پاکستان

کیمیکل سکینڈل,وزیراعظم کے بیٹے موسیٰ گیلانی کا نام سامنے آ گیا

حج سکینڈل اور رینٹل پاور پراجیکٹس کے بعد سات ارب روپے کے ممنوعہ کیمیکل کے کوٹے کا اسکینڈل بھی منظر عام پر آ گیا جس میں وزیراعظم کے صاحبزادے علی موسٰی گیلانی کا نام سامنے آیا ہے۔ چیف جسٹس کا کہنا ہے کہ گڑبڑ لگتی ہے یہ قصہ کچھ اور ہی ہے۔سپریم کورٹ میں کیس کی سماعت چیف جسٹس افتحار محمد چوہدری کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے کی۔ تفتیشی افسر نے رپورٹ پیش کی کہ ملتان کی دو کمپنیوں کو غیر قانونی طور پر نو ہزار کلو گرام کیمکل کا کوٹہ دیا گیا ہے جبکہ قوإعد کے تحت پانچ سو کلو گرام سے زائد کیمیکل کا کوٹہ نہیں دیا جا سکتا۔ افراڈرین نامی یہ کیمیکل نزلہ اور زکام کی ادویات کے علاوہ کوکین اور منشیات میں استعمال ہوتا ہے۔ چیف جسٹس افتخار محمد چودھری نے کہا کہ گڑ بڑ لگتی ہے قصہ کچھ اور ہی ہے ملک کی بدنامی ہو رہی ہے اور سرکاری سطح پر کوکین اور ہیروئین کا نام لیا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جانتے ہیں ہمیں کوئی پسند نہیں کرتا مگر اداروں کی مضبوطی کے لئے کام کر رہے ہیں۔ تفتیشی افسر نے بتایا کہ ملتان کی دو کمپنیوں کو یہ کوٹہ توقیر نامی شخص نے لے کر دیا جو خود کو وزیر اعظم کے بیٹے علی موسٰی گیلانی کا پی اے بتاتا ہے۔ تفتیشی افسر کے مطابق کیس کی تفتیش کیلئے علی موسٰی گیلانی کو نوٹس بھی بھیجا مگر انکی جانب سے کوئی جواب نہیں آیا۔ تفتیشی افسر نے کہا کہ سیکرٹری اینٹی نار کوٹکس نے خط لکھا کہ اس کیس کو مزید نہیں چلانا جس پر عدالت نے سیکرٹری کو نوٹس بھیجتے ہوئے آئندہ سماعت پر طلب کر لیا۔ اینٹی نارکوٹکس کے وکیل کے کیس واپس لینے کے بیان پر چیف جسٹس نے اے این ایف کے کمانڈر بریگیڈئیر فہیم سے استفسار کیا کہ کیا آپ خوفزدہ ہیں اور کیس واپس لینا چاہتے ہیں تو بریگیڈیئر فہیم نے کہا کہ اینٹی نارکوٹکس فورس کیس واپس نہیں لینا چاہتی۔ سپریم کورٹ نے کیس کی سماعت بیس اپریل تک کیلئے ملتوی کرتے ہوئے اس کیس کا ریکارڈ طلب کر لیا۔ اس سے پہلے وزیر اعظم کے دوسرے صاحبزادے عبدالقادر گیلانی کا نام حج اسکینڈل میں آیا تھا۔ انھوں نے ایف آئی اے کے سامنے پیش ہو کر اپنے خلاف الزامات کی وضاحت کی تھی۔

یہ بھی پڑھیں  حکومت عافیہ کی وطن واپسی کا موقع ایک مرتبہ پھر کھورہی ہے

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker