پاکستانتازہ ترین

منور حسن کا مصر کی صورتحال پر تشویش کا اظہار

munawar hussainلاہور(نمائندہ خصوصی)امیر جماعت اسلامی پاکستان سید منور حسن نے مصر کی صورتحال پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ عوام کی رائے پر ڈاکہ زنی مصر کو پھر سے ڈکٹیٹر شپ اور کرپشن کی دلدل میں دھنسادے گی۔ مصر کے دشمن ملک میں عدم استحکام پیدا کر رہے ہیں۔ صدر محمد مرسی مصری تاریخ کے پہلے منتخب جمہوری صدر ہیں لیکن حسنی مبارک کی باقیات اور ان کے عالمی سرپرستوں نے انہیں ایک روز بھی سکھ کا سانس نہیں لینے دیا۔اپنے ایک بیان میں سید منور حسن نے کہا ہے کہ اپنے ایک سالہ پرآشوب عرصہ صدارت میں صدر مرسی نے نہ صرف ملک کو پہلا آزادانہ جمہوری دستور دیا بلکہ ملک میں کرپشن کے دروازے بھی بند کرنا شروع کر دیے۔ انہوں نے ملک کی اقتصادی ترقی کے لیے دور رس جامع منصوبے شروع کیے ، مصر کا کھویا ہوا عالمی مقام بحال کرنے کا آغاز کیا۔اور کئی سال سے محصور فلسطینیوں کا حصار ختم کروا دیا۔امیر جماعت اسلامی نے مزید کہا ہے کہ پہلے منتخب سویلین صدر نے کئی بار اپوزیشن کی طرف مصالحت کا ہاتھ بڑھایا ۔ کابینہ میں نصف سے زائد وزراء دوسری پارٹیوں اور باصلاحیت قومی شخصیات میں سے بنائے ،لیکن گزشتہ 60سال سے ملک پر براجمان ڈکٹیٹر شپ کی باقیات، مسلسل ایک کے بعد دوسرا بحران کھڑا کر رہی ہیں۔سید منور حسن نے کہا ہے کہ اپوزیشن نے جمہوری اقدار کا پاس نہ کیا ، اخوان کی صلح جو پالیسی اور باربار مذاکرات کی دعوت کی قدر نہ کی تو بہت جلداسے پچھتاوا ہو گا اور ملک وقوم ایک بار پھر کسی مہم جو جابر کے چنگل میں پھنس کر رہ جائے گی۔امیر جماعت اسلامی نے مزید کہا ہے کہ مشرق وسطیٰ میں مصر کی کلیدی حیثیت کے باعث ،عالمی استعمار کو اس کی خودمختاری،استحکام اور آزادانہ پالیسیاں ہضم نہیں ہو رہیں۔وہ سرمائے کے انبار اور اپوزیشن کی مار دھاڑ کے ذریعے، اہم برادر مسلم ملک مصر کو اسرائیل کی کسی غلام حکومت کے ہاتھ سونپنے کے لیے بے تاب ہے۔انہوں نے کہا کہ اگر اپوزیشن کو واقعی عوا م کی تائید حاصل ہے تو صدر مرسی کے اعلان کردہ قومی اسمبلی کے عام انتخابات کو یقینی بنائے اور ووٹ کے ذریعے ملک میں تبدیلی لے آئے۔سیدمنور حسن نے مصری عوام کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے اپیل کی ہے کہ وہ پر امن اور متحد رہتے ہوئے بیرونی دشمنوں اور نادان اپوزیشن رہنماؤں کی سازشیں ناکام بنا دیں۔

یہ بھی پڑھیں  ملک میں امن کے قیام کیلئے طالبان سے مذاکرات کا عمل شروع کیا جائے:منور حسن

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker