تازہ ترینکالمملک ساجد اعوان

موت کے سوداگر

sajid awanنشہ ایک ایسی بیماری ہے جس کی طرف نوجوان نسل اس طرح مائل ہوچکی ہے کہ ہر چوتھا نوجوان اسی بیماری میں مبتلاہے اور پھر موت کی طرف اپنے آپ کو دھکیل دیتاہے نشہ جیسی بیماری نوجوان کو ایسے کھارہی ہے جیسے مُردارکو گدھ۔ میں نے آج ایسا ہی واقعہ اپنے سامنے دیکھاتین نوجوانوں کو ایک خالی پلاٹ میں داخل ہوتے دیکھا انہوں نے خالی بورے اٹھائے ہوئے تھے میں نے ان کا پیچھا کیا انکے پاس ایول کے ٹیکے اورپاؤڈرکی پُڑیاں تھیں میں نے کہا اوئے یہ کیاہے تو کہنے لگا باؤ جی آپ جائیں آپ کا م نہیں ہے انہوں نے ایول کے ٹیکے میں پاؤڈر ملا کر اپنے آپ کو لگانے شروع کردیئے میں نے پوچھا کہ یہ ٹیکے اور پاؤڈر کہاں سے لاتے ہو تو کہنے لگے میڈیکل سٹور سے سب ملتاہے ہم لوگ پورا دن کاغذ اکٹھے کرتے ہیں اور ایک سو روپے کے بیچ کر ٹیکے اور پاؤڈر لے کر نشہ کرتے ہیں مجھ کو انتہائی دکھ ہوا کہ یہ سب کیا ہے میں نے کہا کہ مت کرو ایسا تو وہ میرے ساتھ لڑنے پر اترآئے میں وہاں سے چل نکلا اور سو چ رہاہوں کہ یہ نوجوان ہمارا سرمایہ ہیں جو اس طرح ضائع ہورہاہے کیونکہ جب ہر اس طرح کی منحوس چیزوں کو جن میں چرس’افہیم اور پاؤڈر شامل ہیں خاتمہ نہیں کیا جاتا تب تک کچھ ممکن نہیں ہے اور یہ کچھ لوگوں نے کاروبار بنارکھاہے وہ اپنے کاروبار کے ساتھ ساتھ نوجوان نسل کی زندگیاں برباد کررہے ہیں ۔ہماری انتظامیہ کو چاہیئے کہ اس طرف توجہ دیں پورے پاکستان میں نہ جانے کتنے نوجوان ہیں جو نشہ کرتے ہیں اور اپنے ساتھ ساتھ اپنے گھروالوں کو بھی بربادکردیتے ہیں جب تک اس طرح کے کاروبار کرنے والوں کے خلاف کوئی قانون نہیں بنتا تب تک کچھ ممکن نہیں ہے یہ ہر دوسرے گھر کی کہانی ہے یہ جو لوگ کاروبار کرتے ہیں تو ایک نوجوان کو اس طرف لگاتے ہیں اور اس طرح بہت سارے لوگ اسکے ساتھ مل کر نشہ کرتے ہیں اور پھر جب انکو نشہ نہیں ملتا تو وہ چوری کرنے سے باز نہیں آتے جسے آئے روز واقعات ہورہے ہیں ہمیں مل کر اس طرح کی برائیوں کا خاتمہ کرناہوگا کیونکہ یہ لوگ موت کے سوداگر ہیں حکومت کو چاہیئے کہ ایسی ٹیمیں تشکیل دے جو اس طرح کاروبار کرتے ہیں ہیں اور جونوجوان کو نشہ کی طرف راغب کرتے ہیں ان کے خلاف کاروائی عمل میں لائی جائے تب ہی کچھ ممکن ہے کیونکہ اس طرح کئی گھر اجڑجاتے ہیں اور ہمارے ذہن میں روزانہ چار ہزارسوالات پیداہوتے ہیں اور ہمارا ذہن ہم سے انکا جواب مانگتاہے اور ہم دماغ کے سوالات مستردکردیتے ہیں ہم نوجوان کی کس طرح تربیت کررہے ہیں کہ نشہ کرو ہماری زندگی میں مصروفیت بڑھ جاتی ہے اور ہم اس طرح نوجوان کو خود کشی کی طرف لے جاتے ہیں جو حکمران عوام کو دھوکہ دیتے ہیں ان کو پوری زندگی میں سکون نہیں ملتا۔ آؤ سب مل کر اس نوجوان نسل کو بچائیں تب ہی خوشی ممکن ہے ۔

یہ بھی پڑھیں  محب وطن پاکستانیوں کے لیے صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کا مشورہ ۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker