پاکستانتازہ ترین

وزیراعظم کے بیٹے علی موسیٰ کو نوٹس جاری

سپریم کورٹ نے کيميکل کوٹہ الاٹمنٹ کيس ميں وزير اعظم کے بيٹے علي موسیٰ گيلانی اورپرنسپل سیکرٹری خوشنود لاشاری کو نوٹس جاری کر دیا۔ عدالت نے تفتیشی افسر بریگیڈئر فہیم اور ذوالفقار احمد کا تبادلہ روک کر تحقیقات جاری رکھنے کا بھی حکم دیدیا۔کيس کی سماعت چيف جسٹس افتخارچودھری کی سربراہی ميں سپریم کورٹ کے تین رکنی بینچ نے کی۔ ریجنل ڈائریکٹر اے اين ايف بريگيڈئر فہيم اور انکی ساتھی ٹيم کے ارکان عدالت ميں پيش ہوئے۔ بريگيڈئر فہيم کے وکيل اکرم شيخ نے عدالت کو بتايا کہ کيس کی تحقيقات کرنے والی اے اين ايف کی تمام ٹيم کو تبديل کرديا گيا جس پر چيف جسٹس نے ريمارکس ديے کہ ايسا کيوں ہورہا ہے۔ شايد کوئی بڑا آدمی ملوث ہے۔ کیس کی مزيد شفاف تحقيقات کی ضرورت ہے۔ بريگيڈئر فہيم نے اپنے بیان میں بتايا کہ کیمیکل کوٹہ سابق سيکرٹری صحت خوشنود لاشاری نے الاٹ کيا تھا۔ اس کيس ميں انہيں اور وزيراعظم کے بيٹے علی موسی گيلانی کو بچانے کی کوششيں ہورہی ہيں۔ اے اين ايف نے خوشنود لاشاری اور علی موسی گيلانی کو سمن جاری کیے۔ خوشنود لاشاری کی خواہش پر ان سے پی ايم ہاؤس ميں ملاقات کی۔ انہوں نے بتايا کہ نوٹس ملنے پر علی موسی گيلانی کے والد اپ سيٹ ہيں۔ اے اين ايف اس کيس سے علی موسی گيلانی کو نکال دے۔ بريگيڈئر فہيم نے کہا کہ انہوں نے خوشنود لاشاری کو کہا کہ وہ عدالت سے غيرجانبدارانہ تحقيقات کا وعدہ کر کے آئے ہيں۔ کيا علی موسی گيلانی کو اس لیے چھوڑ ديا جائے کہ اسکا والد بڑا آدمی ہے۔ بريگيڈئر فہيم نے کہا کہ سيکرٹری قانون اور تمام رياستی مشينری اب تحقيقاتی ٹيم کے خلاف کھڑی ہے اور خوشنود لاشاری اور علی موسی گيلانی کو بچانے کی کوششيں ہورہی ہيں۔ عبوری حکم نامے میں عدالت کا کہنا تھا کہ حیران کن بات ہے کہ ڈی جی کا چارج سیکرٹری کو دے دیا گیا۔ اس عہدے پر میجر جنرل سطح کا شخص تعینات کیا جاتا ہے۔ سپریم کورٹ کا کہنا تھا کہ ڈی جی اے این ایف کوہٹایا جانا اور بریگیڈئر فہیم کا تبادلہ بیرونی دباؤ لگتا ہے۔ ستمبر2011 میں اس وقت کے سیکرٹری اے این ایف سہیل احمد نے کیس کی کارروائی آگے بڑھانے کا کہا توان کو بھی تبدیل کردیا گیا۔ عدالت کا کہنا تھا کہ علی موسی گیلانی چاہیں تواے این ایف کی تحقیقاتی ٹیم کے سامنے اپنا بیان ریکارڈ کراسکتے ہیں۔ سپریم کورٹ نے ریجنل ڈائریکٹراے این ایف بریگیڈئر فہیم اور ڈپٹی ڈائریکٹر اے این ایف ذوالفقار احمد کا تبادلہ روک کر تحقیقات جاری رکھنے کا حکم دیتے ہوئے کیس کی سماعت 20 اپریل تک ملتوی کردی۔

یہ بھی پڑھیں  لاہور:صدرپاکستان ایک روزہ دورے پر 5اپریل کو لاہور ائیں گے

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker