیڈی کی واپسی