تازہ ترینعلاقائی

ضلع پشین میں مواصلاتی نظام کی بہتری کیلئے جنگی بنیادوں پر اقدامات کئے جارہے ہیں،مولانا عبدالباری

سرانان(عتیق اللہ ترین)صوبائی وزیر پی ایچ ای سید مولانا عبدالباری آغا نے کہا کہ ضلع پشین میں مواصلاتی نظام کی بہتری کیلئے جنگی بنیادوں پر اقدامات کئے جارہے ہیں گزشتہ دنوں 26کروڑروپے کی لاگت سے علیزئی ٹو ملیزئی پل کی تعمیر اور سڑکوں کی پختگی کو یقینی بناکر علاقے کے لوگوں کا دیرینہ مطالبہ حل کرلیا گیا ہے آنیوالے انتخابات میں کارکردگی کی بنیاد پر حصہ لیکرکلین سوئپ کرکے دیکھائینگے ان خیالات کا اظہار انہوں نے ملی زئی میں افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہی اس موقع پر حاجی ضیاء الحق علی زئی نے بھی خطاب کیا انہوں نے کہا کہ ضلع پشین میں عوام کی بلاتفریق خدمت کو عبادت کا درجہ دیکر کروڑوں روپے کے ترقیاتی کاموں کا جھال بچھا یا ہے ساتھ ہی علاقے کے بے روزگار نوجوانوں کو روزگار کے مواقع فراہم کئے ہیں جو کسی سے پوشیدہ نہیں انہوں نے کہا کہ ضلع پشین میں امن وامان کی صورتحال مثالی ہے جو کسی سماج دشمن قوتوں کے ہاتھوں خراب نہیں ہونے دیا جائیگا انہوں نے کہا کہ بلوچستان میں آگ اور بارود کا کھیل کھیلنے اور لوگوں کا ناحق خون بہانے والے عوام کے خیر خواہ نہیں ہوسکتے آئے روز لوگوں کوموت کے گھاٹ اتارنا موجودہ حکومت کو بدنام کرنیکی ایک سازش ہے صوبائی حکومت عوام کو تحفظ دینے کی بھر پور صلاحیت رکھتی ہے انہوں نے کہا کہ حالیہ انتخابات میں عوام سے ووٹ لیتے وقت کئے گئے وعدوں کو عملی جامعہ پہنایا جاچکا ہے جھوٹے وعدوں کا سہارا نہیں لیتے عملی کاموں سے عوامی مسائل کا خاتمہ کرنیکا تہیہ کررکھا ہے جمعیت علماء اسلام عوام کی بلاتفریق خدمت پر یقین رکھتی ہے بندوق اٹھاکر سیاست کرنیوالے عوامی مسائل میں کمی کی بجائے انکے مسائل میں کئی گناہ اضافہ کرتے ہوئے انہیں عدم تحفظ کا شکار بنا دیا ہے انہوں نے کہا کہ سیکولر قوتوں نے عوام کو مایوسی کے سو ا کچھ نہیں دیا پرامن پاکستان کو تباہی کیطرف لیجانے کے ذمہ دار امریکہ اور دیگر کفری قوتیں ہے جو ایک سازش کے تحت ملک میں خوف کا فضاء قائم کرنا چاہتی ہے عوام کے امیدوں پر پورا اترتے ہوئے انہیں درپیش تمام مسائل کو جڑ سے اکھاڑ دیا جائیگا انہوں نے کہا کہ ضلع پشین میں آباد تمام قبائل آپس میں متحد ہوکر سماج دشمن قوتوں کیخلاف جنگ میں ہمارا ساتھ دیں۔

یہ بھی پڑھیں  اسلام آباد: 2پولیس اہلکارکرپشن کے الزامات ثابت ہونےپرنوکری سےفارغ

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker