شہ سرخیاں
بنیادی صفحہ / تازہ ترین / بھائی پھیرو:ماؤں کے عالمی دن کے موقع پر مقامی سکولوں میں سیمینار

بھائی پھیرو:ماؤں کے عالمی دن کے موقع پر مقامی سکولوں میں سیمینار

بھائی پھیرو(نامہ نگار)ماؤں کے عالمی دن کے موقع پر مقامی سکول میں سیمینار۔ماں تیری عظمت کو سلام،جتنا مقام اسلام نے ماں کو دیا کسی مزہب نے نہیں دیا، ہر دن ماں کا دن ہے صف ایک دن منانے سے ماؤں کے حقوق پرے نہیں ہاتے۔مقررین کا اظہار خیال۔بھائی پھیرو کے مقامی سکول میں ماؤں کے عالمی دن کے موقعے پر ایک سیمینار منعقد ہوا جس میں بچوں کے ساتھ سینکڑوں ماؤں نے بھی شرکت کی۔سیمینار سے خطاب کرتے اسلامی جمعیت طلبا کے لاہور ڈویژن کے جنرل سیکرٹری احمد جمال ایڈووکیٹ نے کہا کہ پاکستان میں اس دن کے حوالے سے لوگ دوطبقوں میں تقسیم نظرآتے ہیں، ایک وہ جو اس دن کو ماں کی عظمت کے لیے اہم قرار دیتے ہیں، جبکہ دوسرے طبقے کا کہنا ہے کہ ماؤں سے محبت کے لیے ایک دن مختص کرنے کا کیا جواز جبکہ ماں جیسی عظیم ہستی ہمیشہ محبت وتکریم کے لائق ہے۔اسلام نے ماں کو جو مقام دیا وہ کسی مزہب نے نہیں دیا اس لیے سال کا ہر دن ہر پل ماں کی عظمت کو سلام کرنا چاہیے۔ ہمیں یہ یادرکھنا چاہیے کہ والدین ایک سائے کی طرح ہیں جن کی ٹھنڈک کا احساس ہمیں اس وقت تک نہیں ہوتا جب تک یہ سایہ سر پر موجود رہتا ہے، جونہی یہ سایہ اُٹھ جاتا ہے تب پتہ چلتاہے کہ ہم کیا کھو بیٹھے ہیں معروف سکولوں کے پرنسپل افضل شاغف اور رانا عدنان نے اپنے اپنے خطابات میں کہا کہ اس دن کو منانے کا مقصد معاشرے میں ماؤں سے محبت اوران کے احترام کو فروغ دینا ہے مگربہت سی مائیں ایسی بھی ہیں جوناخلف اولاد کی نافرمانی کی وجہ سے اپنی زندگی اولڈ ہاؤس میں گزارنے پر مجبور ہیں ماؤں کے عالمی دن منانے کی تاریخ بہت قدیم ہے اور اس کا سب سے پہلے یونانی تہذیب میں سراغ ملتا ہے جہاں تمام دیوتاوں کی ماں ”گرہیا دیوی“ کے اعزاز میں یہ دن منایا جاتا تھا۔ایک دوسرے سکول کے پرنسپل عقیل احمد خاں نے خطاب کرتے کہا کہ ماؤں کا دن ہر سال یہ دن مختلف ممالک میں منایا جاتا ہے، عالمی طور پر اس کی کوئی ایک متفقہ تاریخ نہیں، یہ دن مختلف ممالک میں مختلف تاریخوں کو منایا جاتا ہے۔ پاکستان اور اطالیہ سمیت اکثر ممالک یہ دن مئی کے دوسرے اتوار کو منایا جاتا ہے اور کئی ایسے ممالک بھی ہیں جو یہ دن جنوری،مارچ،نومبر یا اکتوبر میں مناتے ہیں۔ مقامی سکول کے پرنسپل وقاص نے کہا کہ سولہویں صدی میں ایسٹر سے 40 روز پہلے انگلستان میں ایک دن ”مدرنگ سنڈے“ کے نام سے موسوم تھا۔ امریکہ میں مدرز ڈے کا آغاز 1872ء میں ہوا۔سن 1907ء میں فلاڈیفیا کی اینا جاروس نے اسے قومی دن کے طور پر منانے کی تحریک چلائی جو بالآخر کامیاب ہوئی اور 1911ء میں امریکہ کی ایک ریاست میں یہ دن منایا گیا۔ان کوششوں کے نتیجے میں 8 مئی 1914ء کو امریکہ کے صدر ووڈرو ولسن نے مئی کے دوسرے اتوار کو سرکاری طورپر ماؤں کا دن قرار دیا، اب دنیا بھر میں سے ہرسال مئی کے دوسرے اتوار کو یہ دن منایا جاتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں  آئندہ دس ہزار روپیہ ماہوار سے کم تنخواہ پر ملازم رکھنا قابل سزا جرم تصور ہوگا ،سراج الحق